MQM

۔250افرادکی شہادت کا زخم آج بھی تازہ ہے‘فاروق ستار

کراچی جدت ویب ڈیسک ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے سانحہ حیدر آباد کے شہدائ کی 29ویں برسی کے موقع پر اپنے بیان میں تمام شہدائ کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ 30سمتبر 1988کاسانحہ کبھی بھلایا نہیں جاسکتا۔250افرادکی شہادت کا زخم آج بھی تازہ ہے۔ حیدرآباد لطیف آباد ،میئر حیدر آباد، ایم کیو ایم کے دفاتر ، ہیر آباد، قلعہ چوک،گرونگر چوک،تلسی داس روڈ، گاڑی کھاتہ،کالی موری پر ہونے والا قتل عام آج بھی نظروں کے سامنے ہے۔ انہوں نے کہا کہ قاتل آزاد ہیں انصاف فراہم کیا جائے۔ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے کہا کہ 30ستمبر1988کوشام 7بجے سے رات بھر شہیدوں کے جنازے اور زخمیوں کو اسپتال پہنچاتے رہے چوک،تلسی داس روڈ، گاڑی کھاتہ،کالی موری پر ہونے والا قتل عام آج بھی نظروں کے سامنے ہے۔ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ اس روزمہاجروں پر شب خون مارنے والے دہشت گرد آج بھی آزاد ہیں ۔ 31اکتوبر 1986، مئی 1990کے حیدر آباد میں ہونے والے قتل عام پر بھی کاروائی کی ضرورت ہے ۔جسطرح ماڈل ٹائون لاہور پر تحقیقات اور کاروائی کی بات ہوتی ہے ہمارے سانحات پر بھی جوڈیشل کمیشن بنایا جائے۔ سربراہ ایم کیو ایم پاکستان نے مذید کہا کہ حیدرآباد کی تاریخ شہیدوں اور قربانیاں دینے والوں سے بھری پڑی ہے۔ ہم اپنے شہیدوں کے لہو کورائیگاں نہیں جانے دیں گے ۔ حق پرستی کا انقلاب آکر رہے گا۔انہوں نے کہا کہ ہم 1986سے آج تک مسلسل سازشوں اور دہشت گردوں کے ظلم وستم اور انصاف کے متلاشی رہے ہیں ۔ اب یہ امید کرتے ہیں کہ ہمیں بھی انصاف دیا جائے گا اور سارے مکروہ چہرے بے نقاب ہوں گے۔ انہوں نے تمام شہدا کے لئے دعائے مغفرت اور انکے اہل خانہ کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا یہ عہد ہے کہ شہیدوں اور اسیروں کی قربانیوں کو اپنے مشن پر کاربند رہتے ہوئے غریبوں اور مظلوموں کا انقلاب لاکر رہیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.