MQM

الطاف حسین کا ’’مال‘‘ ادھراُدھرکرنےوالوں کی بھی شامت آگئی

کراچی جدت ویب ڈیسک ایف آئی اے اسٹیٹ بینک سرکل میں بانی متحدہ قومی موومنٹ کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات میں کراچی کے بعض معروف کاروباری افراد کو شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ بانی متحدہ اور دیگر ملوث افراد کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات اسٹیٹ بینک سرکل میں ہی کی جائے گی اور ٹھوس شواہد جمع کرنے کے لیے متحدہ قومی موومنٹ کے اراکین قومی و صوبائی اسمبلی اور سینیٹرز کے 2007 سے 2016 کے اکائونٹس کی چھان بین شروع کردی ہے اور اسی طرح کراچی کے بعض معروف تاجروں کو بھی شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جبکہ متحدہ قومی موومنٹ سے وابستہ اہم رہنمائوں کے علاوہ مختلف تنظیموں کے 5 نجی بینکوں کے 90 سے زائد اکائونٹس کا ریکارڈ حاصل کیا گیا ہے اور اس حوالے سے ایف آئی اے حکام نے مذکورہ بینکوں کے اعلی افسران کے بیانات بھی قلمبند کرلیے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ مذکورہ تاجروں، اراکین قومی و صوبائی اسمبلی اور سینیٹرز نے متحدہ قومی موومنٹ کے بانی کے خلاف لندن میں اسکاٹ لینڈ یارڈ کی تحقیقات کے دوران لندن پولیس کے سامنے بانی متحدہ کے گھر سے برآمد ہونے والے لاکھوں پائونڈز کو درست ثابت کرنے کے لیے تحریری حلف نامے جمع کرائے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.