HEC pakistan

سندھ یونیورسٹی میں داخلے پر پابندی

حیدرآباد جدت ویب ڈیسک جامعہ سندھ میں وائس چانسلرپروفیسر ڈاکٹر فتح محمد برفت کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس میں 15 اکتوبر پر ہونے والی ماسٹر ڈگری پروگرامز 2018ئ کے داخلہ ٹیسٹ کے دوران طلبائ کو پرسکون امتحانی ماحول فراہم کرنے کے لیے امتحانی مرکز کے اندر سکیورٹی عملے و اساتذہ کی غیر ضروری داخلے پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اجلاس میں انٹری ٹیسٹ کے انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔ مختلف کمیٹیوں کے کنوینرز نے اجلاس کو بتایا کہ انٹری ٹیسٹ شروع ہونے کے دوران سکیورٹی عملہ اور غیر متعلقہ اساتذہ، ملازمین و افسران کی امتحانی مرکز میں غیر ضروری داخلے سے امیدوار پریشان ہوتے ہیں، جس پر وائیس چانسلر ڈاکٹر برفت نے انٹری ٹیسٹ کے دوران سکیورٹی عملے اور اساتذہ سمیت تمام غیر متعلقہ افسر و ملازم کی امتحانی ہال میں داخل ہونے پر پابندی عائد کردی ہے اور رجسٹرار کو ہدایت کی کہ اس ضمن میں باضابطہ نوٹیفکیشن جاری کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ امتحانی عمل کے دوران ان کے ساتھ کوئی عملہ نہیں ہوگا اور ہر فرد اپنی ڈیوٹی ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ انٹری ٹیسٹ کے دوران اگر کسی استاد کی بیٹی، بہن، بیٹا یا کوئی اور قریبی عزیز ٹیسٹ دے رہا ہو تو اسے ایڈمیشنز ڈائریکٹوریٹ کو مطلع کردینا چاہئے اور ایسے ٹیچرز سے ڈیوٹی نہ لی جائے، تاکہ شفافیت و میرٹ کا نظام یقینی بنایا جا سکے۔ دوسری جانب آرٹس فیکلٹی بلڈنگ میں مختلف شعبوں میں کلاسز کی کمی ختم کرنے کے سلسلے میں بھی مشاورتی اجلاس وی سی کی زیر صدارت منعقد ہوا، جس میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی، جو کو ٹائم ٹیبل سمیت کلاس رومز کا جائزہ لینے کے بعد اپنی رپورٹ تیار کرکے وائس چانسلر کو پیش کرے گی۔ اس رپورٹ کی روشنی میں آرٹس فیکلٹی بلڈنگ میں مختلف شعبوں میں کلاس رومز کی کمی کو ختم کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.