اسلام آباد سے لاہور تک بازار، سڑکیں بند،شہری پریشان

جدت ویب ڈیسک :نااہل سابق وزیراعظم نوازشریف کی اسلام آباد سے لاہور ریلی کے لئے دفعہ 144 کی پابندی ختم کر دی گئی، بازار ،سڑکیں بند کرنے سے شہری پریشان ہیں ،بچوں کی سکول سے چھٹی کا ٹائم ہونے پر والدین پریشانی کا شکار ہوگئے نوازشریف کی لاہور ریلی کے لئے میئرراولپنڈی سردار نسیم کی درخواست پر دفعہ 144 پر پابندی ختم کرکے جلسے جلوسوں کی اجازت دے دی گئی ہے۔نا اہل وزیراعظم کی اسلام آباد سے جی ٹی روڈ کے ذریعے لاہور روانگی کے موقع پر راولپنڈی اور اسلام آباد میں میٹرو بس سروس معطل رہے گی۔رات گئے پولیس نے مری روڈ پر قائم ہاسٹل سیل کرکے 200 سے زائد افراد کو وہاں سے نکال دیا، جبکہ مری روڈ کی تمام دکانیں، مارکیٹیں اور دیگر دفاتر بند کرنے کے احکامات بھی جاری کئے گئے ہیں۔وفاقی دارالحکومت کے تمام اسپتالوں کو ہائی الرٹ کر دیا گیا ہے۔ ہسپتالوں کا تمام عملہ ہر وقت الرٹ رہے گا۔پمز کا طبی عملہ اسلام آباد سے لاہور تک نوازشریف کے قافلے کے ساتھ رہے گا،،جی ٹی روڈ کے اطراف میں موبائل فون سروس بھی معطل رکھنے پر غور کیا جا رہا ہےسابق وزیراعظم نوازشریف کی ریلی کی صورت اسلام آباد سے لاہور روانگی کے سفر کے لیے بُلٹ پروف کنٹینرتیار کرلیا گیا ہے جس میں ایئر کنڈیشن سمیت ضروریاتِ زندگی کا تمام سامان موجود ہے۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد سے لاہور آمد کے موقع پر سابق وزیراعظم نواز شریف کے لیے خصوصی کنٹینر تیار کیا گیا ہے جس میں بستر، صوفے سمیت ضرورت کا تمام سامان موجود ہے جب کہ کنٹینر مکمل طور اے سی ہوگا جس میں باہر کا منظر دیکھنے کے لیے شیشے کی کھڑکیاں بھی لگائی گئی ہیں۔ذرائع کے مطابق نو منتخب وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سابق وزیراعظم نوازشریف کو پنجاب ہاؤس سے الوداع کریں گے جہاں سے اُن کا پہلا پڑاؤ جہلم میں ہوگا اور ان کا قافلہ جہلم ہی میں رات کو قیام کرے گا جس کے لیے انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں اور ایک نجی ہوٹل خالی کرا لیا گیا ہے۔اسی طرح سابق وزیراعظم نواز شریف کا دوسرے دن مختلف مقامات پر کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے رات گئے گوجرانوالہ پہنچیں گے جہاں ان کے استقبال اور قیام کے انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں۔گوجرانوالہ میں رات قیام کے بعد نوازشریف لاہور کے لیے روانہ ہوں گے اور مختلف مقامات پر کارکنان خطاب کریں گے اور یوں کارواں اپنے مزنل مقصود تل پہنچ جائے گا جس کے لیے ہائی سیکیورٹی الرٹ ہے اور پنجاب پولیس کے اہلکار ریلی کے راستوں ہپر تعینات ہوں گے جب کہ دکانیں اور شاہراہیں عام ٹریفک کے لیے بند ہوں گی کنٹینر کی بیرونی دیواروں پرنواز شریف، مریم نواز اور دیگر رہنماؤں کی تصویریں بھی آویزاں کی گئی ہیں جب کہ نوازشریف اور ان کے رفقاء کے آرام کے لیے کینٹینر میں تمام سہولیات موجود ہیں جو تین دن تک سابق وزیراعظم کے استعمال میں رہے گا۔دوسری جانب صدقے کیلئے 7 بکرے پنجاب ہاؤس اسلام آباد پہنچا دیے گئے ہیں جنہیں سابق وزیراعظم کی روانگی سے قبل قربان کیا جائے گا اور صدقے کا گوشت غرباء میں تقسیم کیا جائے گا۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.