بلوچستان اسمبلی چوک کے قریب پارکنگ میں دھماکہ ، 4افراد جاں بحق،9 زخمی

ویب ڈیسک: بلوچستان اسمبلی چوک کے قریب نجی ہوٹل کی پارکنگ میں دھماکہ ہوا ، دھماکے میں چار افراد جاں بحق اور 9 زخمی ہو گئے ۔

 دھماکا نجی ہوٹل کی پارکنگ میں ہوا، جس کے بعداطراف میں کھڑی گاڑیوں کو بھی آگ لگ گئی۔ سیکیورٹی فورسزنےعلاقےکو گھیرے میں لے  کر شہریوں کی آمد و رفت کو بند کردیا جبکہ بم ڈسپوزل اسکواڈ کا عملہ شواہد اکھٹے کرنے جائے وقوعہ پر پہنچا۔

اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ

پارلیمانی سیکریٹری صحت ربابہ خان بلیدی نے ہدایت کی کہ زخمیوں کو فوری علاج کی سہولیات فراہم کرنے کے لیے ہنگامی اقدامات اٹھائے جائیں۔ انہوں نے بتایا کہ  جائے وقوعہ پر آگ کے باعث ریسیکیو میں مشکلات کا سامنا ہے۔

ترجمان بلوچستان حکومت

بلوچستان حکومت کے ترجمان لیاقت شاہ وانی نے نجی ہوٹل کی پارکنگ میں ہونے والے دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے اسے افسوسناک قرار دیا۔ اُن کا کہنا تھا کہ دھماکےکی تحقیقات کررہے ہیں، کارروائی میں جو بھی دہشت گرد ملوث ہوا، اُس کےخلاف کارروائی کی جائے گی‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’دھماکاہوٹل میں نہیں بلکہ پارکنگ ایریامیں ہوا، جو ہوٹل سے کافی دور ہے، دھماکے میں 13 افراد زخمی ہوئے ہیں، اس ہوٹل میں وی آئی پیز اور وفد آتے رہتے ہیں‘۔ لیاقت شاہ وانی نے کہا کہ ’مہمانوں کی سیکیورٹی ہوٹل انتظامیہ کی ہوتی ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ ’بلوچستان میں امن قائم ہوگیا تھا جو دہشت گردوں کو ایک آنکھ نہ بھایا، دہشت گردماضی میں بھی نہیں بچے اور اب بھی نہیں بچیں گے‘

پولیس کے مطابق دھماکا نجی ہوٹل کی پارکنگ میں ہوا، جس کے بعداطراف میں کھڑی گاڑیوں کو بھی آگ لگ گئی۔ سیکیورٹی فورسزنےعلاقےکو گھیرے میں لے  کر شہریوں کی آمد و رفت کو بند کردیا جبکہ بم ڈسپوزل اسکواڈ کا عملہ شواہد اکھٹے کرنے جائے وقوعہ پر پہنچا۔

یاد رہے کہ سرینا ہوٹل  بلوچستان ہائی کورٹ اور بلوچستان اسمبلی کی عمارت کے قریب میں واقع ہے، جبکہ اس علاقے میں ایک اسلامی ملک کا سفارت خانہ بھی موجود ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.