Daily archive

July 22, 2021

موسم گرما میں کھائے جانے والے پھل گرمی کے اثرات سے بھی محفوظ رکھتے ہیں

/
ویب ڈیسک ::موسم گرما میں کھائے جانے والے پھل جہاں جسمانی صحت کے لیے فائدہ مند ہوتے ہیں وہیں یہ گرمی کے اثرات سے بھی محفوظ رکھتے ہیں۔
ماہرغذا ریم رافیل نے سیدتی ڈاٹ نیٹ کو دیے گئے ایک انٹرویو میں بتایا ہے کہ ’جسم کو روزانہ دو سے تین پھلوں کی ضرورت ہوتی ہے، چونکہ ان پھلوں میں مٹھاس ہوتی ہے اس لیے انہیں اعتدال سے کھانا چاہیے۔ پھل کا ایک حصہ 3 خوبانی ، 12 چیری ، یا 2 آڑو کے برابر ہوتا ہے۔‘
اریم رافیل کے مطابق ’پھل کھانے کا مناسب وقت ناشتے کے دوران ہوتا ہے یا دوپہر کے کھانے اور رات کے کھانے کے درمیان، ’بہتر ہے کہ ضرورت سے زیادہ پھلوں کے استعمال سے باز رہا جائے۔ بھوک محسوس ہو تو پھل کھائیں تاکہ جسم میں ضرورت سے زیادہ شوگر اور کیلوریز کی مقدار نہ بڑھے کیونکہ اس سے وزن میں اضافہ ہوتا ہے۔‘
یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ گرمیوں کے اختتام تک کچھ لوگ موسم گرما کے پھلوں کو ضرورت سے زیادہ استعمال کی وجہ سے تقریباً دو سے پانچ کلوگرام تک وزن میں اضافے کا شکار ہو جاتے ہیں

سٹرابیری:

سٹرابیری میں بڑی مقدار میں پانی ہوتا ہے اور یہ وٹامن سی اور اینٹی آکسیڈینٹ سے بھرپور ہوتی ہے۔

سرخ تربوز:

سرخ تربوز گرمی کے موسم کا بہترین پھل ہے کیونکہ اس میں وافر مقدار میں پانی ہوتا ہے۔
یہ وٹامن اے اور کیروٹینائڈز سے بھرپور ہوتا ہے جو مدافعتی نظام کو متحرک کرنے اور آنکھوں کی صحت میں مدد دیتا ہے۔
وٹامن سی جو سب سے اہم اینٹی آکسیڈینٹس میں سے ایک ہے، مدافعتی نظام کو تقویت دیتا ہے اور جلد کو تروتازہ رکھتا ہے۔
سرخ تربوز میں لائکوپین ہوتا ہے جو پھلوں کو سرخ رنگ دیتا ہے اور کینسر سے لڑتا ہے، یہ دل کی صحت کو برقرار رکھتا ہے، وٹامن بی 6 قوت مدافعت کے نظام کو مضبوط کرتا ہے۔

آڑو:

آڑو کی تاثیر ٹھنڈی ہوتی ہے اور اس میں اینٹی آکسیڈینٹس ہوتے ہیں۔ اس میں بیٹا کیروٹین اور لوٹین شامل ہیں جو بینائی بہتر بناتے ہیں۔ آڑو آئرن، میگنیشیم اور پوٹاشیم سے بھرپور ہوتا ہے۔
یہ پولیفینول سے مالا مال ہوتا ہے جو ہڈیوں کی صحت کو برقرار رکھتے ہیں اور قلبی بیماری اور ذیابیطس کے خطرے کو کم کرتے ہیں، اس طرح قبض کو دور کرتے ہیں۔

انگور:

ان میں وٹامن سی اور اینٹی آکسیڈینٹ ہوتے ہیں جو صحت سے متعلق دائمی مسائل کو دور کرنے میں مدد دیتے ہیں جیسے: ذیابیطس، کینسر
اور دل کی بیماری وغیرہ۔
انگور میں وٹامن بی 1 ، بی 2 ، بی 6 ، تانبا ، مینگنیج اور اینٹی آکسیڈینٹس بھی ہوتے ہیں ، خاص طور پر ریسویراٹرول ، اینٹھوکائننس ، کیٹیچنز اور کوئیرسٹین نامی کیمیائی مرکب جو کینسر سے لڑتے ہیں۔ انگور پوٹاشیم سے بھرپور پھل ہے جو ہائی بلڈ پریشر کو کم کرتا ہے۔

Article on Benefits of Fruit and Vegetable Juices during Summer - Assignment Point

فائزر کی دو خوراکیں ڈیلٹا ویرینٹ کیخلاف سب سے زیادہ مؤثر ثابت: برطانوی تحقیق

/

ویب ڈیسک ::برطانوی تحقیق میں کہا گیا ہےکہ فائزر ویکسین کی دو خوراکیں ڈیلٹا ویرینٹ کے خلاف 88 فیصد مؤثر رہیں۔

برطانوی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہےکہ ایسٹرازینیکا ویکسین کی 2خوراکیں ڈیلٹا ویرینٹ کےخلاف 60 فیصد مؤثر رہیں جب کہ فائزر ویکسین کی ایک خوراک 36 فیصد اور ایسٹرازینیکا کی ایک خوراک 30 فیصد موثررہی۔

دوسری جانب برطانیہ میں گزشتہ روز کورونا کے 44 ہزار 104 کیسز رپورٹ ہوئے اور 73 اموات ہوئیں جب کہ فرانس میں 21539 کیسز سامنے آئے۔

علاوہ ازیں چلی نے روسی کورونا ویکسین اسپوٹنک فائیو کے ہنگامی استعمال کی منظوری دے دی ہے۔