پاکستان کا جوابی وار۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان باسمتی چاول کی جنگ یورپی یونین میں پہنچ گئی ۔

اسلام آباد :: پاکستان اور بھارت کے درمیان باسمتی چاول کی جنگ یورپی یونین میں پہنچ گئی۔ بھارت نے باسمتی کی اجارہ داری کے لیے خصوصی ٹریڈ مارک کی درخواست کردی، پاکستان نے بھی جوابی درخواست دیدی۔اقوام متحدہ کے اعدادوشمار کے مطابق، بھارت دنیا میں سب سے زیادہ چاول برآمد کرنے والا ملک ہے اور وہ سالانہ 6.8 ارب ڈالرز آمدنی چاول سے حاصل کرتا ہے۔ جب کہ پاکستان کا دنیا میں چوتھا نمبر ہے اور اس کی چاول سے سالانہ آمدنی 2.2 ارب ڈالرز ہے۔

بھارت نے باسمتی چاول کی قسم پر اجارہ داری حاصل کرنے کی درخواست یورپی یونین میں دی۔ یہ درخواست پاکستان کے باسمتی چاول کی ایکسپورٹ کے لیے خطرے کا باعث ہو سکتی ہے۔ جس پر پاکستان نے بھارتی دعوے کی مخالفت کرتے ہوئے ‘پروٹیکٹڈ جیوگرافیکل انڈیکیشن‘ یعنی جی پی آئی کی جوابی درخواست جمع کرا دی۔ یوں دونوں ممالک کے درمیان ایک نئے تنازعے نے جنم لے لیا۔پاکستان رائس ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ پاکستانی باسمتی زیادہ آرگینک اور بہتر ذائقے کا حامل ہے۔ ماہرین کہتے ہیں اگر پاکستان بھارت کو قائل کرنے میں کامیاب رہا۔ تو پھر ایک نئی درخواست ‘مشترکہ ورثے‘  کے طور پر جمع کرائی جانے کا امکان ہے۔

Pakistani Basmati Rice Buy basmati rice Pakistan from SA Global Services

Leave a Reply

Your email address will not be published.