SBCA KBCA ABAD Karachi

کراچی میں کثیرالمنزلہ عمارتوں کی تعمیر پر پابندی برقرار

کراچی جدت ویب ڈیسک سپریم کورٹ آف پاکستان نے شہر قائد میں کثیر المنزلہ عمارتوں کی تعمیر پر پابندی برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔منگل کوسپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے کثیر المنزلہ عمارتوں پر پابندی کے خلاف حکم امتناع کی درخواستیں مسترد کردیں۔ عدالت نے معاملے پر حکومتِ سندھ، کنٹونمنٹ بورڈ، کے پی ٹی، بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سمیت دیگر سے جواب طلب کرتے ہوئے مزید کارروائی آئندہ سماعت تک کے لئے ملتوی کردی۔کراچی میں عدالتی واٹرکمیشن کے حکم پر سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے کثیر المنزلہ عمارتوں کی تعمیر پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔ پابندی کیخلاف سپریم کورٹ میں تعمیراتی کمپنیوں کی تنظیم آباد اور دیگر کی درخواست پر سماعت ہوئی۔درخواست گزاروں کی جانب سے ملک کے نامور وکلا منیر اے ملک، عابد زبیری، فروغ نسیم اور دیگر پیش ہوئے، جنہوں نے موقف اختیار کیا کہ کثیر المنزلہ عمارات پر پابندی کے باعث کراچی میں تعمیراتی کام رک گئے ہیں اور تیار عمارتوں کی حوالگی کا کام بھی رکا ہوا ہے، لہذا پابندی ختم کی جائے۔وکلا نے پانی کے مسئلے کا حل پیش کرتے ہوئے کہا کہ بلند عمارتوں میں زیر زمین پانی کو آر او پلانٹ کے ذریعے قابلِ استعمال بنا کر رہائشیوں کو فراہم کریں گے، پانی سمیت تمام سہولیات فراہم کیے بغیر عمارتوں کی حوالگی کا سرٹیفیکٹ جاری نہیں کیا جانا چاہئیے، ایسے منصوبوں کی اجازت دی جائے جہاں زیر زمین پانی موجود ہے ۔ اس پر عدالت نے استفسار کیا کہ بتایا جائے کہ اب تک کتنی بلند عمارتوں میں سمندر کا پانی میٹھا کرکے فراہم کیا جارہا ہے، آپ تو بلڈنگ بناکر چلے جائیں گے پھر ٹی وی پر گالیاں دیتے رہیں گے کہ ججز کچھ نہیں کرتے اور نالائق ہیں۔ عدالت نے حکم امتناع کی درخواستیں مسترد کرتے ہوئے مزید سماعت ملتوی کردی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.