Karachi Police

۔3کمسن بچوں کی ماں کا قاتل شوہر پولیس اہلکار نکلا

کراچی جدت ویب ڈیسک گلستان جوہر میں تین کمسن بچوں کی ماں کا مبینہ طور پر شوہر، دیور، نند اور ساس کے ہاتھوں لرزہ خیز قتل کے بعد شارع فیصل پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مقتولہ کے شوہرملزم عبدل جواد اور اس کی بہن بتول کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ دیور فواد کو ذہنی معذور اور مفرور بتایاگیا ہے ۔ ملزم جواد کو پولیس اہلکاراور پیٹی بھائی ہونے کے سبب تھانے میں بھی مکمل سہولتیں دی جا رہی ہیں اور کیس کمزور کرنے کیلئے شہادتیں ضائع کی جا رہی ہیں۔ اب تک کسی سینئر اہلکار نے جائے وقوعہ کا معائنہ بھی نہیں کیا ۔ تفصیلات کے مطابق مقتولہ زینب بی بی کی شادی اقرا سٹی گلستان جوہر کے رہائشی عبدل جواد سے ساڑھے پانچ سال قبل ہوئی تھی جو پولیس میں ملازم ہے جبکہ اس کا دیور عبدل فواد جس کو ذہنی مریض بتایا جارہا ہے ، دبئی میں نوکری کرتا ہے جو آج کل پاکستان آیا ہو ا ہے ۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق مقتولہ کے جسم پر زخموں کے بے تحاشہ نشان ہیں جن میں سے کچھ تازہ جبکہ کچھ پرانے ہیں جس سے ثابت ہوتا ہے کہ اس کو اکثر تشدد کا نشانہ بنایا جاتا رہاتھا۔ اہل محلہ کے مطابق ان کے گھر سے اکثر مار پٹائی کی آوازیں آتی رہتی تھیں اور قتل والے روز بھی مقتولہ کی چیخیں سنائی دیں مگر جواد نے سب کو اپنی پولیس کی نوکری سے دبا رکھا تھا اور اسے اپنے گھر کا معاملہ قرار دے کر اہل محلہ کو دخل نہیں دینے دیتا تھا۔ مقتولہ کی بہن کے مطابق شادی کے کچھ عرصہ بعد ہی جواد نے مقتولہ سے پیسے اور زیورات اپنے ماں باپ سے لانے کے مطالبے شروع کردیے جو پورا نہ ہونے پر اسے تشدد کا نشانہ بنانا شروع کردیا وہ انہیں اپنی مقتولہ بہن سے ملنے بھی نہیں دیتا تھا ۔ وہ لوگ بہن کا گھر بچانے کیلئے جاتے بھی نہیں تھے ۔انہوں نے بتایا کہ ملزم نے انہیں رات ساڑھے دس بجے بتایا کہ زینب نے زہر پی کر خودکشی کر لی ہے جبکہ پوسٹ مارٹم کی رپورٹ کے مطابق اس کی موت دوپہر تین بجے ہوئی اور اس کا سبب زہر نہیں اندرونی چوٹیں ہیں واضح رہے کہ مقتولہ کے تین کمسن بیٹوں کی عمریں 7ماہ،3 سال اور ساڑھے چار برس ہے ۔ شارع فیصل تھانہ کے اہلکار کیس کی شہادتیں اکھٹی کرنے کے بجائے انہیں ضائع کرکے اپنے پیٹی بھائی کو بچانے کی کوشش کر رہے ہیں اور ملزمان کو تھانے میں ہر آسائش فراہم کی جارہی ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.