.وزیراعظم اور وفاقی کابینہ نے بجٹ میں کال ‏اور انٹرنیٹ پر اضافی ٹیکس کی منظوری نہیں دی۔

ویب ڈیسک ::وزیراعظم اور وفاقی کابینہ نے بجٹ میں کال ‏اور انٹرنیٹ پر اضافی ٹیکس کی منظوری نہیں دی۔وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے تین منٹ سے لمبی کال اور انٹرنیٹ کے استعمال پر نئے ٹیکس ‏سے متعلق اہم وضاحت کر دی۔

ٹوئٹر پر جاری بیان میں حماداظہر نے واضح کیا کہ وزیراعظم اور وفاقی کابینہ نے بجٹ میں کال ‏اور انٹرنیٹ پر اضافی ٹیکس کی منظوری نہیں دی۔

انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی میں بجٹ پیش کیے جانے سے قبل اسے فنانس بل میں شامل نہیں ‏کیا گیا تھا

وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین نے قومی اسمبلی میں پیش کردہ بجٹ میں اعلان کیا تھا کہ تین منٹ ‏سے زیادہ موبائل فون کال اور انٹرنیٹ ڈیٹا کے استعمال پر ‏ایف ای ڈی کی تجویز ہے۔

تین منٹ سے زائد کال اور انٹرنیٹ کے ساتھ ساتھ ایس ایم ایس پیغامات پر بھی ایف ای ڈی عائد ‏کردیا ‏گیا ہے۔

حکومتی اعلان کے بعد سوشل میڈیا پر اضافی ٹیکسوں پر صارفین نے شدید ردعمل دیتے ہوئے ‏فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کیا تھا۔

Hammad Azhar
@Hammad_Azhar
The PM and Cabinet did not approve the FED levy on internet data usage. It will not be included in the final draft of the Finance Bill (budget) that is placed before parliament for approval.

Leave a Reply

Your email address will not be published.