Mobile operator company

ٹیلی نار نے پلان انٹرنیشنل کے ساتھ اشتراک قائم کرلیا

کراچی جدت ویب ڈیسک ٹیلی نار پاکستان اور پلان انٹرنیشنل نے پاکستان میں ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے استعمال سے ’’سول رجسٹریشن آف وائٹل اسٹیٹکس  سی آر وی ایس ‘‘ منصوبے کے استحکام کے لیے باہمی اشتراک کے معاہدے پر دستخط کردیے ہیں جس کے تحت پیدائش اور اموات جیسے اہم واقعات کے اندراج اور تصدیق کے ذریعے صحت ، تعلیم ، سماجی بہبود، اور آبادی کے بڑے حصوں کے لیے دیگر اہم منصوبوں سے بھرپور فائدہ اٹھانے میں مدد فراہم کی جائے گی۔ پاکستان میں پانچ سال سے کم عمر کے تقریباً 70فی صد بچوں کی کوئی رجسٹریشن نہیں ہوئی جس کے باعث یہ بچے غیر محفوظ ہیں کیونکہ پیدائش کی سند نہ صرف بچے کو قانونی شناخت دیتی ہے بلکہ اسے تعلیم ، صحت ، وراثت میں حصہ کے علاوہ کم عمر ی کی مشقت، کم عمری کی شادی اور بطور بالغ قانونی کارروائی سے تحفظ فراہم کرتی ہے۔ اس منصوبے کا اطلاق سندھ کے ضلع سجاول اور ٹنڈو محمد خان اور پنجاب کے ضلع چنیوٹ کی 60یونین کونسلوں میں ہوگا۔ اس منصوبے کی بنیاد ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کے ذریعے ٹیکنالوجی کے جدت انگیز استعمال پر رکھی گئی ہے جس کے ذریعے ڈیٹا رپورٹنگ اور تجزیہ ، کارکردگی کی مینجمنٹ، شفاف اور تیز ترین ادائیگیاں، عوامی خدمت اور بنیادی شہری حقوق تک رسائی کو یقینی بنایا جائے گا۔اس نئے منصوبے میں مقامی حکومتی اداروں کے علاوہ تعلیم و صحت کے اداروں اور ٹیلی نار فرنچائزز سمیت اہم شراکت دار کو شریک کیا جارہا ہے تاکہ ان علاقوں کے تمام ممکنہ اہم مقامات پر پیدائش کے اندراج کی سہولیات فراہم کی جاسکیں۔ اس منصوبے کے تحت ان اضلاع میں اگلے سال 2018 کے اختتام تک پیدائشوں کے اندراج کے حجم میں اضافے کی امیدہے۔’’یہ منصوبہ بچوں کو شناخت کا حق فراہم کرکے انہیں تعلیم ، صحت اور دیگر ضروریات زندگی تک بہتر رسائی فراہم کرنے کی ہماری کوششوں کا تسلسل ہے۔ ‘‘ ٹیلی نار پاکستان کے سی ای او عرفان وہاب خان نے اس متعلق اظہار خیال کرتے ہوئے کہا۔’’مجھے امید ہے کہ یہ منصوبہ حکومت کواپنے مستقبل کے سماجی و معاشی بہبود کے منصوبوں کی بنیاد آبادی کے درست اعداد و شمار پر رکھ کر اس سے بہتر نتائج حاصل کرنے میں مدد دے گا۔اس کے علاوہ پلان انٹرنیشنل کے ساتھ ہمارا یہ اشتراک پاکستان کی مستقبل کی نسلوں کے لیے ایک بہتر کل کی بنیاد رکھنے کی ہماری مشترکہ کوششوں کو مضبوط کرے گا۔‘‘پلان انٹرنیشنل کے کنٹری ڈائریکٹر یوسف شامی کا کہنا تھا: ’’ہم ٹیلی نار پاکستان جیسے جدید ادارے کے ساتھ اشتراک پر نہایت مسرور ہیں جو ہماری ہی طرح پاکستانی عوام کی شمولیت کے فروغ کے اہداف کے حصول کے لیے سرگرم عمل ہے۔ ہم پاکستان میں پیدائشوںکے اندراج کے نظام کے اس انقلابی منصوبے کا حصہ ہونے پر فخر محسوس کررہے ہیں اور پرامید ہیں کہ وہ دن دور نہ ہوگا جب ہر پاکستانی کو تعلیم ، بنیادی صحت کی سہولیات، خوراک، روزگار، صاف پانی، صفائی اور تحفظ حاصل ہوگا۔ ہمارا اشتراک آبادی کے شمار کے نظام کی بہتری کے لیے کام کرے گا جس کے تحت نہ صرف لوگوں کے وجود کو تسلیم کیا جائے گا بلکہ تمام سطحوں پر مواقع کی یکساں تقسیم کو یقینی بنایا جائے گا۔ ‘‘

Leave a Reply

Your email address will not be published.