Daily archive

July 10, 2021

دوسرے ون ڈے میں پاکستان کو شکست، انگلینڈ کو سیریز میں برتری حاصل

/

  ویب ڈیسک :: بارش کے باعث میچ کی ایک اننگز کو 47 اوورز تک محدود کر دیا گیا ۔پاکستان اور انگلینڈ کی ٹیموں کے درمیان تین ایک روزہ میچوں کی سیریز کے دوسرے میچ میں انگلینڈ نے پاکستان کو  52 رنز سے شکست دے دی۔

لندن کے لارڈز کرکٹ گراؤنڈ میں جار ی میچ میں  پاکستان نے ٹاس جیت کر میزبان انگلینڈ کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی جس پر انگلینڈ کی ٹیم 45 اعشاریہ 2 اوورز میں 247 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

انگلینڈ کی جانب سے فل سالٹ نے 60  اور جیمز ونس نے 56 رنزبنائے جب کہ کپتان بین اسٹوکس 22 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

ان کے علاوہ  بریڈن کرسن نے 31، گریگوری نے 40 رنز اور اورٹن صفر پر آؤٹ ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے فاسٹ بولر حسن علی نے 5 وکٹیں اور  حارث رؤف نے 2 وکٹیں حاصل کیں جب کہ  شاہین شاہ آفریدی ، شاداب خان اور سعود شکیل نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اب افغان عوام نے طے کرنا ہوگا کہ وہ کیسی حکومت چاہتے ہیں . ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار

//

رالپنڈی : ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ پاکستان نے خلوص نیت سےامن عمل آگے بڑھانے کی کوشش کی تاہم اب افغان عوام نے طے کرنا ہوگا کہ وہ کیسی حکومت چاہتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے افغانستان کی صورت حال پر  خصوصی ٹرانسمیشن میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ افغان میں امن عمل کےبہت سےپہلوہیں، پاکستان نے خلوص نیت سےامن عمل آگےبڑھانے کی کوشش کی اور اس امن عمل میں سہولت کارکردارکرتارہا، افغانستان نے کیسے آگے بڑھنا ہے فیصلہ وہاں کے عوام نے کرنا ہے۔ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ افغانستان سےکچھ خبریں آرہی ہیں، امریکا نے افغان فوج کی تربیت پربہت پیسے خرچ کیے ہیں، افغان فوج نے کہیں مزاحمت کی یا کریں گے یہ دیکھناہوگا، تاہم اس وقت افغان فوج کی پیش رفت خا ص نہیں، اب تک کی خبروں کے مطابق طالبان کی پروگریس زیادہ ہے۔میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ امریکا نے تو افغانستان سے انخلا کرلیا ہے، اب خطے کے اسٹیک ہولڈرز کو افغانستان کے فریقین کوہی مل بیٹھ کرمسئلے کا حل نکالنا ہوگا، پاکستان کو ہی اس مسئلےمیں موردالزام ٹھہرایا جاتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے پوری سنجیدگی سے افغان امن عمل آگے بڑھانے کی کوشش کی، کافی عرٖ صےسے کہہ رہے ہیں افغانستان میں حکومت کا فیصلہ وہاں کے عوام نے کرنا ہے اور بالآخرافغان عوام نے طےکرناہوگاکہ وہ کیسی افغان حکومت چاہتےہیں۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ افغانستان میں بندوق 20سال میں فیصلہ نہیں کرسکی، افغانستان میں تمام دھڑے بھی جنگ سے تنگ آچکے ہیں۔پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کے حوالے سے میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ پناہ گزینوں سے متعلق تمام خدشات موجود ہیں، افغانستان سرحد پر 90 فیصد سے زائد حصے پر باڑ لگ چکی ہے اور بارڈر سے متعلق ایک لائحہ عمل طے ہوچکا ہے۔انھوں نے مزید کہا سب جانتے ہیں داعش اور ٹی ٹی پی افغانستان میں موجود ہیں، افغانستان میں خانہ جنگی کے امکان کے پیش نظرتیاری کی ہیں اور افغانستان سرحد سے حملوں سے متعلق معاملات افغان حکومت سے اٹھائے ہیں۔

