Daily archive

June 09, 2021

شملہ مرچوں کے ناقابل یقین فوائد پر ایک نظر

/

ویب ڈیسک :: کیپسیکم ایک مزےدار مرچ ہے۔ اس کی خوشبو کھانے کے ذائقہ میں اضافہ کرتی ہے اور عام طور پر پیلے ، سبز اور سرخ رنگ میں پائی جاتی ہے۔ یہ مختلف قسم کے کھانے میں استعمال ہوتا ہے۔ اس ویجی کو مختلف قسم کی ویجیوں اور کیما بنایا ہوا گائے کے گوشت کے ساتھ بھی پکایا جاتا ہے۔
آسانی سے جانے والا کیپسکیم مسالہ دار نہیں ہے ، اس طرح یہ بچوں اور بڑوں دونوں کے ذریعہ کھا سکتے ہیں۔ یہ خاص طور پر اس کے رنگ اور ذائقہ کی وجہ سے مشہور ہے۔ تاہم ، یہ متعدد فوائد پیش کرتا ہے۔
. کینسر کے خطرے کو کم کرتا ہے
کیپسیکم کینسر کے خطرے کو کم کرتا ہے کیونکہ اس میں سوزش سے بھرپور غذائی اجزاء اور اینٹی آکسیڈینٹس ہوتے ہیں۔ کیپسیکم کے روغن لائکوپین میں بھی گریوا ، پروسٹیٹ ، لبلبے اور مثانے کے کینسر کے واقعات کو کم کرتے دکھایا گیا ہے۔ کیپسیکم کے انزائم oesophagal اور گیسٹرک کینسر کی روک تھام میں بھی مدد کرتے ہیں۔
. دل کی صحت کے لئے مفید ہے
کیپسیکم میں لائکوپین کی مقدار زیادہ ہے ، ایک فائیٹن نیوٹرینٹ جو دل کی صحت کو بہتر بناتا ہے ، نیز غذائی فولٹ اور وٹامن بی 6 ، جو ہومو سسٹین کی سطح کو کم کرکے دل کی مدد کرتا ہے۔ حالت ہونے کا خطرہ کم ہے۔ اینٹی آکسیڈینٹس بھی موجود ہیں ، جو جسم کو آزاد ریڈیکلز سے بچاتے ہیں۔
. بھرپور اینٹی آکسیڈینٹ
کیپسیکم میں پائے جانے والے اینٹی آکسیڈینٹس جسم کو آزاد ریڈیکلز اور ان کے ہونے والے نقصان سے بچاتے ہیں۔ آپ کے جسم میں خون کی رگوں کو آزاد ریڈیکلز کے ذریعہ نقصان پہنچا ہے۔ آزاد ریڈیکلز اور مختلف بیماریوں کے علاج کے خلاف جنگ میں کیپسیکم مدد کرتا ہے۔
استثنی کو بڑھاتا ہے
اس سبزی کا وٹامن سی ہماری قوت مدافعت کو بڑھاتا ہے ، جبکہ یہ سوجن کو بھی کم کرتا ہے۔ مرچ مرچ میں وٹامن کے بھی ہوتا ہے ، جس سے مختلف قسم کے صحت کے فوائد ہوتے ہیں۔
. انیمیا سے نجات
کیپسیکم میں وٹامن سی اور دیگر غذائیت کی مقدار زیادہ ہوتی ہے جو جسم میں خون کی کمی کو بہتر بنانے کی صلاحیت میں مدد فراہم کرتی ہے۔ ماہرین نے مشورہ دیا ہے کہ اگر آپ کو آئرن کی کمی ہے تو آپ کو سرخ مرچ مرچ کا استعمال کرنا چاہئے

۔قوت مدافعت کو بڑھاتا ہے
اس سبزی کا وٹامن سی ہماری قوت مدافعت کو بڑھاتا ہے ، جبکہ یہ سوجن کو بھی کم کرتا ہے۔ مرچ مرچ میں وٹامن کے بھی ہوتا ہے ، جس سے مختلف قسم کے صحت کے فوائد ہوتے ہیں۔

