ایم ڈی اے کے رہائشی منصوبے میں40فیصد رقبے پر قبضہ

جدت ویب ڈیسک :ملیر سے رحیم شاہ کی رپورٹ ۔ایم ڈی اے کے رہائشی منصوبے شاہ لطیف ٹائون 40فیصد رقبے پر قبضے کا انکشاف، ایم ڈی اے افسران کی ملی بھگت سے لینڈ مافیا نے قبرستان کے لئے مختص زمین پر قبضہ کرکے چار دیواری لگادی، اربوں روپے مالیت کی قومی شاہراہ پر سیکٹر 24/Aکمرشل ایریا کی 14ایکڑ ایراضی پر لینڈ مافیا کا قبضہ ہے، محکمہ روینیو ،محکمہ پولیس ایم ڈی اے کی کرپٹ انتظامیہ کے ساتھ ملا ہوا ہے،اس سلسلے میں حاصل کردہ مصدقہ معلومات کے مطابق ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے رہائشی منصوبے شاہ لطیف ٹائون کی زمین کے 40فیصد سے زائد پلاٹوں پر قبضہ ہو چکا ہے،یہ رہائشی منصوبہ 2700ایکڑ ایراضی پر مشتمل ہے مگر ایم ڈی اے کے کرپٹ افسران نے روینیو ڈپارٹمنٹ ملیر ، علاقہ پولیس کی ملیر بھگت اور بااثر سیاسی حکومتی شخصیات کی ایماں پر قبضہ مافیا کو قبضہ کراچکی ہے،شاہ لطیف ٹائون کے سیکٹر 26/A،سیکٹر26/B،سیکٹر 27/A، سیکٹر 27/Bکے تمام پلاٹوں پر قبضہ ہو چکا ہے،جبکہ قومی شاہراہ ،رزاق آباد پولیس ٹریننگ سینٹر سے متصل شاہ لطیف ٹائون کے 24/Aکی اربوں روپے مالیت کی 14ایکڑ کمرشل زمین پر بھی اہم حکومتی سیاسی شخصیت کی سرپرستی میں لینڈ مافیا کے کارندوں نے قبضہ کرکے چار دیواری لگا رکھی ہے،جبکہ حالی میں شاہ لطیف ٹائون کی گنجان آبادی کے لئے مختص کی گئی قبرستان کی 40ایکڑ زمین پر بھی قبضہ کرکے بائونڈری تعمیر کردی گئی ہے،ذرائع کے مطابق مندرجہ بالا قبضو ں کے خلاف اعلیٰ عدلیہ ،نیب ،ایف آئی اے اور دیگر اداروں میں تحقیقات چل رہی ہے مگر فیصلوں میں تاخیر کی وجہ سے ایم ڈی اے کے کرپٹ افسران نے روینیو ڈپارٹمنٹ ، علاقہ پولیس کو ساتھ ملا کر شاہ لطیف ٹائون کی قبضہ شدہ زمینوں پر جعلی گوٹھ اور رہائشی اسکیمیں بنا کر سادہ لوح عوام کو فروخت کرکے اربوں روپے کمائے ہیں،اس سلسلے میں مزید انکشاف متوقہ ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published.