بارڈر مینجمنٹ کے حوالے سے ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ اس وقت ہمارے بارڈر مینجمنٹ کےمعاملات بہت بہترہیں، باڑ لگانے کے دوران افغانستان سے ہم پر حملے ہوتے رہے ہیں، افغانستان میں حالات خراب ہونےپرافغان سرحدسےپناہ گزینوں کی آمدکاخدشہ موجود ہوگا، پناہ گزینوں کی ممکنہ آمدپرتمام اداروں کو مل کرکام کرنےکی ضرورت ہوگی۔میجر جنرل بابر افتخار نے واضح کیا کہ ہم نے اپنی سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہونے دینی، جیسےانتظام ہم نے کیے وہ دوسری طرف سےبھی ہونےچاہیےتھے جونہیں ہوئے، سرحد پر انتظامات کودوسری طرف سےایئرٹائٹ نہیں رکھاگیا۔امریکی انخلا سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ تمام اسٹیک ہولڈرز امریکا کا افغانستان سے ذمہ دارانہ انخلا چاہتے تھے ، امریکا کو ذمے دار انخلا کرنا چاہیے تھا، امریکا کا افغانستان سے انخلا کچھ جلدی ہوگیا، امریکی بیسز کا کوئی سوال نہیں پیدا ہوتا۔بھارت کے حوالے سے ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ بھارت کی افغانستان میں سرمایہ کاری نیک نیتی سےہوتی توپریشان نہ ہوتے، آج بھارت کوافغانستان میں اپنی سرمایہ کاری ڈوبتی نظرآرہی ہے، پاکستان نے پوری کوشش کہ مسئلے کا حل بغیر لڑائی پرامن طریقے سے ہوسکے۔میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ بھارت دنیا کو بتانا چاہتا ہے افغانستان کے مسائل کی وجہ پاکستان ہے ، ہم چاہتے ہیں افغانستان کے مسئلے کا حل بغیرتشدد ہو، افغانستان میں ہماراکوئی پسندیدہ نہیں ہے۔

موبائل فون کا زیادہ استعمال دماغ میں رسولی کا سبب بن سکتا ہے۔ ماہرین نے خبردار کردیا

/

ویب ڈیسک ::بین الاقوامی ویب سائٹ کے مطابق امریکا کی یونیورسٹی آف کیلی فورنیا برکلے کے اسکول آف پبلک ہیلتھ کی ایک تحقیق کے مطابق موبائل فون کا زیادہ استعمال دماغ میں رسولی یا ٹیومر کا سبب بنتا ہے۔

یہ تحقیق جنوبی کوریا کے نیشنل کینسر سینٹر اور سیئول نیشنل یونیورسٹی کے ساتھ مل کر کی گئی ہے، جس کے مطابق 46 فیصد امریکی روزانہ 5 سے 6 گھنٹے فون استعمال کرتے ہیں اور 11 فیصد دن میں سات گھنٹے سے زیادہ اپنی ڈیوائس سے چپکے رہتے ہیں۔تحقیق میں کہا گیا کہ 10 سال کے عرصے کے دوران سیل فون کا 1 ہزار گھنٹوں سے زیادہ استعمال یعنی محض 17 منٹ روزانہ بھی دماغ میں رسولی پیدا ہونے کے خطرے کو 60 فیصد بڑھا دیتا ہے۔ جو لوگ ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے موبائل فونز استعمال کر رہے ہیں، ان میں رسولی کا خطرہ ان لوگوں سے نسبتاً زیادہ ہے جو پانچ سال یا اس سے کم عرصے سے فونز کا استعمال کر رہے ہیں۔برکلے پبلک ہیلتھ میں سینٹر فار فیملی اینڈ کمیونٹی ہیلتھ کے ڈائریکٹر جوئل ماسکووچ کہتے ہیں کہ موبائل فون کا استعمال صحت کے مختلف مسائل کو جنم دیتا ہے اور بدقسمتی سے ہماری سائنسی برادری نے اس پر بہت کم توجہ دی ہے۔ایک تحقیق میں 20 سال کے عرصے کے دوران 4 لاکھ 20 ہزار موبائل فون صارفین کا ریکارڈ جمع کیا گیا اور ماہرین نے دیکھا کہ موبائل فون اور دماغ کی رسولیوں میں کوئی تعلق نہیں۔ البتہ دوسری تحقیق میں کہا گیا کہ موبائل فون کا بہت زیادہ استعمال دماغی رسولی کی ایک خاص قسم کا خطرہ بڑھا سکتی ہے۔

