شاہراہ فیصل انڈر پاس کی تعمیر مکمل ، 22 جولائی کو افتتاح

کراچی جدت ویب ڈیسک ڈرگ روڈ اسٹیشن کے سامنے شاہراہ فیصل انڈر پاس کی تعمیر مکمل ہوگئی ہے ۔22 جولائی بروز بروز ہفتہ کو ٹریفک کیلئے کھول دیا جائے گا، جبکہ شہر یوں نے منگل کے روز سے ہی از خود استعمال کرنا شروع کردیا ہے ، تاہم محکمہ بلدیات سندھ لوکل گورنمنٹ کے حکام کا کہنا ہے کہ 22 جولائی بروز بروز ہفتہ کو انڈرپاس کو باقاعدہ ٹریفک کے لئے کھول دیا جائے گا جبکہ تعمیر کی گئی شاہراہ فیصل پر لین مارکنگ اورکیٹ آئی لگانے کا کام بھی جلد شروع کیا جا رہا ہے ۔شاہراہ قائدین فلائی اوور نرسری سے اسٹار گیٹ تک شاہراہ فیصل کی کارپٹنگ کا عمل بھی مکمل ہوگیا ہے جبکہ اسٹارگیٹ سے ناتھا خان پل تک سڑک کی کارپٹنگ آئندہ دو تین روز میں مکمل کر لی جائے گی اس کے بعد شاہراہ قائدین فلائی اوور سے ایف ٹی سی تک دونوں ٹریک کی کارپیٹنگ کا کام انجام دیا جائے گا۔ذرائع نے بتایا کہ انڈر پاس کے اندر اور راشد منہاس روڈ سے صدر جانے کیلئے سڑک کی کارپٹنگ اور دیگر ضروری کام مکمل کر لئے گئے ہیں جبکہ وزیراعلیٰ سندھ نے بھی انڈر پاس کھولنے کی حتمی تاریخ 22 جولائی دی ہے ،شاہراہ فیصل کو کشادہ کرنے کے منصوبے کے تحت ناتھا خان پل سے اسٹارگیٹ اور اسٹارگیٹ سے ناتھا خان پل تک سڑک کی کارپٹنگ کیلئے ٹھیکیدار کو چھ روز دیئے گئے تھے جبکہ شاہراہ قائدین سے ایف ٹی سی فلائی اوور تک شاہراہ فیصل کے دونوں ٹریک کی ازسرنو کارپٹنگ کا کام بھی جلد شروع کیا جا رہا ہے ، واضح رہے کہ شہری جنہوں نے تعمیراتی کاموں کے دوران گھنٹوں ٹریفک جام میں گزارے ہیں شدت سے سڑکوں کی تعمیر مکمل ہونے کا انتظار کر رہے ہیں حکومت سندھ نے پہلے کراچی میں جاری میگا منصوبوں کی تکمیل کی مدت 30 جون تک مقرر کی تھی کیونکہ ان منصوبوں پر دسمبر 2016ئمیں کام شروع ہو گیا تھا اب تک صرف طارق روڈ اورمنزل پمپ فلائی اوور کی تعمیر مکمل ہو سکی ہے جبکہ بقیہ منصوبوں این ای ڈی تا صفورا چورنگی یونیورسٹی روڈ، صفورا سے ملیر کینٹ چیک پوسٹ نمبر6 تک سڑک کی تعمیر نامکمل ہے ، سرجانی تا مدینہ الحکمت منگھو پیر، بلدیہ ٹاؤن کے سامنے حب ریور روڈ کی تعمیرجیسے منصوبے بھی ادھورے ہیں،بلدیہ عظمیٰ کراچی کے زیرانتظام ایئرپورٹ تا قائدآباد این فائیو روڈ اور جامعہ ملیہ جانے کے لئے فلائی اوور کی تعمیر بھی شہریوں کے لئے دردِ سر بنی ہوئی ہے ،اس منصوبے پر دو ڈھائی سال سے کام جاری ہے ،میئر، ڈپٹی میئر کو آئے ہوئے بھی دس ماہ سے زائد کا عرصہ گزر چکا ہے لیکن تاحال سڑک اور ملیر پندرہ فلائی اوور کے بقیہ حصے کا کام مکمل نہیں ہو سکا،لوگ دن رات این فائیو پر گھنٹوں ٹریفک جام میں پھنسے اور دھول مٹی کا شکار رہتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.