یوریک ایسڈ خاموش قاتل، جسم کو یوریک ایسڈ سے پاک کرنے والی غذائیں کونسی ہیں ؟

/

 ویب ڈیسک ::یوریک ایسڈ خاموش قاتل ہے اور عام طور پر لوگوں کو پتہ نہیں چلتا کے جسم میں یوریک ایسڈ بڑھ رہا ہے ہائپرورسیمیا جسم میں یوریک ایسڈ بڑھنے کی ایک خطرناک بیماری ہے جو دل گُردوں جگر وغیرہ کو متاثر کرنے کیساتھ ساتھ ہائی کولیسٹرول اور شوگر جیسی خطرناک بیماریوں کا باعث بنتی ہے جب کوئی اس بیماری کا شکار ہوتا ہے تو عام طور پر اُسے بلکل احساس نہیں ہوتا کہ وہ ہائپرورسیمیا کو شکار ہو رہا ہےہمارے جسم میں یوریک ایسڈ کی نارمل مقدار جو کہ 2.4 سے لیکر 6.0 ایم جی تک ہے ہر وقت موجود ہوتی ہے اور جو یوریک ایسڈ زیادہ مقدار میں ہوتا ہے وہ عام طور پر پیشاب کے راستے خارج ہو جاتا ہے مگر اگر اس کی مقدار جسم میں بڑھ جائے تو پھر یہ خون میں شامل ہوکر جسم کے اہم اعضا کو شدید نقصان پہنچاتا ہے اور خطرناک بیماریوں کا باعث بنتا ہےخون میں پیورائنز بھی یوریک ایسڈ پیدا کرتے ہیں یہ جسم کے اندر خود بخود بھی پیدا ہوتے ہیں اور ہمارے بہت سے کھانے بھی پیورائنز کی زیادہ تعداد پر مشتمل ہوتے ہیں

