Daily archive

May 14, 2021

معروف فنکار و مزاح نگار فاروق قیصر عرف انکل سرگم آج حرکت قلب بند ہونے سے 75 برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔

//

ویب ڈیسک :: معروف فنکار و مزاح نگار فاروق قیصر عرف انکل سرگم آج حرکت قلب بند ہونے سے 75 برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔

فاروق قیصر کے اہلخانہ نے ان کی موت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ معروف مزاح نگار کا انتقال آج حرکت قلب بند ہونے کی وجہ سے ہوا۔

ان کے پوتے حسنین فاروق قیصر نے بتایا کہ قیصر اقبال کافی عرصے سے دل کے عارضے میں مبتلا تھے، آج طبیعت خراب ہونے پر انہیں ہسپتال لے جایا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکے اور خالق حقیقی سے جا ملے۔

فاروق قیصر نے سوگواروں میں ایک بیٹا اور دو بیٹیاں چھوڑی ہیں۔

فاروق قیصر 31 اکتوبر 1945 کو لاہور میں پیدا ہوئے اور نیشنل کالج آف آرٹس سے تعلیم حاصل کی۔

وہ کالم نگار، ڈائریکٹر، کٹھ پتلی ساز، اسکرپٹ رائٹر اور وائس ایکٹر بھی تھے جبکہ انہوں نے بہت سی مزاحیہ کتابیں بھی لکھیں۔

اپنے استاد شعیب ہاشمی کو مشعل راہ سمجھنے والے فاروق قیصر کو 1970 میں پہلی مرتبہ اکڑ بکڑ کے ذریعے پاکستان ٹیلی ویژن پر متعارف کرایا گیا لیکن انہیں اصل شہرت 1976 میں ڈرامہ کلیاں میں اپنے کردار انکل سرگم سے ملی اور وہ راتوں رات شہرت کی بلندیوں پر پہنچ گئے۔

انکل سرگم ایک کٹھ پتلی کردار ہے جسے 1976 میں سرکاری ٹی وی پر نشر ہونے والے پاکستانی بچوں کے ٹی وی شو کلیاں میں پہلی مربتہ متعارف کرایا گیا اور اس کردار کو تخلیق کرنے کے ساتھ ساتھ آواز بھی فاروق قیصر نے اپنی ہی دی تھی۔

انکل سرگم اور ماسی مصیبتے کو پاکستان کی افسانی کٹھ پتلی جوڑی سمجھا جاتا ہے جبکہ کلیاں، پتلی تماشا اور سرگم ٹائم فاروق قیصر کے مشہور پروگرام تھے۔

فاروق قیصر کی فنی خدمات کے اعتراف میں 1993 میں صدارتی ایوارڈ سے بھی نوازا گیا تھا جبکہ رواں سال یوم پاکستان پر صدر مملکت عارف نے بھی خدمات کے اعتراف میں انہیں ستارہ امتیاز سے نوازا تھا۔

انہوں نے اسکالرشپ پر رومانیہ جا کر بھی تعلیم حاصل کی جبکہ یونیسکو کی جانب سے دو سال بھارت جا کر بھی تعلیمی خدمات انجام دیں۔

وزیر اعظم کا اظہار تعزیت

وزیر اعظم عمران خان نے فاروق قیصر کے انتقال پر دکھ و افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اہلخانہ سے تعزیت کی۔

انہوں نے کہا کہ فاروق قیصر محض ایک پرفارمر نہیں تھے بلکہ سماجی ناانصافیوں اور معاشرتی مسائل کے حوالے سے مستقل آگاہی بیدار کرتے رہتے تھے۔

 

کون کون سی گاڑیاں مہنگی ہونےوالی ہیں؟ جانیئے

//

ویب ڈیسک  ::عوام تیاری کرلیں اگر گاڑی لینے کا سوچ رہے ہیں تو خبر یہ ہے کہ گاڑیاں مہنگی ہونے والی ہیں ایک جانب گاڑیاں بنانے والوں نے عالمی منڈی میں خام مال کی قیمتوں کی اضافے کے باعث گاڑیاوں کی قیمت میں اضافے کا اندازہ ظاہر کیا ہے تو یکم مئی 2021 سے چین کی جانب سے 146 اقسام کی اسٹیل کی مصنوعات پر برآمداتی ٹیکس کی چھوٹ ختم ہونے سے لاگت پر دباؤ پڑا ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ ہفتے ایک تجزیاتی بریفنگ میں پاک سوزوکی موٹر کمپنی لمیٹڈ اور انڈس موٹر کمپنی نے گاڑیوں کی قیمت میں اضافے کا انتباہ دیا۔

ٹاپ لائن سیکیورٹیز کے قاضی ہادی نے کہا کہ پاک سوزوکی نے تجزیہ کاروں کو بتایا کہ ڈالر کے مقابلے روپے کے فرق کے سلسلے میں کمپنی شاید قیمتوں پر نظرِ ثانی کرے تاہم کورونا وائرس کی تیسری لہر بھی زیر غور ہے۔

بی ایم اے کیپٹل منیجمنٹ کے طحہٰ مدنی کے مطابق آئی ایم سی نے مالی سال کے ابتدائی 9 ماہ میں روپے کی قدر نے اشیا مثلاً اسٹیل، پلاسٹک ریسن، تانبے، ایلومینیئم وغیرہ کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کو پورا کردیا ہے۔

تاہم اگر اشیا کی قیمتیں مستحکم نہ ہوئی تو لاگت کو آگے پہنچانے کے لیے آئی ایم سی گاڑیوں کی قیمت میں اضافہ کرسکتی ہے۔

