عدالت نے ہمارے وکیل کی استدعا سنے بغیر اسحاق ڈار پر فرد جرم عائد کی، طارق فضل چوہدری

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک مسلم لیگ ن کے رہنما اور وزی مملکت برائے کیڈ طارق فضل چوہدری نے کہا ہے کہ معزز عدالت نے ہمارے وکیل کی استدعا سننے بغیر وزیر خزانہ اسحاق ڈار پر فرد جرم عائد کر دی ہے۔ اسلام آباد احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ بدھ کی صبح احتساب عدالت نے آمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار پر فرد جرم عائد کردی ہے۔ طارق فضل چوہدری نے کہا کہ کیس کی سماعت سے قبل ہمارے وکیل نے معزز عدات سے درخواست کی تھی کہ نیب قوانین کے مطابق جب کسی فرد کے خلاف فرد جرم عائد کی جاتی ہے تو اس سے قبل مذکورہ شخص کو کم از کم 7 دن کی مہلت دی جاتی ہے۔ مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ ہمارے وکیل نے فردجرم عائد کرنے سے قبل عدالت کو اس حوالے سے ہائی کورٹ ، آزاد کشمیر سپریم کورٹ اور سپریم کورٹ آف پاکستان کے ریفرینسز بھی پیش کئے ہیں جن کے تحت ریفرینس دائر ہونے کے بعد 48 گھنٹوں کے اندر اندر فرد جرم عائد نہ کرنے کے فیصلے موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ احتساب عدالت نے کیس کی سماعت کے لئے 4 اکتوبر کی تاریخ مقرر کی ہے جبکہ اس دن دو گواہوں کو بھی طلب کیا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی قیادت اور میاں محمد نواز شریف سمیت جن جن ساتھیوں کے خلاف ریفرنس دائر کئے گئے ہیں وہ تمام عدالتوں کے سامنے پیش ہو رہے ہیں۔ طارق فضل چوہدری نے کہا کہ مسلم لیگ ن قانون کی بات نہیں کرتے بلکہ عملی طور پر بھی عدالتوں میں پیش ہو رہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.