ناک میں ورم کی تکلیف، علامات وعلاج

کراچی جدت ویب ڈیسک نزلے زکام کی وجہ سے ہونے والی تکالیف میں ناک کا ورم بہت پریشان کرتا ہے۔ یہ تکلیف بچوں کے علاوہ بڑوں کو بھی تنگ کرسکتی ہے۔ کم عمر یعنی ایک سال یا اس سے زیادہ عمر کے بچوں میں ناک کے ورم کی ایک وجہ سگریٹ کا دھواں بھی ہوتا ہے۔ امریکا کی یونیورسٹی آف سنسناتی میں ہونے والی تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ ماں یا باپ کی تمباکو نوشی کی وجہ سے بچے میں ناک کا ورم ہوجاتا ہے۔ تحقیق سے یہ بھی ثابت ہوا کہ ناک میں ورم الرجی کے بغیر بھی ہوسکتا ہے۔
امریکا میں تینتالیس فیصد بچے گھروں میں بھرے تمباکو کے دھویں سے اس کا شکار ہوتے ہیں۔یہی نہیں یہ دھواں سینے میں خرخراہٹ،دمے،کان کا ورم اور دردکا سبب بھی بن جاتا ہے۔ جو بچے بالکل نوعمری والدین کے شوق تمباکو نوشی کی وجہ سے تمباکو کا دھواں سونگھتے ہیں وہ آگے چل کر باربار نزلے زکام،کھانسی اور سانس وغیرہ کی تکالیف کا شکار رہتے ہیں۔
بنیادی علامات:۔
ناک کے ورم کی تین علامات بہت واضح ہوتی ہیں۔
۱۔ناک سے رطوبت خارج ہوتی ہے جس میں بو نہیں ہوتی۔
۲۔ناک سے بدبودار رطوبت خارج ہوتی ہے۔
۳۔مریض نتھنے بند ہونے کی وجہ سے نا ک کے بجائے منہ سے سانس لیتا ہے اور اس میں خرخراہٹ ہوتی ہے۔
اس کے علاوہ ناک میں گدگدی کا احساس ہوتا ہے اور چھینکیں بھی آتی ہیں۔ آواز کی نوعیت بدل جاتی ہے۔ ناک بند ہونے کی صورت میں یہ تبدیلی زیادہ نمایاں ہوتی ہے۔سونگھنے کی صلاحیت بھی متاثر ہوتی ہے۔ بعض مریض سر میں درد کے علاوہ چکر اوراعصابی بے چینی بھی محسوس کرتے ہیں۔ پیشانی دُکھتی ہے، آنکھیں ہروقت بوجھل رہتی ہیں اور مریض کوسردی لگتی ہے۔
علاج:۔
*طب میں بنیادی طورپر مریض کی قوت مدافعت کو مستحکم رکھنے کی کوشش کی جاتی ہے اور نزلے کے اثرات دور کرنے کی تدابیر کی جاتی ہیں۔ اس کے علاوہ مقامی طورپر ناک کا ورم اور چھوت کے اثرات دورکرنے کی تدبیر بھی کی جاتی ہے۔
*نزلے کے لیے لعوق سپستاں،لعوق معتدل چھ چھ گرام پانی میں ہلکا جوش دے کر پینا چاہیے۔اس میں لعوق سپستاں خیارشنبری کا استعمال بھی مفید ثابت ہوتا ہے۔
*قبض اور بھوک نہ لگنے کی صورت میں دوا المسک سادہ تین گرام اور جوارش جالینوس تین گرام ملاکر صبح استعمال کرنے سے فائدہ ہوتا ہے۔ غذا کے بعد قرص پودینہ دودو کھانا بھی مفید ہوتا ہے۔
*مقامی ورم اور چھوت دور کرنے کے لیے نیم گرم پانی میں تھوڑا سا کھانے کا نمک اور سہاگہ گھول کر اس سے ناک صاف کرنا مفید ہوتا ہے۔ اسی طرح نیم کے پتوں کے نیم گرم جوشاندے میں کھانے کا نمک ملاکر اس سے ناک دھونا بھی ایک مؤثر تدبیر ہے۔
*سوتے وقت سادہ پانی کو جوش دے کر اس کی بھاپ سونگھنے سے فوری طورپر بند ناک کھل جاتی ہے۔ اس پانی میں سفیدے کے پتے یا ان کا تیل یوکلپٹس آئل کے دوتین قطرے ٹپکا کر سونگھنے سے بھی بہت فائدہ ہوتا ہے۔ تکلیف پرانی ہونے کی صورت میں اطباء اطریفل اسطوخودوس تجویز کرتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.