پنجاب کو کورونا وائرس کی مختلف اقسام کا سامنا , برطانوی قسم غالب

//

ویب ڈیسک ::محکمہ پرائمری اینڈ سیکریٹری ہیلتھ ڈپارٹمنٹ پنجاب نے برطانیہ کی ایک ویب سائٹ پر اپنی تازہ تحقیق اپلوڈ کی ہے جس کے مطابق پنجاب کو کورونا وائرس کی مختلف اقسام کا سامنا ہے جن میں برطانوی قسم غالب ہے۔

 رپورٹ کے مطابق مذکورہ تحقیق پنجاب پبلک ہیلتھ ریفرنس لیبارٹری (پی پی ایچ آر ایل) میں طبی اور صحت کے ماہرین اور وائرولوجسٹ نے کی۔

تحقیقی رپورٹ میں کہا گیا کہ فروری 2021 میں پی پی ایچ آر آیل نے جدید سیکوینسر نصب کیا تا کہ پاکستان میں(SARSCoV2) کے اثرات کو واضح کیا جاسکے جہاں ہم نے کووِڈ کیسز میں جین ٹارگٹ فیلیئر (جی ایف ٹی) کو اسکرین کرنے کی حکمت عملی تیار کی۔

تحقیق کے مطابق سانس کی شدید تکلیف والا سنڈروم کورونا وائرس 2 (SARSCoV2) وائرس ہے جو کووڈ 19 کا سبب بنتا ہے یعنی سانس کی وہ بیماری کو کووِڈ 19 عالمی وبا کی ذمہ دار ہے۔

فروری کے وسط میں پہلے مرحلے کے دوران وائرس کا رویہ، ڈبلیو آر ٹی اسٹرین اور مختلف نتائج کو سمجھنے کے لیے ٹارگٹڈ سیکوینسنگ انجام دی گئی۔

تحقیق میں ہدف بنائے گئے افراد میں پنجاب کے مختلف اضلاع سے مشتبہ کیسز شامل تھے۔

کن غلط چیزوں کا استعمال آپ کو جگر کے امراض میں مبتلا کرسکتا ہے؟ مزید پڑھیئے

/

ویب ڈیسک ::کن غلط چیزوں کا استعمال آپ کو جگر کے امراض میں مبتلا کرسکتا ہے؟  انسانی جسم میں غذا کو ہضم کرنے ، جسم سے زہریلے مواد کو نکالنے اور توانائی کے ذخیرے کیلئے جگر کا کردار کسی صورت نظرانداز نہیں کیا جاسکتا ہے۔

ہماری زندگی میں بظاہر عام سی نظر آنے والی چیزوں کے استعمال سے جگر کو مختلف بیماریوں کا سامنا ہوسکتا ہے جس میں ہیپاٹائٹس اے، بی اور سی سمیت دیگر جان لیوا بیماریاں شامل ہیں۔

اگر آپ جگر کی بیماریوں سے بچنا چاہتے ہیں تو ان چیزوں کے استعمال میں احتیاط برتیں۔

چینی

زیادہ میٹھا کھانے کا شوق آپ کو جگر کے امراض میں مبتلا کرسکتا ہے اس کے علاوہ ذیابیطس اور دیگر بیماریوں کا سبب بھی بن سکتا ہے۔

جگر ہمارے جسم میں موجود چینی کو چربی میں بدلنے کا کام کرتا ہے، غذا میں چینی کا ضرورت سے زیادہ استعمال جسم میں زیادہ چربی بنانے کا باعث بنے گا جوکہ جگر کے مرض میں مبتلا کرسکتا ہے۔

ایک تحقیق کے مطابق چینی جگر کیلئے الکحل جتنی نقصان دہ ثابت ہوسکتی ہے، چاہے آپ کا وزن متوازن ہی کیوں نہ ہو۔

ہربل سپلیمنٹس

عام طور پر لوگ ہربل سپلیمنٹس کا استعمال کرتے ہوئے یہ سوچتے ہیں کہ یہ کسی بھی قسم کے سائیڈ افیکٹس سے پاک ہوگا۔ تاہم تحقیق نے ثابت کیا ہے کہ ہربل سپلیمنٹس جگر کے کام کرنے کی صلاحیت کو متاثر کرسکتے ہیں، جس سے ہیپاٹائٹس اور جگر کے ناکارہ ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

بڑھا ہوا وزن

اگر آپ کا وزن زیادہ ہے تو خبردار ہوجائیں، اضافی وزن کا مطلب اضافی چربی ہے جوکہ جگر پر چڑھنے سے سوجن کا باعث بنے گی اور آپ جگر کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہوسکتے ہیں۔

وٹامن اے سپلیمنٹس

جسم میں وٹامن اے کی ضرورت کو پورا کرنے کیلئے سپلیمنٹس کا استعمال خطرناک ہوسکتا ہے اور یہ جگر کے مسائل کا باعث بن سکتا ہے، تاہم تازہ پھلوں اور سبزیوں کا استعمال آپ کو صحت مند رکھ سکتا ہے۔

سافٹ ڈرنکس

سافٹ ڈرنکس کا استعمال بھی جگر پر چربی چڑھانے کا باعث بن سکتا ہے جو کہ جگر کی صحت کیلئے خطرہ ہے۔

پین کلرز کا بہت زیادہ استعمال

پین کلرز یا دردکش ادویات کا زیادہ استعمال جگر کی خرابی کا باعث بن سکتا ہے، پین کلرز میں ایسے اجزاء ہوتے ہیں جن کی بہت زیادہ مقدار جگر کو نقصان پہنچاسکتی ہے۔