Daily archive

June 17, 2021

تبدیلی کیسے آئی ؟احمد علی بٹ نےاپنے نئے روپ کی تصویر انسٹاگرام اکاؤنٹ پر شئیر کردی

/

ویب ڈیسک ::پاکستان کے مشہور فلم اسٹار احمد علی بٹ میں بھی تبدیلی آگئی ہے۔ انہوں نے نئے کردار کیلئے نیا روپ اپنایا ہےاحمد علی بٹ پاکستان کے کامیاب ترین فلمی اداکاروں اور ٹی وی میزبانوں میں شامل ہیں۔

ان کی مشہور فلموں میں جوانی پھر نہیں آنی کی سیریز، پرے ہٹ لو اور پنجاب نہیں جاونگی بھی شامل ہے۔احمد علی بٹ ملکہ ترنم نور جہاں کے نواسے بھی ہیں۔ احمد علی بٹ نے پچھلے ڈیڑھ سال میں تقریبا 30 کلو وزن کم کیا ہے۔انہوں نے کورونا کے دنوں کا ضائع نہیں کیا بلکہ اپنے صحت کا بھی بھی خیال کیا اور دوسروں کیلئے مثال بنے۔۔

احمد علی بٹ نے پہلے وزن کم کیا اور اب نئے روپ کی تصویر اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر اپ لوڈ کی۔انسٹاگرام پر انہوں نے اپنی دو نئی تصاویر اپ لوڈ کی ہیں۔ احمد بٹ نے لکھا’بولو ماشااللہ نئی لُک کے ساتھ نیو کٹ تو بنتا ہے۔

Image

“Mein aur meri gari ka sheesha akser yeh batein kertay hain” Atif Aslam

Web Desk ::According to details, Pakistani singer Atif Aslam said in a video on social media that he and his car mirror are talking to each other.

He wrote in the caption, “Mein aur meri gari ka sheesha akser yeh batein kertay hain”

In this video, the songs playing in Atif Aslam’s car can also be heard.

 

https://www.instagram.com/p/CQLKDn6HDo5/?utm_source=ig_embed&utm_campaign=embed_video_watch_again

حکومت نے قومی بچت سکیموں کی شرح منافع میں اضافہ کردیا

//

کراچی:  حکومت نے قومی بچت سکیموں کی شرح منافع میں اضافہ کردیا۔

وزارت خزانہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق 10 سالہ ڈیفنس سیونگز سرٹیفکیٹس پرشرح منافع 9.29 سے بڑھاکر9.35 فیصد اور ریگولر انکم سیونگز سرٹیفکیٹس پرشرح منافع 8.64 سے بڑھاکر 8.76 فیصد کردی گئی ہے۔نوٹیفکیشن کے مطابق 6 ماہ کے شارٹ ٹرم سیونگز سرٹیفکیٹس پر شرح منافع 7.14 سے بڑھاکر 7.20 فیصد کردی گئی جب کہ اسپیشل سیونگز سرٹیفکیٹس پر شرح منافع برقرار رہے گی۔اس کے علاوہ بہبود، پنشنرز ، شہداء فیملی سرٹیفکیٹس اور سیونگز اکاؤنٹ پر شرح منافع برقرار رہے گی۔ نوٹیفکیشن کے مطابق شرح منافع میں اضافے کا اطلاق آج سے کردیا گیا۔

اندھیر نگری چوپٹ راج۔ سندھ میں کنٹریکٹ افسران کو بغیر امتحان مستقل کرنے پر نوٹسز جاری

//

کراچی ۔ویب ڈیسک ::سپریم کورٹ نے گریڈ 16 سے اوپر کے کنٹریکٹ افسران کو بغیر پبلک سروس کمیشن کے مستقل کرنے سے متعلق سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف درخواستیں سماعت کے لیے منظورکرتے ہوئے تمام فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے دلائل طلب کرلیے۔

