شہرمیں غیرقانونی تعمیرات کی تفصیلات طلب

کراچی جدت ویب ڈیسک سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے ڈائریکٹرجنرل آغامقصودعباس نے تمام ڈائریکٹرزکو5دن میں شہرکے مختلف علاقوںمیں جنوری 2016ئ سے جولائی 2017ئ کے دوران رہائشی پلاٹس پر غیرقانونی پورشنزاوریونٹس/فلیٹس پرمشتمل غیرقانونی کمرشل پلازہ کی تفصیلات جمع کروانے کی ہدایات دیتے ہوئے کہاہے کہ فرائض میں بددیانتی ہرگزبرداشت نہیں کی جائے گی ملوث افسران واسٹاف کے خلاف انضباطی کاروائی جس میں سروس سے برخاستگی بھی شامل ہے عمل میں لائی جائے گی۔انہوں نے یہ انتباہ ایس بی سی اے میں ہونے والے افسران کے ایک اجلاس کی صدرات کرتے ہوئے کیا،انہوں نے کہاکہ لیاقت آباد ،نارتھ ناظم آباد،گلشن اقبال اسکیم 33،گلبرگ اورجمشیدٹائون میں اس زمرے کی تعمیرات سے متعلق شکایات ہیں جبکہ ملیر ،شاہ فیصل ،لانڈھی ،کورنگی اورکیماڑی ٹائون سے پلان کی منظوری کیلئے جمع ہونے والے کیسز کے مقابل کنسٹریکشن کہیں زیادہ ہورہی ہے متعلقہ افسران نااہل ہیں یاکام نہیں کرناچاہتے معاملہ جو بھی ہولیکن اب ایسا نہیں چلے گا،مجھے شہر کی بدنمائی کاسبب بننے والی اورتیزی سے بنیادی سہولیات میں بحرانی کیفیت کاموجب غیرقانونی تعمیرات کامکمل صفایاچاہیئے انہوں نے تمام ڈائریکٹرکوہدایات دی کے جنوری2016سے اب تک ہونے والی تمام خلاف ضابطہ تعمیرات کی مکمل تفصیلات ،تصاویرکے ساتھ5دن میں جمع کروائی جائےں، ٹائونزسیکشنزجمع شدہ پرپوزپلان کو ویری فکیشن سیل کوبھیجنے میں بلاوجہ تاخیر نہ کرےںجبکہ ویری فکیشن سیل میںجلدازجلد کیسزکونمٹایاجائے ،بنیادوں کی جانچ کاکام لازمی کیاجائے تمام تر امور سے متعلق رپورٹس بروقت متعلقہ سیکشنز کو دی جائیں تاکہ غیرقانونی تعمیرات کے خلاف سری الحرکت قانونی اقدامات کئے جائیں ،ڈیمالیشن اسکواڈ ہرانہدامی عمل کے بعداحاطہ تعمیرات کوسربمہربھی کرے تاکہ اس جگہ دوبارہ تعمیرات نہ کی جاسکے باوجود اس کے اگر سربمہری کی خلاف ورزی پرایف آئی آر درج کروائی جائے۔ انہوں نے تمام ڈائریکٹرز کوواضع کیاکہ تعمیراتی بے قاعدگیوں میں ملوث کسی بھی ماتحت افسریااسٹاف کی رپورٹ بلاتاخیر دیں، بدیانتی وفرائض سے غفلت کے مرتکب کے خلاف انضباطی کاروائی کرتے ہوئے ملازمت سے برخاست کردیاجائے گااس سلسلے میں کسی قسم کی سفارش یادبائوکو خاطر میں نہیں لایاجائے گا ۔اجلاس سے خطاب میں آغامقصود عباس نے کہاکہ بلڈنگ پلان مرتب کرنے والے پروفیشنل آرکیٹکٹ اوراسٹریکچر انجینئرزپرصرف مجوزہ تعمیراتی پلان پیش کرنے ہی کی زمہ داری نہیں ہے بلکہ اسی بی سی اے سے حاصل اختیارات میں کمپلیشن پلان کی منظوری تک تمام امور کی زمہ داری بھی ان پرلاگو ہوتی ہے اور وہ تعمیراتی بے قاعدگی سے متعلق شکایات کے پابند ہیں ،اس سلسلے میں غیرزمہ دار آرکیٹیکٹ و اسٹریکچرانجینئرزکے لائسنس کی منسوخی سمیت دیگرقانونی کاروائی عمل میں لائی گئی ہے۔ ڈائریکٹرجنرل آغامقصود عباس نے مزید کہاکہ شہرکے چھوٹے مکانات کے حامل قدیم اور گنجان آباد علاقوں بلخصوص لیاری اور لیاقت آبادٹائون میں 40 سال یااس سے قدیم تعمیرات کثرت سے موجود ہیںاورانجام سے لاپرواہ،تعمیراتی اصولوں سے نابلدافراد اوربلڈرز مافیاکے کارندے ان پرمزیدتعمیراتی بوجھ ڈال کرحادثات وسانحات کوجنم دینے کاجرم کررہے ہیںجس کی حوصلہ شکنی ضروری ہے ۔اس سلسلے میں سروے افسران خصوصی نظررکھیں اورخلاف ورزی پر فوری کاروائی عمل میں لائی جائے ۔اجلاس میں ایس بی سی اے کے تمام ڈائریکٹرز وٹائونزڈائریکٹرشریک تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.