یہاں تک کہ امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے بھی اس کے صحت پر مضر اثرات سے انکار کیا۔ ان کے خیال میں اب تک کوئی ایسا مستقل یا قابل بھروسہ سائنسی ثبوت نہیں ملا جو موبائل فونز سے نکلنے والی ریڈیو فریکوئنسی سے صحت کے مسائل پیدا کرنے کے حق میں ہو۔ماہرین کا کہنا ہے کہ اس وقت موبائل فون سے چھٹکارا پانا تو مشکل ہے لیکن کچھ اقدامات کی مدد سے آپ اپنے موبائل فون کا استعمال محدود کر سکتے ہیں اور اس کے تابکاری کے اثرات سے بچ سکتے ہیں۔جب استعمال نہ کر رہے ہوں تو فون کا وائی فائی اور بلیو ٹوتھ بند کر دیں۔ فون کو جسم سے کم از کم 10 انچ کے فاصلے پر رکھیں۔ اگر جیب میں رکھنا مجبوری ہو تو اسے ایئر پلین موڈ پر رکھیں۔ کالز کے لیے ہیڈ فونز یا اسپیکر فون کا استعمال کریں۔سوتے ہوئے اپنا فون دوسرے کمرے میں رکھیں۔سگنل کمزور آرہے ہوں تو فون استعمال نہ کریں

دہی قیمہ  بنانے کی ترکیب جانیئے

/

کراچی ۔ ویب ڈیسک :: بکرا عید کی آمد آمد ہے تو ایک نئی ڈش  دہی قیمہ  بنانے کی ترکیب جانیئے ۔اس کےلئے کیا چیزیں  درکار ہونگی نوٹ کرلیں

دہی قیمہ

وقت :60 سے 70 منٹ

3 سے 4 افرادکے لئے

اجزائے ترکیبی ………… مقدار …………

مٹن قیمہ ………… ½کلو

تیل ………… ¼کپ
دہی ………… 2کپ
پیاز (کٹے ہوئے) ………… 1کپ
ادرک لہسن کا پیسٹ ………… 1کھانے کا چمچ
نمک ………… حسب ذائقہ
سرخ مرچ پاؤڈر ………… 1چائے کا چمچ
ہلدی پاؤڈر ………… ½چائے کاچمچ
زیرہ پاؤڈر ………… 1چائے کا چمچ
خشک دھنیا پاؤڈر ………… 1چائے کاچمچ

سجاوٹ کے لئے :
ہرا دھنیا (کٹا ہوا) ………… 1کھانے کا چمچ
ہری مرچیں (قتلوں میں کٹی ہوئی) ………… 1چائے کا چمچ

