اب درکار انسانی اعضاء کا پرنٹ نکالاجاسکتا ہے

جدت(ریسرچ ڈیسک)تھری ڈی پرنٹر کے بارے میں تو آپ نے سن رکھا ہوگا اسے ایجاد ہوئے تو چند برس ہوگئے مگر اب سائنسدانوں نے اس کے ذریعے ایسے تجربات کرنا شروع کردیئے ہیں جسے جان پر آپ حیران رہ جائیں گے کہ انسانی اعضاء جو کار آمد نہ رہے ہوں اس پرنٹ کے ذریعے ان انسانی اعضاء کا پرنٹ نکالا جاسکتا ہے جو بالکل انسانی اعضاء کی مانند نہ صرف کار آمد ہوتے ہیں بلکہ ان کا رنگ اور ہیئت بھی اس قدر مشابہ ہوتی ہے کہ پہچان کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔ سائنسدان کسی بھی انسانی اعضاء کا ماڈل تیار کرتے ہیں جس کو تھری پرنٹر کی مدد سے پرنٹ کیا جاتا ہے جو ہائیڈروجل سے لبریز ہوتا ہے اس پر محسوس کیا جاسکتا ہے، کٹ لگایا جاسکتا ہے حتیٰ کہ اس میں سے خون بھی نکلتا ہے۔ اس ٹیکنالوجی کے ذریعے گردہ براری میں مدد حاصل کی جاررہی ہے اور امید کی جارہی ہے کہ بہت جلد دیگر پیچیدہ امراض میں بھی اس سے مدد لینا ممکن ہوگا

Leave a Reply

Your email address will not be published.