ٹھنڈے موسم میں سیاسی ماحول گرم،نئی کابینہ کا فیصلہ نہ ہوسکا

جدت ویب ڈیسک :نومنتخب وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے تاحال اپنی کابینہ تشکیل دینے میں ناکام رہے ہیں دوسری جانب سینٹرل ورکنگ اجلاس میں کلثوم نواز کو این اے 120 سے الیکشن لڑنے یا پارٹی کی سربراہی دینے پر بھی غور کیا جائے گا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شہبازشریف نے وزارتِ اعلیٰ کے منصب کو چھوڑ کر این اے 120 کی نشست پر الیکشن لڑنے پر تحفظات کا اظہار کیا ہے جس کے بعد این اے 120 سے کلثوم نواز کو الیکشن لڑانے پرغور کیا جا رہا ہے جب کہ مسلم لیگ (ن) نے نئی پارٹی قیادت کا انتخاب کرنے کے لیے سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا ہے جس کے ممکنہ امیدواروں میں شہباز شریف کے ساتھ کلثوم نواز بھی ہوں گی۔دوسری جانب ذرائع کا دعویٰ ہے کہ مسلم لیگ (ن) سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس آئندہ ہفتے مری میں منعقد کیا جائے گا جس میں این اے 120 کی نشست سے الیکشن لڑنے کے لیے کلثوم نواز کو ٹکٹ دینے پر غور کیا جائے گا۔لیگی ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنماء پارٹی صدارت کلثوم نواز کو دینے کے حق میں ہیں اس اجلاس میں پارٹی صدارت کے لیے بھی کلثوم نواز کا نام تجویز کیا جاسکتا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شہبازشریف کی وزارتِ اعلیٰ چھوڑنے سے پارٹی کو مزید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جبکہ کئی لیگی رہنماؤں کی خواہش ہے کہ کلثوم نواز کو حلقہ این اے 120 سے ٹکٹ دیا جائےتفصیلات کے مطابق کابینہ کی تشکیل کے لیے ڈونگا گلی میں ہونے والا طویل مشاورتی اجلاس تاحال جاری ہے تاہم پینتالیس دن میں پینتالیس مہنیوں کا کام کرنے کے دعویدار نئے وزیراعظم کابینہ کی تشکیل میں الجھ کررہ گئے ہیں اور تاحال کابینہ کی تشکیل کا معاملہ کھٹائی کا شکار نظر آتا ہے۔ذرائع کے مطابق اجلاس کے شرکاء کے ایک گروپ کا خیال ہے کہ پرانی کابینہ کو بحال رکھا جائے جب کہ دوسرے گروپ کی خواہش ہے کہ نئے وزراء کو شاملِ کابینہ کیا جائے اور مکمل طور پر نئی کابینہ تشکیل دی جائے جس میں نئے ابھرتے رہنماؤں کو کابینہ میں جگہ دی جائے۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.