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس قاضی محمد امین احمد پر مشتمل تین رکنی بینچ کے روبرو گریڈ 16 سے اوپر کے کنٹریکٹ افسران کو بغیر پبلک سروس کمیشن مستقل کرنے کے خلاف درخواستوں کی سماعت ہوئی۔چیف جسٹس نے استفسار کیا کیا حکومت افسران کی تقرری / مستقلی کے لیے دو الگ طریقے اپنا رہی ہے؟ جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے اس طرح تو کل کسی کو بھی  افسر بنا دیا جائے گا بغیر کمیشن پاس افسران کو کیسے مستقل کیا جا سکتا ہے؟حکومت کیسے قانون کو بائی پاس کرکے یہ اقدام کر سکتی ہے؟ یہ پبلک سروس کمیشن پاس افسران کے ساتھ امتیازی سلوک ہوگا۔ اس طرح تو امتحان پاس کرنے کے اہل اور نااہل دونوں یکساں ہو جائیں گے۔

ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے موقف اپنایا کہ خدشہ ہے کہ پورے ملک سے سرکاری افسران کا خلا پیدا ہو جائے گا۔ تمام صوبے کنٹریکٹ افسران کو پبلک سروس کمیشن کے بغیر مستقل کر رہے ہیں۔ یہ پریکٹس نہ صرف سندھ بلکہ تمام صوبوں میں ہے۔ اس کیس کو اسلام آباد میں سنا جائے اور تمام صوبوں سے رائے لی جائے۔ ایک اسپیشل کمیٹی تشکیل دے دی جائے جو میرٹ پر افسران کا تعین کرے۔جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے آپ کمیٹی کے بجائے کنٹریکٹ افسران کو پبلک سروس کمیشن کیوں نہیں بھیجتے؟ چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس میں کہا کہ بغیر پبلک سروس کمیشن کے ترقی پانے والے کتنے افسران ہیں؟ ایڈوکیٹ جنرل نے بتایا کہ سندھ میں کم و بیش 2 ہزار افسران متاثر ہوں گے۔ عدالت نے سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف درخواستیں سماعت کے لیے منظور کرلیں اور تمام فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے دلائل طلب کرلیے۔

پیٹ پر اضافی چربی صحت کے لیے انتہائی خطرناک

/

ویب ڈیسک :: آج کل کی تیز رفتار زندگی میں موٹاپا ہر کسی کا پرابلم  ہے ، کیونکہ اپنے لئے تو ٹائم نکالتا  نہیں صرف کام میں ہی وقت ختم  ہوجاتا ہے اور پھر کسی کو بھی توند کا نکلنا پسند نہیں آسکتا کیونکہ یہ اضافی چربی صحت کے لیے انتہائی خطرناک ہے۔

اس کے نتیجے میں مختلف امراض جیسے میٹابولک سینڈروم، ذیابیطس ٹائپ ٹو، امراض قلب اور کینسر کا خطرہ بڑھتا ہے۔پیٹ اور کمر کے گرد جمع ہونے والی چربی کو طبی زبان میں ورسیکل فیٹ کہا جاتا ہے جو کہ جگر اور شکم کے دیگر اعضا پر جمع ہوجاتی ہے۔یہاں تک کہ بظاہر دبلے پتلے افراد میں بھی یہ چربی جمع ہوسکتی ہے جس سے طبی مسائل کا خطرہ بڑھتا ہے۔چند عام سی چیزیں توند کی چربی بڑھانے کا باعث بنتی ہیں حالانکہ بچنا بہت آسان ہوتا ہے اور یہ وہ عناصر ہیں جن سے بچنا آپ کے اپنے ہاتھ میں ہوتا ہے۔

فروٹ جوس

فروٹ جوس درحقیقت ایک روپ بدلا ہوا میٹھا مشروب ہے، درحقیقت بغیر چینی والے سوفیصد خالص فروٹ جوس میں بھی بہت زیادہ مٹھاس ہوتی ہے۔250 ملی لیٹر سیب کے جوس اور ایک سافٹ ڈرنک میں 24 گرام مٹھاس ہوتی ہے۔اگرچہ پھلوں کے جوس سے جسم کو کچھ وٹامنز اور منرلز بھی ملتے ہیں مگر ان میں موجود مٹھاس یا شکر انسولین کی مزاحمت اور توند نکلنے کا خطرہ بڑھاتی ہے۔جیسا اوپر بھی بتایا گیا ہے کہ سیال شکل میں کیلوریز کو بہت زیادہ مقدار میں جسم کا حصہ بنانا بہت آسان ہوتا ہے جبکہ اس سے کھانے کی اشتہا کی تسکین بھی نہیں ہوتی۔