جن سے جسم میں یوریک ایسڈ کی مقدار بڑھ جاتی ہے یہ پیورائنز خون میں شامل ہوکر ٹُوٹ جاتے ہیں اور یوریک ایسڈ میں بدل جاتے ہیں اور جب ہمارے جسم کا یوریک ایسڈ لیول 7.0 ایم جی سے اوپر جاتا ہے تو یہ یوریک ایسڈ تباہی پھیلانا شروع کرتا ہے یہ گُردوں میں پتھری بننے کا سبب بنتا ہے اور ہڈیوں کے جوڑوں کو متاثر کرتا ہے اور مریض جوڑوں کے درد میں مُبتلا ہو جاتا ہے عام طور پر یہ یوریک ایسڈ پاؤں اور اُنگلیوں کے جوڑوں کو متاثر کرتا ہےکھانے جو یوریک ایسڈ بڑھاتے ہیں
سُرخ گوشت گُردے کپورے مغز وغیرہ میں پیورائن کی بڑی مقدار شامل ہوتی ہے جو خون میں شامل ہوکر یوریک ایسڈ بڑھناے کا باعث بنتی ہےایسے کھانے جس میں خمیر (خمیری روٹی وغیرہ) کا استعمال کیا جاتا ہے یا ایسے مشروبات جس میں اس کو شامل کیا جاتا ہے اپنے اندر پیورائن کی ایک بڑی مقدار رکھتے ہیں اور جسم میں یوریک ایسڈ بڑھانے کا باعث بنتے ہیں بعض سبز پتوں والی سبزیاں جیسےپالک گوبھی وغیرہ اور دالیں چنے ڈرائی فروٹ کیساتھ ساتھ مشرومز بھی جسم میں یوریک ایسڈ پیدا کرتے ہیں
کھانے جو یوریک ایسڈ کا لیول کم کرتے ہیں
ہمارے بہت سے کھانے ایسے ہیں جو جسم کو یوریک ایسڈ سے پاک کرتے ہیں جن میں سر فہرست کھانے یہ ہیں
سیب:
سیب کے اندر میلک ایسڈ کی ایک بڑی مقدار شامل ہوتی ہے جو جسم میں یوریک ایسڈ کو خارج کرنے میں انتہائی مدد گار ہے اس کے علاوہ 100 گرام سیب میں صرف 14 ملی گرام پیورین شامل ہوتی ہے جو کھانے کیساتھ یوریک ایسڈ بڑھنے کے چانسز کو کم کرتی ہے
لیموں:
لیموں وٹامن سی بھرپور ہوتا ہے اوروٹامن سی یوریک ایسڈ کے کرسٹلز اور خُون میں شامل دیگر آلودگی کو صاف کرنے میں انتہائی مددگار ہےچیری:
جسم میں یوریک ایسڈ کم کرنے کے لیے چیری بہترین فوڈ ہے چیری کے اندر ایسے عناصر پائے جاتے ہیں جو جسم میں اور خاص طور پر ہڈیوں کے جوڑوں میں یوریک ایسڈ کو کرسٹلز کی شکل اختیار کرنے سے روکتے ہیں اور جسم میں سے اس کو خارج کرنے میں مدد کرتے ہیں
گاجر:
جو افراد یوریک ایسڈ کی بیماری کا شکار ہوں اُنہیں روزانہ ہر کھانے کیساتھ گاجر ضرور کھانی چاہیے کیونکہ یہ جسم سے آلودگی سمیت یوریک ایسڈ کو خارج کرنے میں کسی اکسیر سے کم نہیں
اجوائن:
اجوائن کے بیج اومیگا 6 فیٹی ایسڈ سے بھرپور ہوتے ہیں اور ہمارے جسم کی صحت کے لیے انتہائی مُفید ہیں یہ جہاں نظام انہضام کی صفائی کرتے ہیں وہاں یہ جسم کو یوریک ایسڈ سے پاک کرنے میں اکسیر کا درجہ رکھتے ہیں
کھانے جن میں پیورائن کم ہوتی ہے اور یوریک ایسڈ پیدا نہیں کرتےریفائینڈ سیریلز روٹی پاستا دودھ اور دودھ سے بنے کھانے سلاد کے پتے ٹماٹر سبز رنگ والی سبزیاں گوشت کی یخنی فروٹ جوسز اور خاص طور پر پانی پھل وغیرہچیری:
جسم میں یوریک ایسڈ کم کرنے کے لیے چیری بہترین فوڈ ہے چیری کے اندر ایسے عناصر پائے جاتے ہیں جو جسم میں اور خاص طور پر ہڈیوں کے جوڑوں میں یوریک ایسڈ کو کرسٹلز کی شکل اختیار کرنے سے روکتے ہیں اور جسم میں سے اس کو خارج کرنے میں مدد کرتے ہیں
چیری:
جسم میں یوریک ایسڈ کم کرنے کے لیے چیری بہترین فوڈ ہے چیری کے اندر ایسے عناصر پائے جاتے ہیں جو جسم میں اور خاص طور پر ہڈیوں کے جوڑوں میں یوریک ایسڈ کو کرسٹلز کی شکل اختیار کرنے سے روکتے ہیں اور جسم میں سے اس کو خارج کرنے میں مدد کرتے ہیں

Gout in big toe: How to identify, causes, and treatment

فلاحی ریاست کی جانب ایک اور قدم ,وزیراعظم عمران خان نے ون ونڈو احساس سنٹر کا افتتاح کر دیا

