دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی13 سے 19 نومبر اینٹی بائیوٹک ادویات سے آگاہی کا ہفتہ منایا جائے گا

جدت ویب ڈیسک :۔ دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی 13 سے 19 نومبر اینٹی بائیوٹک سے آگاہی کا ہفتہ منایا جائے گا۔ ایک سروے کے مطابق دنیا بھر کی طرح پاکستان میں غیر ضروری اور غلط استعمال کے باعث اینٹی بائیوٹک ادویات اپنا اثر کھوتی جا رہی ہیں جس سے اینٹی بائیوٹک ادویات کیخلاف جراثیموں میں مزاحمت بڑھنے لگی ہے۔ ماہرین نے کہا کہ ایک تو ڈاکٹرز غیر ضروری طور پر اینٹی بائیوٹک ادویات لکھ رہے ہیں اور ساتھ ہی کم علمی کے باعث زیادہ تر مریض بھی دوا کا کورس مکمل نہیں کر پاتے جو انتہاٰٗئی خطرناک ہے۔ اسی تناظر میں عالمی ادارہ صحت نے پاکستان سمیت دنیا بھرمیں 13 سے 19 نومبر اینٹی بائیوٹک سے آگاہی کا ہفتہ منانے کا اعلان کیا ہے ۔ اگرچہ ٹی بی، ایڈز،نمونیا، ملیریا جیسی جان لیوا بیماریوں کے خلاف اینٹی بائیوٹک ادویات کے استعمال نے طبی تاریخ بدل کر رکھ دی۔ بر وقت اور درست ادویات کے استعمال سے کروڑوں مریضوں کی جانیں بچائی جاتی ہیں تاہم ضرورت سے زیادہ کم یا پھر غلط ادویات استعمال خطرناک نتائج بھی آ رہے ہیں۔ علمی ادارہ صحت نے خبر دار کیا ہے کہ دنیا میں ہر سال لاکھوں افراد ایسی ادویات کے خلاف مزاحمت بڑھنے کے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ صورتحال یہی رہی تو مستقبل قریب میں جراثیموں کے خلاف ادویات کام کرنا چھوڑ دیں گی۔ غیر ضروری ادویات کا استعمال نہ روکا گیا تو دنیا اس معجزاتی علاج سے محروم ہو سکتی ہے۔ اینٹی بائیوٹک ادویات کا غیر ضروری اور غلط استعمال کے خلاف مزاحمت بڑھنے لگی۔ ماہرین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ صور تحال بر قرار رہی تو مستقبل قریب میں اینٹی بائیوٹک ادویات بے اثر ہو جائیں گی

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.