طریقہ کار:
دہی کو ململ کے کپڑے میں ڈال کر کسی پیالے یا سنک پر لٹکا دیں کچھ گھنٹوں بعد دہی کا زیادہ تر پانی نچڑ جائے گا اور یہ بہت زیادہ سخت اور کریمی ہو جائے گا اب دہی کو ایک پیالے میں ڈال کر ایک طرف رکھ دیں۔ برتن میں تیل گرم کرکے پیاز ہلکے براؤن کرلیں۔ ادرک لہسن کا پیسٹ شامل کرکے مزید 2منٹ پکائیں۔ نمک، سرخ مرچ، ہلدی، زیرہ اور خشک دھنیہ پاؤڈر شامل کرکے دو سے تین منٹ پکائیں۔ اب مٹن قیمہ اور ایک کپ پانی شامل کرکے 30سے 35 منٹ قیمہ گلنے اور گھی چھوڑنے تک پکائیں۔ دہی شامل کرکے تین سے چارمنٹ مزید پکائیں۔ 5سے 6 منٹ بھونیں اور اتار لیں۔ ہرے دھنیے اور ہری مرچوں کے ساتھ سجائیں۔ روٹی یا نان کے ساتھ پیش کریں۔ لٹکا ہوا دہی پہلے سے تیار کرکے کچھ دن پہلے ہی فریج میں رکھا جاسکتا ہے۔

AHMED QEEMA MASALA SINGLE PACK 50GM | New PGMall

مسلمانوں کے ہزاروں قدیم مقبروں میں پراسرار کائناتی ترتیب کا انکشاف

/

خرطوم / روم:جدت ویب ڈیسک: مشرقی سوڈان کے علاقے کسنا میں 4100 مربع کلومیٹر پر سیکڑوں سال قبل مسلمانوں کے بنائے ہوئے ہزاروں مقبروں میں کہکشانی جھرمٹوں جیسی پراسرار ترتیب کا انکشاف ہوا ہے لیکن سائنسدان نہیں جانتے کہ آخر یہ مقبرے اس ترتیب سے کیوں بنائے گئے تھے۔
اتنے وسیع رقبے پر پھیلے ہوئے ان ہزاروں مقبروں میں بظاہر کوئی ترتیب نہیں لیکن اٹلی کی نیپولی یونیورسٹی میں افریقہ اور بحیرہ روم کے آثارِ قدیمہ کے ایک ماہر اسٹیفانو کونسٹانزو کو چند سال پہلے شبہ ہوا کہ شاید اس بے ترتیبی میں بھی کوئی ترتیب ہے۔زمین پر نظر رکھنے والے طاقتور مصنوعی سیارچوں سے لی گئی تفصیلی تصویروں کی مدد سے انہوں نے اس پورے علاقے میں پھیلے ہوئے مقبروں کا مجموعی نقشہ مرتب کیا جس میں ہر نقطہ ایک مقبرے کو ظاہر کرتا تھا۔ یہیں سے ان مقبروں میں ترتیب کی جھلکیاں نمایاں ہونے لگیں۔اپنے برطانوی اور سوڈانی تحقیق کار ساتھیوں کی مدد سے انہوں نے ایک خاص تکنیک استعمال کرنے کا فیصلہ کیا جسے نیمین اسکاٹ کلسٹر پروسیس کہا جاتا ہے۔اس سے پہلے تک یہ تکنیک صرف ستاروں اور کہکشاں کے جھرمٹوں میں ترتیب کا پتا لگانے میں ہی استعمال ہوتی رہی ہے۔ یہ پہلا موقعہ تھا کہ جب اسے آثارِ قدیمہ کے شعبے میں آزمایا گیا۔نیمین اسکاٹ کلسٹر پروسیس استعمال کرنے پر ہونے والا انکشاف خود ان ماہرین کیلیے بھی حیرت انگیز تھا: تمام مقبروں کی ترتیب کہکشانی جھرمٹوں جیسی تھی!یعنی درمیان والے مقبروں کا ایک جھرمٹ اور اس کے گرد پھیلے ہوئے مقبروں کے مزید جھرمٹ جنہیں بعد کے زمانوں میں تعمیر کیا گیا تھا۔اس ترتیب کو سامنے رکھتے ہوئے ماہرین نے اندازہ لگایا ہے کہ درمیان والے مقبرے غالبا زیادہ اہم اور مقدس ہستیوں کے ہیں جبکہ ان کے ارد گرد پھیلے ہوئے چھوٹے مقبرے، ان ہستیوں سے عقیدت رکھنے والوں کے ہیں۔دس ہزار سے زیادہ کی تعداد میں یہ چھوٹے بڑے مقبرے کم از کم پانچ سو سال پرانے ہیں جو کسنا میں ایک بہت وسیع رقبے پر پھیلے ہوئے ہیں۔ان مقبروں میں دو طرح کی ساخت زیادہ نمایاں ہے: ٹیومیولس (tumulus) اور قبہ (qubba)۔ٹیومیولس ایک عام کچی قبر جیسی ساخت ہوتی ہے جو ارد گرد کی سطح زمین سے کچھ بلند ہوتی ہے جبکہ قبہ میں مقبرے کی چاردیواری اور چھت بھی ہوتی ہے جس پر گنبد موجود ہوتا ہے۔

