پاکستان ترقی کی شاہراہ پر گامزن ہو گیا ہے‘صدر ممنون حسین

لاہور جدت ویب ڈیسک صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان آزمائشوں کے دور سے نکل کر ترقی کی شاہراہ پر گامزن ہو گیا ہے،ترقی کی رفتار کو مزید بہتر بنانے کیلئے ضروری ہے کہ قوم کا ہر فرد خاص طور پر سرکاری انتظامیہ پورے جوش و جذبے کے ساتھ کام کرے، جس ملک کی انتظامیہ محنت اور ایمانداری سے اپنی ذمہ داریاں ادا کرتے ہوئے سنہری اصولوں کی پاسداری کو یقینی بناتی ہیں اس کی ترقی کی راہ میں کبھی کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہو سکتی،پاک‘ چین اقتصادی راہداری کی تعمیر اور فعالیت کے مراحل اسی جوش وجذبے کے متقاضی ہیں جو قیام پاکستان کے بعد استحکام پاکستان کی جدوجہد کے زمانے میں دیکھا گیا۔ وہ بدھ کے روز نیشنل سکول آف پبلک پالیسی لاہور سے کورس مکمل کرنیوالے106ویں نیشنل مینجمنٹ کورس کے56 اور21ویں سینئر مینجمنٹ کورس کے68 افسران سے خطاب کر رہے تھے۔اس موقع پر ریکٹر سکول آف پبلک پالیسی عظمت علی رانجھا و دیگر بھی موجود تھے۔صدر مملکت ممنون حسین نے کہا کہ دنیا میں صرف وہی قومیں ترقی کرتی ہیں جن کے افراد اور ذمہ داران قومی امور کے سلسلہ میں زندگی کے ہر مرحلے پر پر عزم اور متحرک رہ کر اپنی ذمہ داریاں سر انجام دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ قومی زندگی کے کسی مرحلے پر اگر کار سرکار کی انجام دہی اور عوامی خدمات کی ادائیگی کے دوران یہ کیفیات سرد پڑتی ہوئی محسوس ہوں تو سمجھ لینا کہ معاملات زوال کا شکار ہیں جن سے بچنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں سول افسران کو کورس مکمل کرنے پر مبارک باد دیتا ہوں اور توقع کرتا ہوں کہ ان تربیتی مراحل سے گزرنے کے بعد قومی اور عوامی امور کی انجام دہی کے ضمن میں مذکورہ افسران کے فہم وادراک اور کارکردگی میں نمایاں بہتری آئے گی اور وہ اپنے فرائض منصبی کی بجا آوری پہلے کی نسبت زیادہ تندہی اور خوشگوار طریقے سے انجام دے سکیں گے۔صدر مملکت نے افسران سے مخاطب ہو کر کہا کہ آپ لوگوں سے ملاقات قیام پاکستان کے بعد ان خوشگوار دنوں کی یادیں تازہ کردیتی ہے جب مختلف سروسز کے افسران ایک مشنری بلکہ عبادت کے جذبے کے تحت اپنی ذمہ داریاں ادا کیا کرتے تھے، سول سروسز کے ان بہت سے ممتاز ذمہ داران سے میری یاد وابستہ رہی جنہوں نے ٹوٹی ہوئی میز کرسیوں پر بیٹھ کر کار سر کار چلایا اور عوامی مسائل کے حل کیلئے مثالی فرض شناسی‘ درد مندی اور غیر معمولی جذبے کا مظاہر کیا۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی عوامی و فلاحی ریاست کی بیورو کریسی میں کام کرنے کا جذبہ ایسا ہی ہونا چاہئے، یہ شاندار روایات قابل فخر اور قابل تقلید ہیں اور میں توقع کرتا ہوں کہ سول سروسز کے ان مثالی کرداروں کا سنہری طرز عمل ہمیشہ آپ کے پیش نظر رہتا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تاریخ عالم کے مختلف ادوار کا جائزہ لیا جائے تو یہ حقیقت سامنے آتی ہے کہ دنیا میں انہی قوموں نے ترقی کی ہے جن کے افراد اور ذمہ داران زندگی کے ہر مرحلے پر پر عزم اور متحرک رہے،اس کا مطلب یہ ہے کہ قوموں کی زندگی میں کوئی مرحلہ ایسا نہیں آتا جب فرائض کی بجا آوری کے دوران مشنری جذبے اور جوش وخروش کی ضرورت باقی نہ رہے۔ممنون حسین نے کہا کہ تحریک آزادی کے ایام میں شاعر مشرق نے ہمیں اسی کیفیت سے نکالنے کے لئے فرمایا تھا کہ’’ سکوں محال ہے قدرت کے کارخانے میں‘‘ اس لئے آپ کو میری یہ نصیحت ہے کہ اپنے فرائض منصبی کی بجا آوری کے دوران ہمیشہ اسی جذبے کو زندہ رکھیے تاکہ عوامی مسائل کو حل اور قومی ترقی کی رفتار تیز کی جاسکے۔صدر مملکت نے شرکاء سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ پاکستانی قوم گزشتہ 70 برس کے دوران ان ہی چیلنجوں سے نبردآزما رہی ہے اور اب اللہ کے فضل وکرم سے ان قربانیوں کا پھل حاصل کرنے کا وقت آن پہنچا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاک‘ چین اقتصادی راہداری کی تعمیر اور فعالیت کے مراحل اسی جوش وجذبے کے متقاضی ہیں جو قیام پاکستان کے بعد استحکام پاکستان کی جدوجہد کے زمانے میں دیکھا گیا اور میں توقع کرتا ہوں کہ وطن عزیز کے درد مند فرزند کی حیثیت سے آپ اپنے دلوں سے یہ جذبہ کبھی ماند نہیں پڑنے دیں گے۔انہوں نے کہا کہ افراد ملت اور ذمہ داران ریاست کے دلوں میں اگر یہ جذبہ ہمہ وقت برقرار رہے تو پھر کسی کو آئین کی پاسداری کیلئے دہائی نہیں دینا پڑتی اور نہ عوام کو یہ شکایت ہوتی ہے کہ حکومت اور ریاستی اداروں نے انہیں حالات کے رحم وکرم پر چھوڑ رکھا ہے، جس ملک کی انتظامیہ اپنی ذمہ داریاں ادا کرتے ہوئے ان سنہری اصولوں کی پاسداری کرے اس کی ترقی کی راہ میں کبھی کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہوسکتی، ملازمت کے مختلف مراحل پر کار پر دازان ریاست کی تربیت کیلئے ایسے کورسز کے انعقاد کی حکمت بھی یہی ہے، توقع ہے کہ آپ لوگوں کو ان کورسز کے دوران جو کچھ بتایا اور سمجھایا گیا ہے اس کے مقاصد آپ پر پورے طور پر واضح ہو چکے ہیں اور جب آپ اس ادارے سے رخصت ہونے کے بعد اپنی ذمہ داریاں سنبھالیں گے تو آپ کی کارکردگی پر اس تربیت کے بہترین اثرات نظر آئیں گے، میں آپ سب کی ترقی اور خوشحالی کیلئے دعا گو ہوں۔ اس موقع پر صدر مملکت نے کورسز مکمل کرنیوالے افسران میں سرٹیفکیٹس تقسیم کئے جبکہ سکول آف پبلک پالیسی کے ریکٹر عظمت علی رانجھا نے بھی خطاب کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.