shemale sex videos

خواجہ سرائوں نے حکومت کو نئی مشکل میں ڈال دیا

ملیر سے رحیم شاہ کی رپورٹ٭خواجہ سرائوں کا سرکاری ملازمتوں میں کوٹہ نہ ملنے کے خلاف وزیر اعلیٰ ہائوس کے سامنے احتجاج کرنے کا اعلان،سوشل ویلفیئر ڈپارٹمنٹ مکمل طور پر ناکام ثابت ہوا ہے،سپریم کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود خواجہ سرائوں کو سرکاری ملازمتوں میں شامل نہیں کیا جا رہا، ان خیالات کا اظہار خواجہ سرائوں کی تنظیم جیا کے صدر بندیا رانی کے ہمراہ خواجہ سرا نیلی، مظہر انجو، چاہت اور دیگر نے ملیر پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کئے،انہوں نے کہاکہ ہم بھی پاکستانی شہری ہیں اور پاکستانی محکموں میں عام شہری کی طرح روزگار پر ہمارا بھی حق ہے جس کے حوالے سے ہمارا حق تسلیم کرتے ہوئے ملک کی اعلیٰ عدلیہ سپریم کورٹ نے بھی احکامات جاری کئے تھے،مگر سندھ حکومت نے سپریم کورٹ کے احکامات کو بھی خاطر میں نہ لاتے ہوئے خواجہ سرائوں کو نظر انداز کر رکھا ہے، سندھ گورنمنٹ کا سوشل ویلفیئر ڈپارٹمنٹ مکمل طور پر ناکام ہو چکا ہے،ہم خواجہ سرا بھیک مانگ کر اور مختلف محفلوں میں لوگوں کو محظوظ کرکے گذر بسر کرنے پر مجبور ہیں اگر ہمیں بھی بہتر روزگار دیا جائے تو ہم بھی باعزت زندگی گذار سکتے ہیں مگر ایسا محسوس ہوتا ہے کہ خواجہ سرا مکمل طور پر لاوارث اور اس ملک کے شہری ہی نہیں ہیں،اگر سندھ حکومت نے خواجہ سرائوں کو سرکاری اداروں میں ملازمتوں کو کوٹہ نہ دیا تو ہم وزیر اعلیٰ ہائوس کے سامنے کثیر تعدا د میں جمع ہوکر احتجاج کرینگے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.