غیر قانونی مدارس و مساجد کےخلاف کریک ڈاون کا فیصلہ

کراچی جدت ویب ڈیسک صوبائی وزیر داخلہ سندھ سہیل انور خان سیال کی زیر صدارت اعلی سطح کا اجلاس پیر کومنعقد ہوا ، جس میں ایڈیشنل آئی جی کراچی سمیت سیکرٹری داخلہ سندھ، تمام زونل ڈی آئی جیز ، کمشنرز ، پی ٹی اے اور موبائل کمپنیوں کے نمائندگان، موٹر سائیکل کمپنیوں کے مالکان سمیت رینجرز اور حساس اداروں کے ذمہ داروں نے شرکت کی۔اجلاس کا مقصد صوبے بھر میں غیر قانونی مدارس و مساجد کی روک تھام سمیت موٹر سایئکلوں اور موبائل فونوں کو جرائم میں استعمال ہونے سے بچانے کے لئے پالیسی وضع کرنا تھااجلاس کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے وزیر داخلہ سندھ نے کہا کہ صوبے بھر میں تمام داخلی و خارجی راستوں سمیت رہائشی علاقوں میں فوری طور پر غیر قانونی مدارس و مساجد کے خلاف کریک ڈاون کا آغاز کیا جائے اور سرکاری زمین پر ناجائز تجاوزات کرنے والوں کے ساتھ سختی سے نبٹا جائے۔سہیل انور خان سیال نے کہا کہ سندھ میں انتہا پسندی کے رجحانات کو روکنے اور امن دشمنوں کے قلع قمع کے لئے اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ کوئی بھی دینی درس گاہ یا مسجد محکمہ داخلہ سندھ کے اجازت نامے کے بنا تعمیر نہ ہو۔وزیر داخلہ سندھ نے یہ واضح کیا کہ ایسے تمام عناصر جو مذہب کی آڑ لیکر نفرت کا پرچار کرتے ہیں کسی بھی صورت قانون کی گرفت سے بچ نہ پائیں اور اس مقصد کی تکمیل کے لئے تمام تر وسائل و اسباب پوری قوت کے استعمال کئے جائیں۔موٹر سایئکلوں کی چوری اور جرائم میں ان کے استعمال کے حوالے سے سہیل انور خان سیال نے موٹر سایئکل کمپنیوں کے مالکان سے موٹر سایئکلوں میں ٹریکنگ ڈیوائس نصب کرنے کے موضوع پر بات کرتے ہوئے کہا کہ زیادہ تر جرائم میں موٹر سایئکلوں پر موجود ملزمان آسانی سے فرار ہوجاتے ہیں لہذا ایسی پالیسی وضع کی جائے کہ حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی رسائی تمام موٹر سائیکل مالکان تک باآسانی ہو سکے۔موبائل فونوں کی چوری کے موضوع پر بات کرتے ہوئے وزیر داخلہ سندھ نے اس بات پر زور دیا کہ تمام موبائل کمپنیاں اس امر کو یقیی بنائیں کہ ان کے صارفین کے مکمل کوائف ان کے پاس موجود ہوں تاکہ کسی بھی جرم کے ارتکاب کی صورت میں مجرم تک پہنچا جاسکے ۔پی ٹی اے نمائندگان سے مخاطب ہوتے ہوئے سہیل انور خان سیال کا کہنا تھا کہ تمام موبائل سمز کے ساتھ ساتھ موبائل سیٹوں کو بھی باقاعدہ رجسٹرڈ ہونا چاہئے تاکہ جرم کی روک تھام میں مدد کے ساتھ شر انگیزوں اور امن دشمنوں کی بیخ کنی کی جاسکے اور صوبے میں مستقل امن کا خواب پورا ہوسکے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.