Radha Mitchell Rashida Jones Rebecca De Mornay Rebecca Hall Rebecca Pidgeon Rebekah Brandes Reese Witherspoon Renee Zellweger Rhona Mitra Rinko Kikuchi Rissa Walters Robin Wright Penn Romola Garai Ronni Ancona Rose McGowan Ruby Dee Rumer Willis Saffron Burrows Salli Richardson-Whitfield Sally Field Sally Kellerman Salma Hayek Sandra Bullock Saoirse Ronan Sara Niemietz Sara Paxton Sarah Bolger Sarah Brightman Sarah Michelle Gellar Sarah Paulson Sarah Roberts Scarlett Johansson Selma Blair Shannen Doherty Shannon Marie Woodward Sharon Stone Shawnee Smith Sherri Shepherd Sienna Miller Siobhan Fallon Hogan Sissy Spacek Sonya Walger Sophia Myles Sophie Okonedo Stacy Ferguson Stana Katic Susan Misner Susie Essman Suzanne Bastien Tamara Hope Tammy Blanchard Tara Gerard Taraji P. Henson Tasha Smith Teri Hatcher Teri Polo Terri J. Vaughn Thandie Newton Tilda Swinton Toni Collette Tracee Ellis Ross Traci Lords Tuva Novotny Uma Thurman Valeria Bruni Tedeschi Vanessa Ferlito Vanessa Viola Vera Farmiga Viola Davis Virginia Madsen Virginie Ledoyen Winona Ryder Zeta Jones Zooey Deschanel Zuleikha Robinson

کون کونسی ہیروئن جنسی درندگی کاشکار ہوئی‘تفصیلات جانئے

نیویارک جدت ویب ڈیسک ہالی وڈ فلم پروڈیوسر ہاروی وائنسٹن کے خلاف تقریباً 18 اداکاراؤں و خواتین نے جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا تھا، جب کہ 5 اداکاراؤں نے ان پر ’ریپ‘ کے الزامات بھی لگائے، جس کے بعد سوشل میڈیا پر ’می ٹو‘ نامی مہم کا آغاز ہوگیا۔ہاروی وائنسٹن کے خلاف جنسی طور پر ہراساں کرنے اور ’ریپ‘ جیسے سنگین الزامات لگانے والی اداکاراؤں، ماڈلز، گلوکاراؤں، فیشن ڈیزائنرز اور صحافیوں میں انجلینا جولی، ایشلے جڈ، جیسیکا بارتھ، کیتھرین کنڈیل، گوینتھ پالٹرو، ہیدر گراہم، روسانا آرکوئٹے، امبرا بٹیلانا، زوئے بروک، ایما دی کانس، کارا دیلوگنے، لوشیا ایونز، رومولا گرائے، ایلزبتھ ویسٹوڈ، جوڈتھ گودریچے، ڈان ڈیننگ، جیسیکا ہائنز، روز میکگوان، ٹومی این رابرٹس، لیا سینڈوئکس، لورین سوین اور مرا سرینو شامل ہیں۔

 

Harvey Weinstein sexual misconduct allegations   

اسی حوالے سے امریکی اداکارہ ایلسا میلانو نے ٹوئٹر پر ’می ٹو‘یعنی ’میں بھی‘ کے عنوان سے ایک ٹرینڈ کا آغاز کیا۔اداکارہ نے تمام خواتین سے درخواست کی کہ ’اگر آپ کو بھی کبھی کسی نے جنسی طور پر ہراساں کیا، یا آپ پر تشدد کیا ہے تو اپنے اسٹیٹس میں ’می ٹو‘ لکھیں، اس سے ہم لوگوں کو اس بات کا اندازہ دلا سکتے ہیں کہ یہ مسئلہ کتنا بڑا ہے۔اب تک لاکھوں کی تعداد میں خواتین اس ٹرینڈ کا استعمال کرتے ہوئے اپنے ردعمل کا اظہار کرچکی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.