//

اسلام آباد :: وزیراعظم عمران خان نے ون ونڈو احساس سنٹر کا افتتاح کر دیا۔ وزیراعظم نے ون ونڈو کے مختلف شعبوں کا دورہ کیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے ستارہ مارکیٹ اسلام آباد میں پہلے ون ونڈو احساس سنٹر کا افتتاح کردیا۔ تقریب سے خطاب میں وزیراعظم نے کہا کہ یہ فلاحی ریاست کی جانب ایک بنیادی قدم ہے۔ اس پروگرام اور ہائر ایجوکیشن کمیشن کے تحت طالب علموں کو دی جانے والی سکالر شپس کو ایک ڈیٹا بیس پر لایا جائے۔ جب اعدادوشمار دستیاب ہوں گے تو اہداف کا تعین کرنے میں آسانی ہو گی۔

معاون خصوصی برائے سماجی بہبود و تخفیف غربت ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے وزیراعظم کو ون ونڈو سنٹر اور احساس ون ونڈو منصوبے پر بریفنگ دی۔ بتایا گیا کہ یہ پروگرام جدید ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ ہو گا جس کے تحت قابل اور ضرورت مند طالب علموں کو سکالر شپس بھی دی جائیں گی۔

انہوں نے بتایا کہ وہ ہر ضلع میں احساس ون ونڈو سنٹر قائم کرنے کے وزیراعظم کے وعدے کو عملی جامہ پہنائیں گی۔ اس پروگرام کے تحت قلیل مدت میں رجسٹریشن اور ریکارڈ دستیاب ہو گا۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے پودا بھی لگایا۔

. پاکستان اپنے آزمودہ دوست چین کے ساتھ تعلقات کو نہایت اہمیت دیتا ہے۔ کورونا ویکسین کی فراہمی پر چین کے شکر گزار ہیں۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ

//

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے چین کے سفیر نے ملاقات کی ہے۔ سپہ سالار نے کہا کہ پاکستان اپنے آزمودہ دوست چین کے ساتھ تعلقات کو نہایت اہمیت دیتا ہے۔ کورونا ویکسین کی فراہمی پر چین کے شکر گزار ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کورونا وبا کے خلاف جنگ میں چین کے تعاون کا شکریہ ادا کیا۔ سپہ سالار نے پاک چین سفارتی تعلقات کی 70 ویں سالگرہ کے موقع پر چین میں تقریب پر بھی مبارکباد دی۔اس موقع پر چینی سفیر نونگ رونگ نے خطے میں امن واستحکام کیلئے پاکستان کی مخلصانہ کوششوں کو سراہا اور افغان امن عمل میں پاکستان کی کوششوں کی بھی تعریف کی۔

پاپ کارن جسم میں بلڈ شوگر اور انسولین کو لیول پر رکھنے میں مدد کرتا ہے, تحقیق

/

ویب ڈیسک ::امریکن ڈائیبٹِک سوسائٹی کے مطابق پاپ کارن کا استعمال خطرناک خاموش بیماری ذیابطیس اور دل کے امراض سے تحفظ میں مدد فراہم کرتا ہےپاپ کارن میں موجود فائبر جسم میں بلڈ شوگر اور انسولین کو لیول پر رکھنے میں مدد کرتا ہے

اگر آپ ذیابطیس کے مریض ہیں تو آپ کو پاپ کارن کا ایک چھوٹا کپ اپنی روزانہ کی خوراک کا حصہ بنانا چاہیئے تا کہ آپ اپنے جسم میں بلڈ شوگر کے اتار چڑھاؤ سے محفوظ رہ سکیں۔پاپ کارن (مکئی) استعمال کی جانے والی ایک قدیم ،مکمل اور ہلکی پھلکی غذا ہے جسے بچے بڑے سب ہی بہت شوق سے کھاتے ہیں، پاپ کارن نہایت آسانی سے تیار ہو جانے والی غذا ہے جو صحت کے لئے انتہائی مفید ثابت ہوتی ہے-پاپ کارن میں وٹامنز، منرلز اور ڈائیٹری فائبر جیسے اہم غذائی اجزاء پائے جاتے ہیں اس کے علاوہ پاپ کارن میں پوٹاشیم، زنک، کاپر اور فاسفورس بھی اچھی مقدار میں موجود ہیں، اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور یہ غذا کیلوریز اور فیٹ میں کم ہونے کے ساتھ چینی اور سوڈیم کے بغیر ہوتی ہے۔

