Syed Ali Gilani

مسئلہ کشمیر کے عوامی امنگوں کے مطابق حل کے خواہاں ہیں، سید علی گیلانی

سرینگر جدت ویب ڈیسک :کل جماعتی حریت کانفرنس ”گ“ گروپ کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو ہمیشہ کشمیری عوام کی خواہشات اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے زوردیتے ہوئے افسوس ظاہر کیا ہے کہ بھارت مسلسل اپنی ہٹ دھرمی جاری رکھتے ہوئے جموںوکشمیر کو اپنا مسلسل اٹوٹ انگ قراردے رہا ہے ۔ سید علی گیلانی نے شہدائے شوپیان کے جنازے کے شرکاءسے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے شہید نوجوانوںکو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ شوپیاںمیں ایک جعلی مقابلے کے دوران چھ نوجوانوں کاقتل قطعاناقابل قبول ہے ۔ انہوںنے شہید نوجوانوں کے اہلخانہ سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے انہیں صبر و استقامت کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑنے کی اپیل کی۔ انہوںنے کہا کہ مقبوضہ علاقے میں جاری خونریزی بھارت کے جبری تسلط کا نتیجہ ہے اور نہتے کشمیری عوام بھارت کے غیر قانونی تسلط سے آزادی کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کررہے ہیں ۔ سیدعلی گیلانی نے جدوجہد آزادی کشمیر کو اسکے منطقی انجام تک جاری رکھنے اور ا س سلسلے میں کسی بھی قربانی سے دریغ نہ کرنے کے کشمیریوں کے عزم کا اعادہ کیا ۔ انہوںنے واضح کیاکہ ہم کسی بھی صورت میں خون خرابے کے قائل نہیں اور نہ ہی جنگ سے مسائل حل ہوں گے ،البتہ بھارت نے اپنے فوجیوں کو نہتے کشمیریوں کے قتل عام کی کھلی چھوٹ دے رکھی ہے ۔ انہیں اپنے خطاب میں لوگوں کو تلقین کی کہ وہ ہرحال میں موجودہ صورتحال سے نجات حاصل کرنے کےلئے انتخابی ڈھونگ کا مکمل اور صدق دل سے بائیکاٹ کریں۔انہوںنے عوام سے کہاکہ ہمیں بھارت کی ان کٹھ پتلیوں سے دوری اختیار کرنی چاہیے جو ووٹ اور سپورٹ کا سہارا لے کر ہمارے ہی خلاف بندوقوں کے دہانے کھول رہے ہیں ۔حریت چیئرمین نے واضح کیا کہ ہماری نہ توبھارتی عوام سے کوئی دشمنی ہے اور نہ ہم بھارت سے اس کا کوئی جائز حصہ چھیننے کی کوشش کررہے ہیں بلکہ ہم گزشتہ 71برس سے تمام مسائل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جس کےلئے خود بھارت نے عالمی ادارے سے رجوع کیا ہے ۔انہوںنے کہا کہ ہم مسئلہ کشمیر کا مذاکرات کے ذریعے پر امن حل چاہتے ہیں تاہم اس سے قبل بھارت کو جموںوکشمیر کی متنازعہ حیثیت تسلیم کرنا ہو گی ۔سید علی گیلانی نے کہا کہ آج تک سو سے زائد بارہونیوالے مذاکرات کے تمام دور بھارت کی ہٹ دھرمی پر مبنی رویہ کی وجہ سے ناکام ہو چکے ہیں ۔ انھوں نے مسئلہ کشمیر کو بھارت پاکستان کے درمیان کشیدگی کی بنیادی وجہ قراردیتے ہوئے کہاکہ جب تک بھارتی حکمران کشمیر کے اٹوٹ انگ ہونے کی رٹ نہیں چھوڑتے مسئلہ کشمیر کا دیر پا حل اور خطے میں پائیدار امن و سلامتی قائم نہیں ہوسکتی ۔ انہوںنے کہاکہ بھارت اپنی لاکھوںکی تعداد میں فوجیوں کی تعیناتی کے باوجود کشمیریوںکی حق پر مبنی جدوجہد آزادی کو کمزور نہیں کرسکااور اسے جلد یا بدیراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوںپر عمل درآمد کرتے ہوئے کشمیریوں کو انکا حق خودارادیت دینا ہو گا۔انھوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر توڑے گئے وعدوں کا مسئلہ ہے۔ اگر بھارت کشمیریوںکو انکا حق خودارادیت دینے کا اپنا وعدہ پورا کر دے تو مسئلہ کشمیر خود بخود ختم ہو جائیگا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.