سپریم کورٹ کے حکم پر غیرمعیاری اور جعلی ادویات بنانے والی کمپنی کے مالک عثمان گرفتار

جدت ویب ڈیسک ::سپریم کورٹ میں جعلی ادویات بنانے والی کمپنی کے خلاف ڈریپ کی درخواست پر سماعت ہوئی ۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے پوچھا کہ کون ہے جو جعلی ادویات بنانے والے کی پشت پناہی اور مدد کرتا ہے ۔ عدالت میں موجود جعلی ادویات بنانے والی کمپنی کے مالک کے رشتے دار ڈی آئی جی راجی رفعت کو طلب کیا گیا ۔ ۔ عدالت نے تین گھنٹے میں فیکٹری سیل کرکے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا ۔چیف جسٹس نے کہا کہ تم ہو جو غیر معیاری ادویات بنانے والی کمپنی کی مدد کرتے ہو، تمہاری تو وردی اترواتا ہوں ۔ چیف جسٹس نے ڈی آئی جی راجہ رفعت کو 8 مارچ تک کام کرنے کی اجازت دی ۔
آئی جی پنجاب کو راجہ رفعت کے خلاف تحقیقات کی ہدایت کر دی ۔چیف جسٹس نے جعلی ادویات بنانے والی کمپنی کے مالک محمد عثمان کو کمرہ عدالت میں گرفتار کرنے کا حکم دیا ۔
چیف جسٹس نے حکم دیا کہ ڈریپ 3 گھنٹے کے اندر اندر کمپنی کا انتظام سنبھالے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.