پاپ کارن میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس اور پولی فینولز دل سے متعلق امراض، بڑھتی عمر کے عوارض جیسے کہ ڈیمینشیا، الزائمر، نظر کی کمزوری، بالوں کا جھڑنا وغیرہ کے روک تھام میں اہم کردار ادا کرتے ہیں-تحقیق کے مطابق پاپ کارن میں سبزیوں اور پھلوں سے زیادہ اینٹی آکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں چونکہ پاپ کارن میں شوگر اور چکنائی کی مقدار نہیں پائی جاتی ہے، اس میں کیلوریز بھی بہت کم پائی جاتی ہیں، ایک چھوٹے سے پاپ کارن کے کپ میں صرف 30 کیلوریز ہو سکتی ہیں۔اس میں موجود فائبرآپ کی بھوک کو ایک طرف رکھ کر آپ کو خالی پیٹ ہونے کا احساس نہیں ہونے دیتا، وزن کم کرنے والوں کے لیے پاپ کارن ایک اچھی خوراک ہے، لیکن لوگ ذائقے کے لیے اس میں فیٹ، چینی اور سوڈیم شامل کر دیتے ہیں جو کہ فائدہ دینے کے بجائے وزن بڑھانے کا باعث بنتے ہیں۔

پاپ کارن میں پولی فینول نامی اینٹی آکسیڈنٹ ہوتا ہے جو جسم میں داخل ہوکر خلیوں کو نقصان پہنچانے والے عناصر کو روکتا ہے پاپ کارن کا ایک پیالہ کسی بھی شخص کو ایک دن میں درکار پولی فینول کا 13 فیصد فراہم کرتا ہے پاپ کارن کے اندر کا سخت حصہ جو دانتوں میں پھنس جاتا ہے یہی سخت حصہ پولی فینول اور ریشے کا سب سے بڑا ذریعہ ہوتا ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر مکئی کے دانوں کو مکھن، تیل یا نمک میں ڈال کر بھونیں تو اس کی غذائیت اور افادیت میں کمی آجاتی ہے اگر اسے بغیر کچھ ملائے بھونا اور کھایا جائے تو اس کے ایک پیالے سے ایک فرد کی پورے دن کی 70 فیصد غذائی ضرورت پوری ہو سکتی ہےفائبر سے بھرپور ہونے کے باعث پاپ کارن خون کی شریانوں سے تمام تر اضافی کولیسٹرول کو کم کرنے میں مدد دیتے ہیں، اس کے نتیجے میں دل بہتر طریقے سے کام کرتا ہے اور دل کے امراض اور اسٹروک وغیرہ سے بچاؤ ممکن ہوتا ہے پاپ کارن میں موجود فائبر قبض سے نجات دلاتا ہے-

کاروبار دو کی بجائے ایک دن بند رہیں گے ,این سی او سی کے بڑے فیصلے

//

ویب ڈیسک :: این سی او سی کے بڑے فیصلے سامنے آ گئے۔ کاروبار دو کی بجائے ایک دن بند رہیں گے۔

این سی او سی کے مطابق  ملک بھر میں کورونا سے بچائو کے لئے ویکسنیشن مہم 3 حصوں میں چلانے کا فیصلہ کرلیا گیا۔ ویکسین کا عمل سرکاری اور غیرسرکاری ملازمین کے لیے لازمی ہے۔ تمام ملازمین کو 30 جون تک کورونا ویکسینیشن لازمی کرانے کی ہدایت کی ہے۔ 11 جون سے 18 سال سے زائد عمر کے تمام شہری واک ان ویکسینیشن کروا سکیں گے۔ ویکسینیشن سینٹرز کو اتوار کی بجائے جمعہ کو کھلا رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔ 11 جون سے تمام ویکسینیشن سینٹرز 8 بجے سے رات 10 بجے تک کھلے رہیں گے۔ ویکسینیشن سرٹیفیکیٹس کی تصدیق کے لیے جون کے آخر تک آئی ٹی طریقہ کار اپنایا جائے گا۔