تناؤ

کورٹیسول نامی ایک ہارمون بقا کے لیے انتہائی ضروری ہوتا ہے اور اسے تناؤ کا باعث بننے والا ہارمون بھی مانا جاتاہے کیونکہ یہ جسم کو کسی پرتناؤ ردعمل میں مدد دیتا ہے۔مگر متعدد افراد میں تناؤ بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے اور اس کے نتیجے میں اضافی کیلوریز پورے جسم میں چربی کی شکل میں ذخیرہ ہونے کی بجائے پیٹ اور کمر کے ارگرد چربی بڑھانے لگتی ہے۔

فائبر کا کم استعمال

فائبر اچھی صھت اور جسمانی وزن کو کنٹرول کرنے کے لیے بہت اہم غذائی جز ہے۔کچھ اقسام کی فائبر پیٹ بھرے رکھنے کا احساس، بھوک کے ہارمونز کو مستحکم اور غذا کی شکل میں کم کیلوریز جذب کرنے میں مدد دیتی ہے۔ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ گھلنے والی فائبر توند کی چربی گھٹانے میں مدد دیتی ہے، اس قسم کی فائبر کی 10 گرام مقدار سے پیٹ اور کمر کے ارگرد چربی کے اجتماع میں 3.7 فیصد کمی آسکتی ہے۔ریفائن کاربوہائیڈریٹس اور کم فائبر والی غذاؤں سے کھانے کی اشتہا اور وزن بڑھتا ہے جبکہ توند میں اضافہ ہوتا ہے۔ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ اجناس میں موجود فائبر پیٹ کی چربی گھٹانے میں مدد دیتی ہے جبکہ ریفائن کاربوہائیڈرٹس سے پیٹ کی چربی بڑھتی ہے۔

نیند کی کمی

متعدد تحقیقی رپورٹس میں دریاافت کیا گیا کہ ناکافی نیند سے جسمانی وزن بڑھ سکتا ہے جبکہ توند کا حجم بڑھتا ہے۔68 ہزار سے زائد خواتین پر 16 سال تک ہونے والی ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ جو خواتین 5 گھنٹے یا اس سے کم وقت تک سونے کی عادی تھیں ان کے جسمانی وزن میں 15 کلو تک اضافے کا امکان 7 گھنٹے تک سونے والی خواتین کے مقابلے میں 32 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔نیند کے مسائل سے بھی جسمانی وزن میں اضافہ ہوسکتا ہے اور ان میں سب سے عام نیند کے دوران سانس لینے میں مشکل یا سلیپ اپنیا ہے۔ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ سلیپ اپنیا کے شکار مردوں میں توند کی چربی دیگر کے مقابلے میں زیادہ ہوسکتی ہے۔

میٹھے پکوان اور مشروبات

بیشتر افراد بہت زیادہ چینی کا استعمال کرتے ہیں۔زیادہ میٹھی غذائیں اور مشروبات یہاں تک کہ چینی اور کافی میں چینی کی زیادہ مقدار کا استعمال بھی توند کی چربی میں اضافے کا باعث بنتا ہے۔ایک تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ زیادہ جسمانی وزن اور موٹاپے کے شکار ایسے افراد جو روزانہ کی 23 فیصد کیلوریز میٹھے کی شکل میں جزوبدن بناتے ہیں، ان میں انسولین کی حساسیت اور توند کی چربی بڑھنے کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔اگرچہ زیادہ میٹھا کسی بھی شکل میں ہو جسمانی وزن میں اضافے کا باعث بن سکتا ہے، مگر میٹھے مشروبات زیادہ مسائل کا باعث بنتے ہیں، سافٹ ڈرنکس اور دیگر میٹھے مشروبات زیادہ مقدار میں چینی کو بہت کم وقت میں جسم کا حصہ بناسکتے ہیں۔تحقیقی رپورٹس میں دریافت کیا گیا کہ سیال شکل میں کیلوریز کا اثر کھانے کی اشتہار پر اس طرح نہیں ہوتا جیسا ٹھوس غذا کا ہوتا ہے، جب لوگ مشروبات کی شکل میں کیلوریز جسم کا حصہ بناتے ہیں تو اس سے پیٹ بھرنے کا احساس اس طرح نہیں ہوتا جیسا کسی ٹھوس غذا کو کھانے سے ہوتا ہے۔

