اگر آج قائداعظم زندہ ہوتے تو وہ کس قبیلے میں کھڑے ہوتے سابق وزیراعظم نوازشریف

جدت ویب ڈیسک :مسلم لیگ (ن) کے زیر اہتمام وکلاءکنونشن سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ بانی پاکستان قائداعظم بھی ایک وکیل تھے جنہوں نے الگ ملک کی جدوجہد کی۔انہوں نے کہا کہ تلخ حقیقت یہ ہے کہ آمریت کو جواز دینے والوں میں چند کا وکلاءسے تعلق ہے اور آج بھی ایسی آوازیں سنائی دیں گی جو جمہوریت کی بات کرنے والوں کے خلاف ہیں۔ معیار صرف ایک ہونا چاہئے اور سوچنے کی بات بھی ہے، کہ اگر آج قائداعظم زندہ ہوتے تو کس قبیلے میں کھڑے ہوتے آج بھی وکلاءپر بھارتی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ علامہ اقبال کی فکر اور قائداعظم کے کردار کی روشنی میں جمہوریت کے استحکام اور آئین کی حکمرانی کیلئے کردار ادا کریں۔سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ میں کئی سالوں سے عوام کی بڑی عدالت میں پاکستان اور جمہوریت کا مقدمہ لڑ رہا ہوں

Leave a Reply

Your email address will not be published.