این سی او سی نے کاروباری پابندیوں میں نرمی کر دی۔ کاروبار 2 دن کے بجائے ایک دن بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ دن کا فیصلہ تمام صوبائی اکائیاں خود کرینگی۔ ان ڈور جم کو کھولنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ جم کے تمام ممبرز کے لیے ویکسیشن لازمی ہو گی۔ مخصوص نان کنٹیکٹ سپورٹس پر پابندی ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مزارات اور سیمینار پر عائد پابندی برقرار رکھنے کا فیصلہ  کیا گیا ہے ۔ 50 فیصد سٹاف کے گھر سے کام کرنے کی پالیسی اور  ہفتے میں دو روز بین الالصوبائی ٹرانسپورٹ پر پابندی ختم کر دی گئی ہے۔ پبلک ٹرانسپورٹ پر 50 فیصد گنجائش کو 70 فیصد تک بڑھا دیا گیا ہے جبکہ  ماسک پہننے کے حوالے سے این سی او سی کی دیگر پابندیوں کو برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

صرف ایک منٹ کی جاپانی ورزش کی مدد سے آنکھوں کے گرد موجود جھریاں کم کریں

/

ویب ڈیسک :: آج کل ہر مرد اور خاتون کا مسلہ ہے کہ آنکھوں کے نیچے ہلکے یا  جھریاں  ہے جسکے لئے مہنگے مہنگے علاج  بھی کرائے جاتے ہیں ،عمر بڑھی نہیں اور اثرات چہرے پر ظاہر ہونا شروع ہوجاتے ہیں۔ بلکہ آج کل تو سورج کی مضر شعاعوں اور کیمکیل زدہ اشیاء کے مسلسل استعمال کی وجہ سے چہرہ وقت سے پہلے ہی جھریوں کا شکار ہوجاتا ہے جس میں سب سے زیادہ جو حصہ نمایاں طور پر متاثر ہوتا ہے وہ ہماری آنکھیں ہیں۔ آنکھیں ہی وہ حصہ ہیں جہاں جھریاں سب سے زیادہ گھر بناتی ہیں

اس لئے ہم آپ کو آنکھوں کے گرد جھریاں ختم کرنے کی آسان ترین جاپانی ورزش بتارہے ہیں جنھیں مسلسل کرنے سے آپ کی آنکھیں پہلے کی طرح خوبصورت اور جھریوں سے پاک ہوجایئں گی۔ سب سے اچھی بات یہ ہے کہ آنکھ کی یہ تمام ورزشیں کرنے میں ایک منٹ سے بھی کم وقت لگتا ہے۔ تو پھر چلیے دیر کس بات کی
 آنکھوں کے کنارے پنجوں کے نشان (کرو فیٹ)
آنکھوں کے کنارے کچھ اس قسم کے نشان بن جاتے ہیں جن کو کووے کے پنجوں سے مماثلت کی وجہ سے “کرو فِیٹ“ کہا جاتا ہے۔ ان کو ختم کرنے کے لئے اپنی انگلیاں نشانات کے کنارے رکھیں اور ہلکے سے دباتے ہوئے اوپر کی جانب ہاتھ لے جائیں اور تین بار یہ عمل کریں۔ روانہ یہ ورزش دن میں تین بار دہرائیں
 آنکھوں کے نیچے لائینز
آنکھوں کے نیچے نمودار ہونے والی لایئنز کو کم کرنے کے لئے اپنی شہادت کی انگی، بڑی اور تیسری انگلی کو ان لائینز پر رکھیں اور دس سیکنڈ تک ہلکے سے دبائے رکھیں پھر چھوڑ دیں۔ بہترین نتائج کے لئے یہ ورزش دن میں تین بار دہرایئں
 آنکھوں کے نیچے سوجن
آنکھوں کے نیچے سوجن یا ڈھلکی ہوئی جلد ختم کرنے کے لئے اس جلد کو بیچ کی تین انگلیوں سے ہلکے سے دبائیں اور دھیرے دھیرے چند سیکنڈز اوپر نیچے گھمائیں اور چھوڑ دیں اور پھر ایسا ہی کریں۔ یہ ورزش بھی دن میں تین بار انجام دینے سے بہترین نتائج سامنے آتے ہیں

