جبر و ستم سے قوموں کے جذبہ حریت کو دبایا نہیں جاسکتا، یاسین ملک

سرےنگر جدت ویب ڈیسک مقبوضہ کشمیر میں جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے اسلام آباد کے علاقے لاری بل کے رہائشی نوجوان عرفان احمد خان پر کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے نفاذ اور کٹھوعہ جیل منتقلی کی شدید مذمت کی ہے۔ محمدیاسین ملک نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ 26سالہ عرفان احمد خان کو رواں برس یکم جولائی کو بھارتی فوج نے ایک آپریشن کے دوران انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کیاجبکہ آپریشن کے اختتام پرفوج اور پولیس نے ان پر سخت تشدد کیا جسکے بعداسے اسلام آباد کے صدر تھانے میں رکھا گیا اور اب اس پر کالا قانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کر کے کٹھوعہ جیل منتقل کیا گیا۔محمد یاسین ملک نے کہا کہ گزشتہ تین برس کے دوران عرفان احمد پر تقریباً سات مرتبہ کالا قانون لاگو کیا جا چکا ہے اور بار بار اذیت کا نشانہ بنایا گیا۔ انہوںنے کہا کہ قابض بھارتی فورسز کے ظلم و ستم کے سبب کشمیری نوجوان انتہائی اقدام آٹھانے پر مجبور ہو رہے ہیں۔محمد یاسین ملک نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ جبر و ستم سے قوموں کے جذبہ حریت کو دبایا نہیں جاسکتااور فتح بل آخر مظلوموں کی ہوتی ہے۔ انہوںنے کہا کہ وہ دن دور نہیں جب مکافات عمل کے ابدی و ازلی قانون کے تحت کشمیریوں پر ظلم ڈھانے والوں کا بھی یوم حساب آئے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.