knife killer in karachi

بیویوں کو گلستان جوہر بھیجنے کے خواہشمندمردوں کے ارمانوں پر پانی پھر گیا

کراچی جدت ویب ڈیسک شہر میں خواتین کے بعد مردوں پر بھی چاقو سے حملوں کا آغاز ہوگیا۔کراچی میں چاقو بردار موٹر سائیکل سوار ملزم نے گلستان جوہر میں ایک شخص پر وار کر زخمی کردیا اور فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق موٹر سائیکل سوار چاقو بردار شخص نے راڈو بیکری کے قریب ایک نوجوان پر وار کر کے اسے زخمی کردیا اور اندھیرے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے فرار ہو گیا۔ زخمی نوجوان کی شناخت نعمان کے نام سے ہوئی ہے جسے قریبی اسپتال میں طبی امداد دی جا رہی ہے، ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ نوجوان کو تیزدھار آلے سے نشانہ بنایا گیا ہے۔ خیال رہے گزشتہ کے آخری ہفتے سے گلستان جوہر میں چاقو بردار شخص نے 12 سے زائد خواتین پر تیز دھار آلے سے وار کے زخمی کردینے کے بعد سے علاقے میں خوف و ہراس کی فضا پھیل گئی ہے جب کہ ملزم کسی چھلاوا کے مترادف تاحال پولیس کو چکما دینے میں کامیاب ہے۔ چاقو بردار شخص نے اپنی حکمت عملی کو تبدیل کرتے ہوئے تین روز قبل گلشن جمال، نیپا چورنگی، یونیورسٹی روڈ اور گلشن ویلفیئر سوسائیٹی میں تین گھنٹے کے دوران چھ خواتین پر چاقو سے وار کر کے پولیس کو پریشانی میں مبتلا کردیا اور پولیس تحقیقات کا دائرہ کار گلستان جوہر کے علاوہ دیگر علاقوں تک پھیلانے پر مجبور ہوئے۔ دوسری جانب کراچی پولیس کے ایسٹ زون نے گلستان جوہر کے اطراف 600 سے زیادہ اہلکاروں کو تعینات کیا ہے جبکہ ایک ایس ایس پی، 5 ایس پیز کے زیرنگرانی ٹیمیں تیار ہیں جس میں 8 ڈی ایس پیز اور 12 ایس ایچ اوز بھی ٹیموں میں شامل ہے۔ ایس ایس پی ملیر رائو انوار نے کہا کہ ملیر زون کی ٹیم بھی تشکیل کردہ ٹیم کے ساتھ کام کر رہی ہے جس میں میرے ماتحت 5 ایس ایچ اوز روز ڈسٹرکٹ ایسٹ جا رہے ہیں چھرا مار کی گرفتاری کے لیے افسران مل کر کام کر رہے ہیں۔ پولیس نے تیموریہ کے علاقے سے مشکوک شخص کو زیر حراست لے لیا، ملزم سے تلاشی کے دوران چاقو بھی برآمد ہوا۔ایس ایس پی سینٹرل عرفان بلوچ کا کہنا ہے کہ مشکوک شخص اے ٹی ایم کے باہر موجود تھا،اے ٹی ایم میں رقم نکالنے والی فیملی کو واچ کررہا تھا، زیر حراست شخص کو نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا۔واضح رہے کہ خواتین پر تیز دھار آلے سے اب تک حملوں کے 13 واقعات ہو چکے ہیں جب کہ کومت کی جانب سے حملہ آور کی گرفتاری میں معاونت کرنے پر 5 لاکھ روپے انعام کا اعلان بھی کر رکھا ہے لیکن اس کے باوجود حملہ آور تاحال پولیس کی گرفت میں نہیں آ سکا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.