ملک میں‌ تین ہزار جعلی ادویات کی فیکٹریوں کا انکشاف 

//

 ویب ڈیسک :::پاکستان میں تین ہزار سے زائد جعلی ادویات بنانے والی فیکٹریوں کا انکشاف ہوا ہے . سب سے زیاد فیکٹریاں سندھ دوسرے نمبر پنجاب تیسرے نبمبر پر کے پی کے اور چوتھے نمبر پر بلوچستان میں ہیں . جعلی ادویات بنانے والی فیکٹریوں میں‌ بھارت ، ایران اور چائنہ سے سمگل کیا گیا سب کم قیمت خام میٹریل استعمال کیا جارہا ہے .

سینئر صحافی نے اپنی خصوصی رپورٹ میں بتایا کہ جعلی ادویات کی بڑی مارکیٹوں میں لاہور میں لوہاری مارکیٹ پشاور میں صدر بازار ، کراچی میں ایم اے جناح روڈ پر میڈیسن کی ہول سیل مارکیٹ سکھر حیدرآباد ، بلوچستان میں بڑی مارکیٹیں موجود ہیں .رپورٹ میں‌کہا گیا ہے کہ جعلی ادویات کی فیکٹرویوں میں سے 35 فیصد موجودہ اور سابق ارکان اسمبلی ، پندرہ فیصد ڈاکٹرز اور اکیس فیصد ایسے افراد کی ہیں‌جو خود صرف مختلف ہسپتالوں کے مالک ہیں‌، بلکہ انہوں نے انہیں‌ میڈیسن کے مشہور برانڈ کے ناموں کے ساتھ ملا کر بیچنا شروع کیا ہے .پرائیویٹ ہسپتالوں کے ساتھ ساتھ اکثر سرکاری ہسپتالوں میں‌ یہ جعلی میڈیسن استعمال کی جا رہی ہیں اور جعل سازی سے بچنے کے لیے اندر ناقص میٹریل سے تیار کردہ ادویات اور باہر کسی اور برانڈ کا لیبل لگا رکھا ہے. طاقت کے انجیکشن اور اینٹی بائیوٹکس کے انجیکشن زیادہ تعداد میں جعلی تیار رہے ہیں‌. اسی طرح کھانسی کے شربت جس میں نشہ آور کیمیکل ڈالا گیا ہوتا ہے یہ بھی بڑی تعداد میں تیار کر کے فروخت کیا جارہا ہے .

ان جعلی فیکٹروں کے خلاف کچھ عرصہ کے لیے پنجاب میں آپریشن شروع ہوا تھا مگر بااثر مافیا نے اس کو بھی رکودیا . یہ جعلی ادویات افغانستان بھی جاتی ہیں‌. جبکہ پاکستان کے ستر فیصد کے دیہی علاقوں میں یہی ادویات استعمال ہوتی ہیں‌.میڈیکل سٹور ان ادویات سے بھرے پڑے ہیں بااثر مافیا جو اس کام میں‌ملوث ہے