 

ٹِک ٹاک نے ملازمتوں میں مدد کی سروس شروع کردی

/

بیجنگ: ٹک ٹاک نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنے صارفین کو ملازمت کی تلاش میں مدد دے گا اور اس کے لیے ریزیومے نامی سروس شروع کردی ہے۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ ٹک ٹاک نے اس ضمن میں دنیا کی بڑی کمپنیوں اور اداروں سے بھی رابطہ کیا ہے جن میں ٹارگٹ، ڈبلیو ڈبلیو ای، اے ایل او یوگا، شاپیفائی اور دیگر کمپنیاں سرِ فہرست ہیں۔ تجزیہ کاروں نے اسے قدرے دلچسپ قرار دیتے ہوئے اسے لنکڈاِن جیسی سہولیات کی فراہمی کا ایک پلیٹ فارم بنانے کی کاوش قرار دیا ہے۔اسے استعمال کرنے کے لیے ٹک ٹاک نے ایک بہت ہی سادہ طریقہ بھی پیش کیا ہے۔ وہ یہ ہے کہ پہلے ٹک ٹاک کلپس میں شوکیس دیئر اسکل سیٹس اینڈ ایکسپیریئس میں جائیں۔ پھر وہاں #TikTokResumes کے ساتھ ایک کیپشن لکھ کر اسے پوسٹ کردیجئے۔ دوسری اہم خبر یہ ہے کہ خود ٹک ٹاک نے بھی ملازمت کے لیے اپنی ایک الگ ویب سائٹ بنائی ہے جہاں ویڈیو سی وی اور ٹیکسٹ کوائف بھیجے جاسکتے ہیں۔اس سے قبل ٹک ٹاک نے ای کامرس اور خریدوفروخت کے لیے بھی کئی آپشن پیش کئے ہیں جو اب بھی مقبول ہیں۔اس کا اعلان ٹک ٹاک نے حال ہی میں کیا ہے۔ فی الحال یہ سروس امریکہ میں آزمائشی طور پر شروع کی جارہی ہے جس کی بدولت آپ افرادی قوت کے ادارو ں تک اپنا سی وی اور ملازمتی کوائف بھیج سکیں گے۔ اس کا مقصد ٹک ٹاک کو مزید عوامی مفاد کے لیے بہتر بنانا ہے اور صارفین کے لیے ملازمتوں کی تلاش میں مدد کرنا ہے۔

 

‘Sutta’ from mini-series ‘Karachi Kahaani’ Now Streaming

Web Desk :: See Prime’s Anthology Karachi Kahaani Premiers 3rd Story ‘Sutta’ The story revolves around four major emotions of love, betrayal, grief and regret. Ramsha is a
young girl who is caught red-handed while smoking by her mother. This follows with an
argument centered on ideology, women empowerment and freedom of expression. The
question remains, will the two be able to find a common ground or is there too big of a
generation gap?
“Karachi Kahaani is an anthology of four short films, each bringing forth the different tales that
people in the city carry with themselves. Nothing makes me more excited than to break these
untold stories to the world. See Prime has always focused on creating projects that make a
difference and inspire others. The whole cast and crew worked really hard to bring life to our
vision.” Said Seemeen Naveed, executive producer and the woman behind See Prime.
The cast for Sutta includes Fajr Sheikh and Hina Rizvi. The executive producer of this tale is
Seemeen Naveed, it has been penned down by Seraj Us Salikin, and co-produced by Hammad
Khan, Ahmer Hussain, and Hamza Ali. ‘Sutta’ is now available to stream on See Prime’s YouTube
channel.

