وزیر اعلیٰ پنجاب کے خوشحال پاکستان پروگرام کےاہم میگا پراجیکٹس نیب کے ریڈار پر آ گئے

جدت ویب ڈیسک ::نیب لاہور خادم پنجاب زیور تعلیم پروگرام ، خوشحال کسان، خادم اعلیٰ کے دیہی روڈز پروگرام ، خادم پنجاب اپنا روزگار سکیم اور ای روزگار ٹریننگ پروگرام سمیت دیگر اہم منصوبوں میں تحقیقات کا آغاز کر چکا ہے اور اسی سلسلہ میں متعلقہ محکموں سے تفصیلات طلب کی جا چکی ہیں ۔فارم ٹو مارکیٹ روڈز کے پروگرام کا آغاز 1985 میں اس وقت کے وزیر اعلیٰ پنجاب نوازشریف نے کیا تھا ۔ خادم اعلیٰ کا”دیہی روڈز پروگرام “ اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے ۔ اس کا ریکارڈ بھی فراہم کرنا پڑے گا ۔ خادم پنجاب خود روزگار سکیم“ اور ”ای روزگار ٹریننگ پروگرام“ بھی خوشحال پاکستان پروگرام کا حصہ ہیں ۔ تقریبا چار سال قبل وائس چانسلر انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی ڈاکٹر عمر سیف نے ای روزگار سکیم کے پروگرام کی داغ بیل ڈالی تھی ۔ سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ دو ہزار گیارہ میں جب ڈی سی او تھے ۔ تب پنجاب حکومت کے خلاف پر امن احتجاج کرنے والوں کو گرفتار کر بھی کر چکے ہیں ۔خادم پنجاب زیور تعلیم پروگرام جنوبی پنجاب کے 16 اضلاع میں گذشتہ برس شروع کیا گیا ۔ اس کے تحت ہر سال 6 ارب روپے کے وظائف طالبات میں تقسیم کئے جاتے ہیں ۔ خوشحال کسان پروگرام کے تحت کاشتکاروں، مزاعین، اورزرعی ٹھیکیداروں کی رجسٹریشن کے بعد ساڑھے 12 ایکڑ تک اراضی کے 5 لاکھ کاشتکاروں اور مزارعین کو 80 ارب روپے کے بلا سود قرضے دینے کا سلسلہ جاری ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.