اسٹیل مل کی اراضی کوڑیوں کے بھائو بیچنے کی تیاریاں

کراچی جدت ویب ڈیسک اسٹیل مل کی اراضی کوڑیوں کے بھائو فروخت کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں، بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس میں فی ایکڑ قیمت کا تخمینہ ایک کروڑ40لاکھ روپے لگایا گیا جبکہ مارکیٹ ویلیو ڈھائی کروڑ روپے فی ایکڑ ہے ،بورڈ آف ڈائریکٹرز کے دو اراکین کو بھی بہتی گنگا میں ہاتھ دھونے کا موقع دیا گیاہے ،انہیں 7اور 9ایکڑ کے دو پلاٹ فروخت کرنے کی اجازت دی گئی ہے ۔تفصیلات کے مطابق اسٹیل مل کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے 20جولائی کو اسلام آبا دمیں منعقدہ اجلاس میں ہزاروں ملازمین کو روزگار فراہم کرنے والے فولاد سازی کے عظیم الشان کارخانے کی بحالی کے بجائے ادارے کی اراضی کی کوڑیوں کے مول فروخت پر توجہ مرکوز رہی اور ہزاروں ایکڑ قیمتی زمین کو مارکیٹ سے کہیں کم قیمت پر فروخت کی کوششیں کی جارہی ہیں۔بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس میں افسران کی ترقیاں،ادارے کی قیمتی اراضی کی مارکیٹ سے کم قیمت پر فروخت اور کفایت شعاری کے معاملات ایجنڈے پر تھے ،تاہم بورڈ اجلاس میں کسی بھی لمحے ادارے کی بحالی اور نئے بزنس پلان کی تیاری کے حوالے سے تبادلہ خیال نہیں کیا گیا ،بورڈ اجلاس میں سی پیک منصوبے کے تحت اسپیشل اکنامک زون کی تعمیر کیلئے اسٹیل مل کی 1500ایکڑ اراضی کی فروخت کی بھی منظوری دی گئی اور اس کیلئے فی ایکڑ قیمت کا تخمینہ محض ایک کروڑ40لاکھ روپے لگایا گیا جبکہ مارکیٹ ذرائع کا کہنا ہے کہ مجوزہ اراضی کی قیمت دو یا ڈھائی کروڑ روپے فی ایکڑ کے درمیان ہے ،یہی نہیں بلکہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کے دو اراکین کو بھی اس بہتی گنگا میں ہاتھ دھونے کا موقع فراہم کیا گیا اور انہیں بھی سات اور نو ایکڑ کے دو پلاٹس فروخت کرنے کی اجازت دی گئی،ذرائع کے مطابق اسٹیل مل حکام کی جانب سے اس اراضی کی قیمت کا تخمینہ لگانے والی کمپنی سے متعلق بھی کوئی تفصیلات نہیں فراہم کی گئیں ہیں۔اس ضمن میں نمائندہ دنیا نے ترجمان اسٹیل مل سے بھی استفسار کیا تھا ،تاہم ایک ہفتہ سے زائد گذر جانے کے باوجود انہوں نے اس ضمن میں کوئی جواب نہیں دیا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.