پانچ ماہ گزر گئے جے آئی ٹی کچھ حاصل نہیں کرسکی

جدت ویب ڈیسک ::۔ اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ اگر کرپشن کا کیس ہوتا تو دو ماہ میں ثابت ہو جاتا ۔ سوچی سمجھی سازش کے تحت یہ سب ہورہا ہے ۔ ایسے لوگوں کو کٹہرے میں لا کر کھڑا کرنا چائیے جن کی وجہ سے وزیر اعظم نا اہل ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ رابرٹ ریڈلے کی گواہی ہمارے حق میں گئی ہے ۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ میرے خلاف جے آئی ٹی کو کوئی ثبوت نہیں ملے ۔ سب کچھ مل ملا کر کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی کی تحقیقات کے چکر میں قوم کے پیسے لگائے لیکن کچھ نہیں ملا ۔ دوسری طرف نواز شریف نے چئیرمین سینیٹ کے حوالے سے کہا کہ چئیرمین سینیٹ کے لئے ہم نے رضا ربانی کا نام دیا ۔ چئیرمین سینیٹ کے لئے دوسری پارٹیوں کے ساتھ بھی مشاورت کی گئی ۔ ایسا شخص چئیرمین آنا چائیے جو آئین اور نظام کے ساتھ چلنے والا ہو ۔ غیر جمہوری شخص چئیرمین کے عہدے کے لئے نہیں آنا چائیے ۔ادھر میڈیا سے گفتگو میں وفاقی وزیر برائے نجکاری دانیال عزیز نے کہا کہ آج واجد ضیاء نے کہہ دیا والیم ٹین غیر ضروری ہو گیا ہے ۔ نیب ٹیم کے ارکان لندن میں جا کر شیخ رشید کے لوگوں کے ساتھ کھانے کھاتے رہے ۔ ہم جو تنقید کرتے تھے اس کا مطلب یہ تھا کہ ہمارے ساتھ سراسر زیادتی ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مریم نواز کے کیس میں رابرٹ ریڈلے نے بھی کہہ دیا کہ کیلیبری فونٹ ڈاؤن لوڈ کیا جا سکتا تھا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.