گجر نالہ ٹوٹ گیا،مزید پانی شہر میں داخل میئر کراچی کی وضاحتیں ،پندرہ افراد ہلاک

جدت ویب ڈیسک :کراچی کے نواحی علاقے سعدی ٹاؤن میں سیلابی ریلا داخل ہوگیا محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ بھارتی ریاست گجرات سے آنے والا مون سون کا نیا سسٹم کراچی پہنچ چکا ہے جس کے بعد جمعے کو بھی گرج چمک کے ساتھ موسلا دھار بارش کا امکان ہے۔مزید بارشوں کی پیشگوئی محکمہ موسمیات نے رواں ہفتے بھی کراچی سمیت ملک کے کئی علاقوں میں بارشوں کی پشگوئی کی ہے۔ایک اعلامیے میں محکمے نے جمعرات اور جمعہ کے دوران زیریں سندھ بشمول میرپورخاص، حیدرآباد، کراچی ڈویژن میں اکثر مقامات پر تیز ہواؤں، آندھی اور گرج چمک کے ساتھ مزید بارش کی پیشگوئی کی ہے۔اس کے علاوہ سکھر، لاڑکانہ، شہید بینظیر آباد ، قلات، مکران ڈویژن میں کہیں کہیں جبکہ کوئٹہ،سبی، ژوب اور نصیر آباد میں چند مقامات پر تیز ہواوں اور گرج چمک کے ساتھ مزید بارش بھی ہوسکتی ہے۔ذرائع کے مطابق بارش کے بعد شہر کے 160 سے زائد فیڈر ٹرپ ہونے سے کئی علاقوں میں بجلی کی فراہمی تاحال معطل ہے۔ کھارادر، ناگن چورنگی، ملیر، شاہ فیصل کالونی، شاہ فیصل ٹاون،کالا بورڈ، قائدآباد، گلستان جوہر بلاک 2 اور گلشن اقبال کے چند بلاکس میں بھی بجلی کی فراہمی معطل ہے۔کے الیکٹرک کا مؤقف دوسری جانب ترجمان کے الیکٹرک فخر احمد نے بات کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ بارش کے باعث تمام متاثرہ فیڈرز بحال کیے جاچکے ہیں تاہم 1600 میں سے 80 فیڈرز بند ہیں اور 30 فیڈرز کو احتیاطی تدابیر کے تحت خود بند کیا گیا ہے۔ترجمان کے الیکٹرک کے مطابق علاقائی فالٹس کی درستی کے لئے عملہ موجود ہے، بارش تھمنے کے بعد متاثرہ علاقوں میں بجلی بحال کردی جائے گی۔ترجمان کے الیکٹرک کے مطابق صارفین شکایت کے لئے 118 پر کال یا 8119 پر ایس ایم ایس کرسکتےہیں۔میئر کراچی محمد وسیم نے بات کرتے ہوئے کہا کہ کراچی میں بارش کے پانی کی نکاسی کا مسئلہ فوری حل نہیں ہوسکتا، کراچی کو نیا سیوریج سسٹم درکار ہے اور کچرا ٹھکانے لگانے کا نظام درست ہونے تک مسئلہ حل نہیں ہوگا۔میئر کراچی نے کہا کہ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کی ذمہ داری ہے کہ کچرا نالوں میں نہ جانے دیں، اگر نالوں میں کچرا ہوگا تو نکاسی ممکن نہیں اور ہم سندھ حکومت سے مکمل ناامید ہیں۔وزیر بلدیات جام خان شورو کا بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ایک سال پہلے کراچی میں نکاسی کے لئے کے ایم سی کو 50 کروڑ روپے دیے اس کے باوجود نکاسی کی ابتر صورتحال ہے۔جام خان شورو نے کہا کہ کراچی میں گجر نالے اور محمود آباد نالے چوڑے کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔بفر زون سیکٹر 4 میں بارش کے باعث سڑکوں نے سیلابی صورت اختیار کرلی جہاں گلیاں مکمل طور پر زیر آب ہیں۔بارش کے پانی کے باعث ناگن چورنگی مکمل زیر آب ہے جہاں بس، ٹرک اور متعدد گاڑیاں ڈوب گئیں۔لیاری کے علاقے بہار کالونی میں بارش کا پانی سرکاری اسکول، ڈسپنسری اور میڈیکل سینٹر میں داخل ہوگیا جب کہ راشن کی دکانوں میں پانی داخل ہونے سے سامان خراب ہوگیا۔ لیاقت آباد انڈر پاس میں پانی بھرگیا جس کے بعد اسے ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا، ماڑی پور اور اس کے اطراف کے علاقوں میں بارش کا پانی گھروں میں داخل ہوگیا۔ایس ایس پی کیماڑی نے شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ ہاکس بے روڈ اور ساحل کی طرف نہ جائیں۔ٹریفک پولیس نے بارش کے پانی میں گاڑی بند ہونے سے متاثرہ افراد کے لئے نمبر جاری کردیا جب کہ ٹریفک پولیس کا کہنا ہے کہ اہلکار عوام کی مدد کے لئے شاہراہوں پر موجود ہیں اور بارش کے پانی میں گاڑی بند ہونے کی صورت میں شہری 1915 پر کال کریں۔محکمہ موسمیات کے مطابق نارتھ کراچی میں سب سے زیادہ 130 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جب کہ پی اےایف مسرور بیس پر 125، ناظم آباد میں 122 اور ایئرپورٹ کے قریب 42 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ گلستان جوہر میں 37، گلشن حدید میں 26.2، پہلوان گوٹھ کے قریب 16 اور پی اے ایف فیصل بیس کے قریب 22 ملی میٹر ہوئی ہے۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.