Khalid Maqbool Siddiqui

ہمیں حب الوطنی کے سر ٹیفکیٹ کی ضرورت نہیں ہے، خالد مقبول صدیقی

حیدرآباد جدت ویب ڈیسک :متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے کنوینرڈاکٹرخالدمقبول صدیقی نے کہاکہ مہاجربھی اتنے ہی محب وطن ہیںجتنا کہ دیگرقوموںکے لوگ محب وطن ہیں،ہمیںکسی کے سرٹیفکیٹ کی ضرورت نہیں ہے، سندھ میںبھی صوبہ بنایاجائے ،مردم شماری،حلقہ بندیوںکودرست کرنے کے لئے نئے سرے سے شہری علاقوںمیںدوبارہ مردم شماری کرائی جائے اورحلقہ بندیاںکی جائیں۔وہ ایم کیو ایم ضلع حیدرآبادکی طرف سے لطیف آبادنمبر7آٹوبھان روڈسے متصل قائدپارک میں کارکنوں کے اعزازمیںمنعقدہ عشائیے سے خطاب کر رہے تھے، اس موقع پر کنورنوید جمیل،ڈپٹی میئر حیدرآباد سہیل مشہدی،ظفرکمالی،مسعود محمود، سلیم رزاق اورظفرصدیقی اور دیگر بھی موجود تھے۔متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے کنوینرڈاکٹرخالدمقبول صدیقی نے کہاکہ پاکستان کومتحدرکھناہے توطاقت کے زورپرمتحدنہیںرکھاجاسکتا،انصاف وعدل سے ہی متحد رکھاجاسکتا ہے، انہوں نے کہا کہ پاکستان کومتحدومضبوط بناناہے تواس کی قیادت مہاجروںکے ہاتھوںمیںدینا ہوگی، انہوںنے کہاکہ جن حالات سے ایم کیوایم گزری تھی اورجوحالات ایم کیوایم پرگزررہے تھے جنتی منظم سازش کی جارہی تھی وہ سمجھ رہے تھے کہ ایم کیوایم اجڑرہی ہے لیکن ایم کیوایم سنوررہی تھی،ایم کیوایم کاکارکن حوصلوںسے کام کرتاہے اورکارکنان کے حوصلے آج بھی بلندہیں، انہوںنے کہاکہ ایک زمینی خداہوتے ہیںجومنصوبہ بندی کرتے ہیںاورایک خدائے زوجلال ہے جوسب سے بڑی ہستی ہے۔کامیابی قوم کے حوصلے ہوتی ہے اورقوم کے حوصلے بلندہیں،سازش تھی کہ آپ کوکم گناہ جائے تاکہ کم ہونگے توہرچیزکم ہوگی لیکن ایم کیوایم کودفن کرنے والے سیاسی طورپرخوددفن ہوگئے ہیں، انہوں نے کہا کہ کل ہمارے 24ارکان اسمبلی تھے لیکن کوئی ہماری بات نہیںسن رہاتھاآج صرف 7ہےں تو لوگوںکوہماری سننی پڑھ رہی ہے، انہوں نے کہا کہ آج بھی حکومت میںجانے کے باوجودہم اپنے ایک بھی مطالبے سے دستبردارنہیںہوئے ہیں،ہم قوم کوان کے صلب حکومت اوران کی نمائندہ کاحق،تعلیم کاحق،شناخت اورپہنچان کاحق ان سے چھیناجارہاہے ،آج بھی ہمارامطالبہ ہے کہ سندھ کے شہری علاقوںکی آبادکودوبارہ گناہ جائے،ہم اپنے اس مطالبے سے بھی دستبردارنہیںہوئے کہ ہماری نمائندگی کوکم کرکے 10اور20پرلیکرآئی ہے اوریہ مطالبہ بھی کے 70سال سے ایک مصنوعی اکثریت کوایک مستقبل بنادیاگیاہے اورمستقل اکثریت کواقلیت میںتبدیل کیاگیالہٰذاسندھ کے اندربھی صوبہ بنایاجائے تاکہ زیادتیوںکوختم اورکم کیاجاسکے، انہوں نے کہاکہ جب پاکستان قائم ہوا جب اس کی آبادی کروڑڈیڑھ کروڑسے زیادہ نہیںتھی آج 22کروڑہے،آئین کہتاہے کہ جب بھی ضرورت سمجھی جائے پاکستان میںزیادہ سے زیادہ صوبے قائم کیے جائیںاوریہی ہی ایم کیوایم کامطالبہ ہے،ہم چاہتے ہیںکہ پاکستان بھرمیںزیادہ سے زیادہ صوبے بنائے جائے تاکہ گڈگورنر ہو۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.