آفرز ہوئیں لیکن’محب وطن‘ ہونے کی وجہ سے بھارتی فلموں میں کام نہیں کیا

/

ویب ڈیسک ::ہر دل  عزیزاداکارہ و ماڈل ایمان علی نے انکشاف کیا ہے کہ ماضی میں انہیں بھارت سے کام کرنے کی متعدد بار پیش کش ہوئی مگر انہوں نے ’محب وطن‘ ہونے کی وجہ سے وہاں کام سے انکار کردیا۔سال 2019 میں بھارتی عزائم کو خاک میں ملاتے ہوئے شہادت پانے والے پاک فوج کے افسر شہید میجرعزیز بھٹی کے پوتے بابرعزیز بھٹی سے شادی کے بندھن میں بندھنے والی اداکارہ کے مطابق وہ شروع سے ہی ’محب وطن‘ ہیں اور اسی وجہ سے ہی انہوں نے فوجی خاندان میں شادی کی۔

واسع چوہدری کے پروگرام ’گھبرانا منع ہے‘ میں بات کرتے ہوئے ایمان علی نے انکشاف کیا کہ ماضی میں جب وہ بھارتی دورے پر گئی تھیں تو انہیں متعدد فلم سازوں نے کام کی پیش کش کی۔ایمان علی کے مطابق انہیں فلم ساز امتیاز علی اور وشال بھردواج نے بھی کام کی پیش کش کی مگر انہوں نے پہلی بار ہی فلموں کی کہانی سنے بغیر ہی ان سے معذرت کی۔
اداکارہ نے بتایا کہ ایک تو انہوں نے ’محب وطن‘ ہونے کی وجہ سے بھارتی فلم سازوں کے ساتھ کام سے انکار کیا، دوسرا یہ کہ انہیں معلوم تھا کہ دونوں فلم سازوں کی فلمیں بولڈ ہوتی ہیں، اس لیے انہوں نے ان کے ساتھ کام سے معذرت کی۔پروگرام میں ایمان علی نے یہ انکشاف بھی کیا کہ انہوں نے پاکستان کی بھی متعدد سپر ہٹ فلموں میں کام کرنے سے انکار کیا، کیوں کہ انہیں تمام فلموں میں ہیروئن کے کردار پسند نہیں آئے

۔ایمان علی نے بتایا کہ انہیں ’جوانی پھر نہیں آنی، نامعلوم افراد، پنجاب نہیں جاؤں گی، کراچی سے لاہور اور آزادی‘ سمیت دیگر فلموں میں کام کی پیش کش ہوئی تھی مگر انہوں نے انکار کردیا۔ایک سوال کے جواب میں ایمان علی نے بتایا کہ بابر عزیز بھٹی سے شادی سے قبل ہی ان کے درمیان تعلقات استوار ہوگئے تھے۔انہوں نے اعتراف کیا کہ شادی کے بعد ان کی زندگی بہتر اور اچھی بن گئی ہے اور اب وہ ہر وقت انجوائے کرتی ہیں۔سوشل میڈیا کم استعمال کرنے کے معاملے پر بات کرتے ہوئے ایمان علی نے بتایا کہ دراصل انہیں محسوس ہوتا ہے کہ وہ خوبصورت نہیں ہیں اور ان کا چہرہ ہر وقت سیلفی نکالنے جیسا نہیں۔ایمان علی کے مطابق وہ جب بھی سیلفی نکالنے کی کوشش کرتی ہیں، تب انہیں محسوس ہوتا ہے کہ ان کی شکل کسی ’مخنث‘ شخص جیسی ہے، اس لیے وہ سیلفی نہیں نکالتیں۔

اپنا چہرہ مخنث افراد جیسا نظر آنے کی وجہ سے سیلفی کم نکالتی ہوں، اداکارہ—اسکرین شاٹ

ایمان علی نے بابر عزیز بھٹی سے نومبر 2019 میں شادی کی تھی—اسکرین شاٹ/ یوٹیوب