ٹرانس فیٹس

ٹرانس فیٹ چکنائی یا چربی کی سب سے نقصان دہ قسم ہے، جسے بنانے کے لیے گھلنے والی چربی میں ہائیڈروجن کا اضافہ کیا جاتا ہے تاکہ وہ زیادہ دیر تک ٹھوس رہ سکے۔ٹراس فیٹ عام طور پر فاسٹ فوڈ، کیک، بیکری کی دیگر اشیا، فروزن پیزا، بسکٹ اور کافی کریمر وغیرہ میں ہوتا ہے اور اس کے زیادہ استعمال سے جسم میں ورم بڑھتا ہے، جبکہ انسولین کی حساسیت، امراض قلب اور دیگر متعدد امراض کا خطرہ ہوتا ہے۔کچھ تحقیقی رپورٹس کے مطابق چربی کی یہ قسم توند میں اضافی چربی بڑھانے کا باعث بن سکتی ہے۔

جسمانی طور پر سست ہونا

سست طرز زندگی صحت کے لیے تباہ کن ثابت ہوتا ہے اور حالیہ چند دہائیوں کے دوران دنیا بھر میں لوگ جسمانی طور پر کم متحرک ہوچکے ہیں، جس کے نتیجے میں موٹاپے بشمول توند رکھنے والے افراد کی شرح میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔امریکا میں 1988 سے 2010 تک ایک سروے میں دریافت کیا گیا تھا کہ مردوں اور خواتین جسمانی طور پر سست ہوچکے ہیں جبکہ جسمانی وزن اور پیٹ اور کمر کے ارگرد چربی بڑھنے لگی ہے۔ایک تحقیق میں بتایا گیا کہ جسمانی طور پر کم سرگرم رہنا جسمانی وزن میں کمی لانے پر بھی پیٹ اور کمر کے گرد چربی میں اضافے کا باعث بنتا ہے۔

پروٹین والی غذاؤں سے گریز

غذائی پروٹین جسمانی وزن میں اضافے کی روک تھام کے لیے چند اہم ترین عناصر میں سے ایک ہے۔پروٹین سے بھرپور غذائیں زیادہ دیر تک پیٹ بھرنے کا احساس برقرار رکھتی ہیں، میٹابولک ریٹ تیز اور کم کیلوریز کو جسم کا حصہ بنانے میں مدد دیتی ہیں۔اس کے مقابلے میں اگر غذا میں پروٹین کی مقدار کم ہو تو طویل المعیاد بنیادوں پر توند کی چربی میں اضافے کا امکان ہوتا ہے۔متعدد تحقیقی رپورٹس میں بتایا گیا کہ جو لوگ زیادہ مقدار میں پروٹین کا استعمال کرتے ہیں ان میں پیٹ اور کمر کے ارگرد اضافی چربی کا امکان بھی کم ہوتا ہے۔چکن، انڈے، مکئی، مچھلی، آلو، گوبھی، گائے کا گوشت، جو، دالیں، امرود۔ مٹر، چنے، بادام، دودھ، پستے میں پروٹین کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے، جن کو آسانی سے غذا کا حصہ بھی بنایا جاسکتا ہے۔

شہیدوں کوانصاف کب ملے گا؟؟؟سانحہ ماڈل ٹاؤن کو سات سال بیت گئے

/

لاہور:: سانحہ ماڈل ٹاؤن کو سات سال بیت گئے۔ عوامی تحریک آج پینسٹھ شہروں میں احتجاجی ریلیاں نکالے گی۔

