ملزم مفتی عبدالقوی درخواست ضمانت مسترد ہونے پرعدالت سے فرار پولیس نےگرفتا ری کے لیے چھا پے مارنا شروع کر دیئے

ملتان (جدت ویب ڈیسک :)ملتان کی ایک مقامی عدالت نے سوشل میڈیا سیلیبرٹی قندیل بلوچ کے قتل کے مقدمے میں مذہبی رہنما مفتی عبدالقوی کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد کر دی ہے جس کے بعد مفتی عبدالقوی احاطہ عدالت سے فرار ہو گئے۔بدھ کو جب عدالت میں مفتی عبدالقوی کے وکیل نے اپنے دلائل مکمل کیے تو عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے ان کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست خارج کر دی۔عدالت نے کہا کہ مفتی عبدالقوی کے خلاف دفعہ 302 اور 109 کے تحت کارروائی کی جائے گی۔عدالتی فیصلہ سامنے آنے کے کچھ دیر بعد ہی مفتی عبدالقوی وہاں موجود پولیس کو چکما دے کر فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔پولیس اب مفتی عبدالقوی کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار رہی ہے۔خیال رہے کہ قندیل بلوچ کی مفتی عبدالقوی کے ساتھ چند تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھیں، جس کے کچھ عرصے بعد ہی قندیل بلوچ کے بھائی نے انھیں مبینہ طور پر غیرت کے نام پر قتل کر دیا تھا۔واضح رہے کہ اس مقدمے کا حتمی چالان ابھی تک مکمل نہیں ہوا ہے۔تاہم اس مقدمے میں جو افراد گرفتار ہوئے تھے ان پر پہلے ہی فرد جرم عائد کی جا چکی ہے۔ تاہم ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا ہے۔اس سے پہلے اْن ملزمان نے پولیس کی موجودگی میں میڈیا کے سامنے یہ اقرار کیا تھا کہ اْنھوں نے غیرت کے نام پر قندیل بلوچ کو قتل کیا تھا۔بدھ کو جب سیشن جج کی عدالت میں مفتی عبدالقوی کی درخواست کی سماعت ہوئی تو ان کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ان کا نام نہ تو کسی ایف آئی آر میں درج ہے اور نہ ہی کسی ملزم نے دوران تفتیش مفتی عبدالقوی کا نام لیا ہے۔اس سے قبل گذشتہ روز عدالت نے مفتی عبدالقوی کی ضمانت قبل از گرفتاری میں ایک روز کی توسیع کی تھی اور اْنھیں 18 اکتوبرکو دوبارہ پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔مقامی پولیس کے مطابق مفتی عبدالقوی قندیل بلوچ کے قتل کے مقدمے میں ابھی تک شامل تفتیش نہیں ہوئے تھے جبکہ اس ضمن میں اْنھیں بارہا سمن بجھوائے گئے تھے۔مفتی عبدالقوی کا کہنا تھا کہ جب بھی پولیس اْنھیں طلب کرے گی وہ تفتیش کے لیے پیش ہو جائیں گے۔ملتان پولیس نے ابھی تک قندیل بلوچ کے قتل کی تفتیش مکمل نہیں کی اور نہ ہی جو افراد ابھی تک گرفتار نہیں ہوئے اْنھیں اشتہاری قرار دلوانے کے لیے کارروائی کا آغاز کیا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published.