حج کا لازمی رکن وقوف عرفات (آج )ہو گا، مسجد نمرہ میں مفتی اعظم سعودی عرب خطبہ جاری

مکہ مکرمہ جدت ویب ڈیسک : مناسک حج کی ادائیگی کے پہلے روز یوم ترویہ کے موقع پر منٰی کی خیمہ بستی گزشتہ روز احرام کی دو سفید چادروں میں ملبوس20لاکھ سے زائد مسلمانوں کی لبیک الھم لبیک کی صدائوں سے گونجتی رہی۔ تقریبا 17مربع کلومیٹر علاقے پر پھیلی ہوئی منٰی کی خیمہ بستی مکہ مکرمہ کے شمال مشرق میں سات کلو میٹر دور واقع ہے -شمع توحید کے پروانے گزشتہ رات سے ہی ہونٹوں پر مغفرت کی دعائیں ‘ا نگلیوں میں تسبیح‘ ہاتھوں میں پانی کی بوتلیں ‘ کلائیوں میں الیکٹرانک شناختی کڑے پہنے اور اپنا ضروری سامان لئے منٰی پہنچتے رہے – مکہ مکرمہ سے ان کی یہاں منتقلی کے لئے پانچ ہزار بسوں کا انتظام کیا گیا تھا -دن کے وقت درجہ حرارت 40سے 45درجے سنٹی گریڈ کے درمیان رہا- منٰی میں تمام حاجیوں کے لئے ا ئر کنڈیشنڈ اور فائر پروف خیموں کا بندو بست کیا گیا ہے -حاجیوں نے ظہر ‘ عصر‘ مغرب اور عشا ء کی نمازیں اپنے اپنے خیموں میں ادا کیں اور توبہ استغفار اور اذکار اور وظائف میں مصروف رہے – آج ( جمعرات ) 31اگست مناسک حج کی ادائیگی کے دوسرے روز حجاج کرا م منٰی کے خیموں میں نماز فجر ادا کرکے طلوع آفتاب کے بعد یہاں سے آٹھ کلو میٹر دور میدان عرفات روانہ ہوں گے جہاں حج کا لازمی رکن وقوف عرفات ادا کریں گے – تمام حاجیوں کے لئے اس میدان کی حاضری ضروری ہے کیونکہ اس کے بغیر کسی شخص کا حج ادا نہیں ہوتا-میدان عرفات میں واقع مسجد نمرہ میںمفتی اعظم سعودی عرب الشیخ عبد العزیز بن عبد اللہ آل الشیخ حج کا خطبہ دیں گے جس کے بعد ایک اذان اور دو تکبیروں کے ساتھ ظہر اور عصر کی نمازیں اکٹھی اور قصر ادا کی جائیں گی – حجاج کرام میدان عرفات میں ہی واقع پہاڑ جبل رحمت پر یا اس کے اردگرد جا کر دعائیں مانگیں گے جہاں رسالتمآبﷺ نے حجتہ الوداع کا آخری خطبہ ارشاد فرمایا تھا- حاجی غروب آفتاب تک میدان عرفات میں ہی وقوف کریں گے اور سورج غروب ہونے کے بعد نماز مغرب ادا کئے بغیر ہی میدان عرفات سے مزدلفہ روانہ ہوں گے جہاں پہنچ کر مغرب اور عشاء کی نمازیں اکٹھی ادا کریں گے‘ رات کھلے آسمان تلے بسر کریں گے اور پھر کل صبح مزدلفہ میں نماز فجر کے بعد شیطان کو کنکریاں مارنے کے لئے واپس منٰی روانہ ہو جائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.