پاکستان میں ٹیلنٹ کی قدر نہیں کی جاتی‘ حبا حسین

کراچی جدت ویب ڈیسک ماڈل حبا حسین نے کہا ہے کہامیں فلموں اور ڈراموں میں کام کرنے کی خواہشمند ہوں، اگر کسی اچھے پراجیکٹ کی آفر ہوئی تو ضرور کام کروں گی، مجھے فلم کی آفر ہوئی تھی لیکن پڑھائی کی وجہ سے میں نے زیادہ دلچسپی نہیں لی لیکن اب اگر کوئی آفر ہوئی تو ضرور کام کروں گی، لیکن اچھارول ہونا چاہے یا کوئی سپورٹنگ رول ملا تو ضرور کروں گی۔ انٹرویو دیتے ہوئے ماڈل حبا حسین نے مزید کہا کہ انہوں نے کیریئر کا آغاز2013 میں بطور ماڈل کیا تھا،ماڈلنگ میں کافی مشکلات ہیں، بہت کم لوگ ہیں جن پر بھروسہ کیا جا سکتا ہے، اسی وجہ سے مجھے آفرز کافی ہوتی ہیں لیکن میں ان میں سے بہت کم شوٹس کر پاتی ہوں۔ ان کا کہنا تھا کہ فی الوقت ڈراموں میں کام کرنے کا شوق نہیں ہے کیوں کہ اب معیاری ڈرامے نہیں بن رہے جس میں کام کیا جائے، لیکن اگر حسینہ معین یا شعیب منصوب کے ڈراموں میں چانس ملا تو ضرور کروں گی۔حبا حسین نے کہا کہ انڈسٹری میںنئے لوگوں کو آنے نہیں دیا جاتا، صرف جان پہچان یا اپنے رشتے داروں کو چانس دیا جاتا ہے، مجھے بھلے کم کام ملے، لیکن عزت اور معیاری کام کروں گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ میںبالی ووڈ میں بھی کام کرنا چاہتی ہوں لیکن اس سے پہلے پاکستان میں نام بنانا چاہتی ہوں۔حبا حسین نے کہا کہپاکستان میں باصلاحیت فلم میکرز موجود ہیں لیکن ان کو اب اپنا قبلہ درست کرنے کی ضرورت ہے،بھارت نے ہمیشہ پاکستانی فنکاروں کی صلاحیتوں سے بھرپور فائدہ اٹھایا ہے،پاکستانی فنکاروں کو نظر انداز کرنے کی وجہ سے یہ ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے،مواقع نہ ملنے کی وجہ سے نہ صرف نئے چہرے بلکہ پرانے فنکار بھی بھارت کا رخ کرتے ہیں جہاں ان کو کام کے ساتھ اچھا معاوضہ بھی ادا کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں شوبز سے وابستہ ادارے نہیں اس لئے نئے آنے والوں کو سینئر ز کے تجربات سے فائدہ اٹھانا چاہیے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.