اوورسیز پاکستانی بینکوں کے زریعے اپنی رقوم بھیجیں منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لیے متعلقہ اداروں کو کردار ادا کرنا ہوگا: وزیر اعظم

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک ::: وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا جس میں انہوں نے کہا کہ منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لیے متعلقہ اداروں کو کردار ادا کرنا ہوگا۔
تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا جس میں منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے کیے جانے والے اقدامات سے متعلق بریفنگ دی گئی۔
اجلاس میں وفاقی وزیر برائے داخلہ، وزیر خزانہ اسد عمر اوروزیر تجارت سمیت اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔ اجلاس میں وزیر اعظم کو کم آمدن طبقے کے لیے گھروں کی فراہمی کے منصوبے پر بریفنگ دی گئی۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ 5 لاکھ گھروں کی فوری تعمیر اولین ترجیح ہے، گھروں کی تعمیر کے لیے نجی شعبہ آگے آئے۔ منصوبہ رہائشی مسائل کاحل اور اقتصادی ترقی کا باعث ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ رہائشی منصوبے سے روزگار کے مواقع بھی پیدا ہوں گے، بے گھر کیے بغیر کچی آبادیوں کو ریگولرائز کرنے کی پالیسی بنانا ہوگی۔ منصوبے پر عملدر آمد اور روڈ میپ کے لیے سیکریٹری ہاؤسنگ کی سربراہی میں کمیٹی بھی قائم کردی گئی۔اجلاس میں وزیر اعظم کو منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے اقدامات سے متعلق بریفنگ دینے کے ساتھ ساتھ ایف اے ٹی ایف کی شرائط اور ہنڈی کے خاتمے سے متعلق اقدامات سے بھی آگاہ کیا گیا۔
اس موقع پر وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لیے متعلقہ اداروں کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوں نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کومخاطب کرکے کہا کہ ہنڈی کی بجائے بذریعہ بینک اپنی رقوم وطن بھجوا کر پاکستان کی تعمیروترقی میں اپنا کردارادا کریں۔خیال رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے منی لانڈرنگ کے حوالے سے شروع سے ہی سخت مؤقف اپنایا ہے۔ وزارت عظمیٰ کا حلف اٹھانے کے بعد قوم سے اپنے پہلے خطاب میں وزیر اعظم نے کہا تھا کہ پاکستان سے چوری ہو کر باہر جانے والا پیسہ واپس لانا ہے، ہر سال پاکستان سے ایک ہزار ارب روپے چوری ہو کر باہر جاتے ہیں۔
انہوں نے کہا تھا کہ منی لانڈرنگ سے باہر گیا پیسہ واپس لانے کے لیے ٹاسک فورس بنائیں گے۔ جس پارٹی کے لیڈر کا پیسہ ملک میں نہیں اسے کبھی ووٹ نہ دیں، جس کے اربوں روپے باہر پڑے ہیں وہ کیسے عوام کی حالت بہتر کرے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.