”یہود و نصاریٰ کبھی بھی تمہارے(مسلمانوں کے) دوست نہیں ہوسکتے“القرآن

جدت ویب ڈیسک :اسلامی جمہوریہ پاکستان میں 25نومبر کو امریکہ سمیت جمعہ المبارک کو بطور سیاہ دن منایا جارہا ہے،گرینڈ سیل لگائی جائیں گی تاکہ لوگ خریداری کرسکیں۔ جس میں خریداروں کو 70سے90فیصد تک رعایتی نرخوں پر چیزیں دستیاب ہوں گی۔ بات سمجھنے کی یہ ہے کہ امریکہ میں ہر سال نومبر کے مہینے کے آخرمیں جمعرات کو بطور تھینکس گیونگ ڈے منایا جاتا ہے اور اس کے اگلے روز یعنی جمعہ کو بلیک فرائیڈےکے نام سے منسوب کیا جاتا ہے۔ تفصیل کچھ یوں ہے کہ 1961میں فلاڈیلفیا میں کرسمس کی تیاریوں کے حوالے سے لگائی گئی سیل میں لوگوں کا بہت بڑا اژدھام امڈ آیا جس کے باعث سڑکوں پر گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں اور بد ترین ٹریفک جام ہوگیا جس کے بعد اسے بطور بلیک فرائیڈے منایا جانے لگا۔ اس سے قبل بھی ہمارے معاشرے میں بڑے خوبصورت انداز میں مدر اور فادر ڈیز کو داخل کیا گیا اور اسی طرح ایک سازش کے تحت ویلنٹائن ڈے کو بھی ہمارے معاشرے میں فروغ دیا گیا اور اب ہم بلیک فرائیڈے یعنی سیاہ جمعہ منانے جارہے ہیں۔ آپ سوچیں جس دن کو سید الرسل نبی کریمﷺ نے سید الایام یعنی دنوں کا سردار قرار دیا ہے اسے ہم بطور سیاہ دن منانے جارہے ہیں، جس جمعہ کے لئے کہا گیا کہ اس میں کثرت سے درود پڑھو،یہ دعائوں کی قبولیت کا دن ہے۔ یہ تو تھیں جمعہ کے روز کی فضيلت اور بلیک فرائیڈے کا تاریخی پس منظر اب جانتے ہیں اس بارے میں ہمارا دین کیا کہتا ہے سب سے پہلے رجوع کرتے ہیں قرآن پاک سے جس میں واضح الفاظ میں لکھا ہے کہ
اے لوگو! جو ایمان لائے ہو جب جمعہ کے دن نماز کے لئے اذان دی جائے اللہ کے ذکر کی طرف دوڑو اور خرید و فروخت چھوڑ دو یہ تمہارے لئے بہت بہتر ہے اگر تم جانتے ہو، پھر جب نماز پوری ہوجائے زمین میں پھیل جائو اور اللہ تعالیٰ کو کثرت سے یاد کرو اور جب وہ کوئی تجارت یا کھیل تماشہ دیکھتے ہیں تو اس کی طرف چلے جاتے ہیں اور تمہیں کھڑا چھوڑ جاتے ہیں، کہہ دیجئے جو اللہ تعالیٰ کے پاس ہے کھیل تماشے اور تجارت سے بہت بہتر ہے اور اللہ تعالیٰ سب رزق دینے والوں سے بہترین ہے۔
سورہ جمعہ:9تا11
اور جمعہ کی اہمیت اور افادیت کے بارے میں نبی کریم ﷺ کا ارشاد ہے
ہم با اعتبار امت سب امتوں کے بعد آئے ہیں لیکن قیامت کے دن حساب و کتاب اور جنت میں جانے کے لحاظ سے سب سے آگے ہوں گے، ہاں یہود و نصاریٰ کو ہم سے پہلے کتاب ضرور دی گئی تھی پس جمعہ کے دن عبادت کرنا ان پر فرض کیا گیا تھا مگر انہوں نے اختلاف کیا پس اللہ تعالیٰ نے ہمیں اس کی ہدایت کردی، پس سب لوگ اس بات میں ہم سے پیچھے ہیں، یہود کا دن کل(ہفتہ)اور نصاریٰ کا دن پرسوں(اتوار)ہے۔
یہود و نصاریٰ شروع دن سے ہی مسلمانوں کے خلاف سازشیں کرتے آئے ہیں اور یہ بھی اس سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ اللہ تعالیٰ نے مسلمانوں کو بتادیا ہے کہ
”یہود و نصاریٰ کبھی بھی تمہارے دوست نہیں ہوسکتے“
ہمارے آقاﷺ نے بھی فرمادیا ہے کہ  ”جس نے یہود و نصاریٰ کی تقلید کی وہ ہم میں سے نہیں اور روز قیامت وہ انہی میں اٹھایا جائے گا“
اس حوالے سے معروف قانون دان ثمینہ رضوان نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ حقیقت یہ ہے کہ کفار مسلمانوں کو سیل اور ڈسکائونٹ کے نام پر خرید و فروخت میں مصروف کرکے مسلمانوں کےلئے اس دن کی اہمیت کو ختم کرنا چاہتے ہیں تاکہ ہم اللہ پاک کے حکم سے روگردانی کریں۔
ہم مسلمان جمعہ کو بطور بلیک فرائیڈے منانے کی بجائے کسی اچھے نام سے اور مخصوص وقت میں یعنی نماز جمعہ کے بعد اپنی عبادت کے بعد خاص سیل اور ڈسکائونٹ دے کر تجارت شروع کرسکتے ہیں اور بلیک فرائیڈے کی بجائے اسٹار ڈے، اسپیشل ڈے، روشن دن کے نام سے بھی اسے موسوم کرسکتے ہیں –

Leave a Reply

Your email address will not be published.