کراچی: چیئرمین نادرا کا ریجنل ہیڈ آفس کا دورہ، ایجنٹ مافیا کیساتھ ملی بھگت، 39 ملازمین معطل

//

ویب ڈیسک ::چیئرمین نادرا نے کراچی میں ریجنل ہیڈ آفس کے دورے کے موقع پر ایجنٹ مافیا کے ساتھ ملی بھگت اور خواتین کے ساتھ ناروا سلوک پر 39 ملازمین کومعطل کر دیا۔

چیئرمین نادرا نے کراچی میں ریجنل ہیڈ آفس اور مختلف نادرا دفاتر کے ہنگامی دورے کئے۔ طارق ملک نے کراچی میں نادرا دفاتر کی کارکردگی بہتر اور مؤثر بنانے کے لئے نئے اقدامات کا جائزہ لیا۔ چیئرمین نادرا نے سائلین سے ان کے مسائل دریافت کئے اور موقع پر حل کرنے کے احکامات جاری کیے۔ طارق ملک نے ملازمین سے ان کی کارکردگی کے حوالے سے بھی بات چیت کی۔  اس موقع پر چیئرمین نادرا طارق ملک نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 39 ملازمین کو ایجنٹ مافیا کے ساتھ ملی بھگت اور خواتین کے ساتھ ناروا سلوک کرنے پر معطل کیا گیا، بدعنوان عناصر کو قوائد و ضوابط کے مطابق سزا دی جائے گی، قومی ادارہ میں ناقص کارگرگی، بدعنوانی اور کرپشن کرنے والے کو برداشت نہیں کیا جائے گا، ادارے کے محدود وسائل کے باوجود ملازمین کی بلا تفریق تنخواہیں بڑھا کر ملازمین کے بہترین مفاد کو یقینی بنایا

۔

کرونا وائرس کا لیب سے اخراج؟، جرمن ماہر کا اہم بیان

//

برلن: ایک جرمن وائرلوجسٹ نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کا لیبارٹری سے اخراج سے متعلق نظریہ ایک انتہائی انہونی بات ہے۔

تفصیلات کے مطابق بائیولوجی کے جرمن پروفیسر تھامس سی میٹنلیٹر نے کرونا وائرس کے لیبارٹری سے اخراج کا نظریہ انتہائی انہونی قرار دے دیا ہے، انھوں نے مقامی میڈیا کو انٹرویو میں کہا کہ انتہائی سیکیورٹی والی لیبارٹریز میں خصوصی جامع تحفظ والی ٹیکنالوجی موجود ہوتی ہے۔جرمنی کے جانوروں کی صحت سے متعلق وفاقی تحقیقاتی ادارے فریڈرک لوفلر انسٹیٹیوٹ کے سربراہ نے کہا کہ لیبارٹریز میں جامع تحفظ والی ٹیکنالوجیز پر مبنی اقدامات کا دنیا بھر میں ایک معیار قائم رکھا جاتا ہے۔تاہم میٹنلیٹر کا یہ بھی کہنا تھا کہ تمام تر حفاظتی اقدامات کے باوجود درحقیقت انسانی عنصر بھی موجود ہوتا ہے، اور سادہ سی بات ہے کہ غلطیاں ہو سکتی ہیں۔جرمن ماہر نے کہا ہم نہیں جانتے کہ یہ بیماری پھیلانے والا جرثومہ کہاں سے آیا ہے، لیکن مجھے یقین نہیں ہے کہ اس جرثومے میں جان بوجھ کر تبدیلی آئی ہے، لیکن میں اس قیاس کو 100 فی صد مسترد بھی نہیں کر سکتا۔