چینی سائنسدانوں نے زراعت کے شعبے میں ایک ایسی حیرت انگیز ایجاد کر ڈالی ہے کہ ہرکوئی تلاش میں لگ گیا؟

جدت ویب ڈیسک ::غذائی قلت کی شکار ہماری دنیا کا یہ سنگین ترین مسئلہ ہمیشہ کے لئے ختم ہو جانے کی امید پیدا ہو گئی ہے۔ویب سائٹ ’نیکسٹ شارک‘ کے مطابق چین کے تحقیقاتی ادارے ’سیلائن الکلی ٹالرنٹ رائس ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ سنٹر کنگ ڈاؤ‘ کے سائنسدانوں نے سمندری پانی سے چاول اگانے کے تجربات میں کامیابی حاصل کرلی ہے ۔اس مقصد کے لئے تحقیقاتی مرکز میں 200 سے زائد اقسام کے چاول کاشت کئے گئے تھے، جنہیں میٹھے پانی کی بجائے بحیرہ زرد کے نمکین پانی سے سیراب کیا جاتا رہا۔ سائنسدان اس تجربے سے تقریباً 4.5 ٹن فی ہیکٹر پیداوار کی توقع کررہے تھے لیکن حیران کن طور پر یہ پیداوار ساڑھے 9 ٹن فی ہیکٹر تک چلی گئی۔سمندری پانی سے چاول اگانے کیلئے چین میں ایک عرصے سے تجربات کئے جارہے تھے اور تازہ ترین شاندار کامیابی اس بات کا اشارہ ہے کہ یہ چاول دنیا بھر میں اگانے کیلئے جلد ہی دستیاب ہوجائیں گے۔تحقیق کی سربراہی کرنے والے سائنسدان یوان لانگ پن نے ساؤتھ چائنہ مارننگ پوسٹ میں بات کرتے ہوئے کہا ”یہ بہت بڑی کامیابی ہے۔ ہم امید کررہے ہیں کہ سمندری پانی سے چاول اگانے کا سلسلہ شروع ہوگیا تو کروڑوں افراد کی غذائی ضروریات باآسانی پوری ہوسکیں گی۔“ان تجربات کے لئے ابتدائی تحقیق کرنے والے سائنسدان کے نام پر نئی قسم کے چاولوں کو ”یوان می“ کا نام دیا گیا ہے۔ ابتدائی طور پر ان چاولوں کی قیمت ساڑھے سات ڈالر (تقریباً ساڑھے سات سو پاکستانی روپے) فی کلو گرام ہے لیکن جیسے جیسے ان کی پیداوار میں اضافہ ہوتا چلا جائے گا ان کی قیمت انتہائی کم ہوتی چلی جائے گی۔سمندری چاولوں کی ایک اور اہم خوبی کئی اقسام کے جراثیموں اور بیکٹیریا کے خلاف ان کی مدافعت ہے۔ اس مدافعت کی وجہ سے کسانوں کو ان پر زہریلی سپرے اور ادویات کا استعمال بھی نہیں کرنا پڑے گا اور یوں یہ دیگر عام پائی جانے والی غذاؤں کی نسبت صحت کیلئے کہیں زیادہ مفید ثابت ہوں گے۔دلچسپ بات یہ ہے کہ ان چاولوں کا ذائقہ اور خوشبو بھی انتہائی اعلیٰ ہے اور یہی وجہ ہے کہ ابتدائی تجربات کی کامیابی کے فوری بعد ہی چھ ٹن سے زائد یوان می چاول فروخت بھی ہوچکا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ صحت کیلئے عام چاولوں سے زیادہ مفید ہوں گے کیونکہ اس  میں کیلشیم اور دیگر معدنی اجزاءعام چاولوں کی نسبت زیادہ پائے جاتے ہیں۔

https://www.youtube.com/watch?v=dtw7FW43k3k

Leave a Reply

Your email address will not be published.