احتجاج، دھرنوں اور قانونی جنگ کے باوجود سانحہ ماڈل ٹاؤن کے شہدا کے ورثا آج بھی انصاف کے منتظر ہیں۔ تحقیقات کے لیے بنائی گئی جے آئی ٹیز نے رپورٹ بھی جمع کرائی لیکن تاحال کیس عدالت میں زیر سماعت ہے۔17 جون 2014 کو منہاج القرآن کے مرکزی سیکرٹریٹ سے سکیورٹی بیرئیر ہٹانے کے لئے آپریشن ہوا۔ اس دوران پولیس کی جانب سے سیدھی گولیاں چلائی گئیں جس میں 2 خواتین سمیت 14 افراد جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہوئے۔واقعے کے چند روز بعد مقامی پولیس کی مدعیت میں ایف آئی آر درج ہوئی اور انصاف کے حصول کیلئے عوامی تحریک نے لاہور سے اسلام آباد مارچ بھی کیا۔ مقدمہ میں اس وقت کے وزیراعظم نواز شریف، وزیر اعلی شہباز شریف، خواجہ سعد رفیق، رانا ثناء اللہ، آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا اور ڈی سی او کو نامزد کیا گیا۔حکومتی شخصیات اور افسران کو بھی نامزد کیا گیا لیکن تاحال کسی بھی ملزم کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی جا سکی۔

کے الیکٹرک کے غیرقانونی گرڈ اسٹیشن کو دو ماہ میں ختم کرنے کا حکم

//

کراچی: ویب ڈیسک ::سپریم کورٹ نے کے الیکٹرک کے غیرقانونی گرڈ اسٹیشن کو دو ماہ  میں ختم کرنے کا حکم دے دیا۔

 سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں محمود آباد گرڈ اسٹیشن کے خلاف شہری کی درخواست پر سماعت ہوئی،  درخواست گزار کے وکیل شعاع النبی ایڈووکیٹ نے عدالت میں مؤقف پیش کیا کہ پی ای سی ایچ ایس فیز 6 محمود آباد میں 10 ایکٹر گرین بیلٹ کے لیے مختص ہے، پی ای سی ایچ ایس سوسائٹی نے گرین بیلٹ کے الیکٹرک کو دے دی، جب کہ گرین بیلٹ کا پی ای سی ایچ ایس سوسائٹی سے کوئی تعلق نہیں، گرین بیلٹ کے ایم سی کی ملکیت ہے۔

عدالت نے محمود آباد کے الیکٹرک گرڈ اسٹیشن کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے حکم دیا کہ کے الیکٹرک گرین بیلٹ پر قائم گرڈ اسٹیشن دو ماہ میں ختم کرے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ محمود آباد کے الیکٹرک گرڈ اسٹیشن گرین بیلٹ پر قائم ہے، دو ماہ کے اندر اندر کے الیکٹرک گرڈ اسٹیشن کو گرین بیلٹ سے ہٹایا جائے۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ گرین بیلٹ کو کمرشل سرگرمی کے لیے استعمال کی اجازت نہیں دے سکتے۔ عدالت نے کے ایم سی کو گرین بیلٹ کی اصل پوزیشن بحال کرنے اور کے ایم سی کو ہی گرین بیلٹ پر پارک بنانے کی بھی ہدایت کردی۔

امریکا کے مشہور گرم مقام ڈیتھ ویلی میں درجہ حرارت (54)چوون ڈگری تک پہنچ گیا

/

واشنگٹن:  امریکا کے مشہور گرم مقام ڈیتھ ویلی میں درجہ حرارت 54 ڈگری تک پہنچ گیا۔

امریکا اور روس کے صدور کی ملاقات ، دخل کیے گئے سفارت کاروں کو واپس بھیجنے پر رضا مندی

/

واشنگٹن :: امریکا اور روس کے درمیان برف پگھل گئی۔ دونوں ملکوں کے صدور کی جنیوا میں اہم ملاقات ہوئی۔ دونوں ملک بے دخل کیے گئے سفارت کاروں کو واپس بھیجنے پر رضا مند ہو گئے۔

پیوٹن نے کہا بائیڈن کے ساتھ بات چیت تعمیری رہی۔ بائیڈن کا کہنا ہے پیوٹن جانتے ہیں اگر اب سائبر حملہ ہوا تو امریکا سخت ردعمل دے گا۔ اگر روسی اپوزیشن رہنما ناوالنی کی زیر حراست موت ہوئی تو نتائج تباہ کن ہوں گے۔