عوامی تحریک کا 15 جولائی کو لاہور میں احتجاجی مظاہرے کا اعلان

کراچی جدت ویب ڈیسک پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی سینئرنائب صدرڈاکٹرایس ایم ضمیرنے اعلان کیا ہے کہ 15 جولائی بروز ہفتہ پنجاب اسمبلی سے ایوان وزیراعلیٰ تک احتجاجی ریلی نکالی جائے گی اور سانحہ ماڈل ٹائون کے ذمہ دار شریف برادران ،رانا ثنائ اللہ اور ان کے حواریوں کو شامل تفتیش کرنے اور آئندہ کے احتجاجی لائحہ عمل کا اعلان جائیگا،انہوں نے نارتھ ناظم آباد میںکارکنوںسے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ احتجاج میں تمام جماعتوں کو شرکت کی دعوت دی جائیگی۔ 3 وزرائ نے ماڈل ٹائون کیس پر مصالحت کیلئے پیسوں کی پیشکش کی یہ حکمران ہر ایک کو پیسوں کو پیشکش کرتے ہیں،حکمران اس سے انکار کریں وزرائ کے نام بتا دوں گا۔ رانا ثنائ اللہ جس طرح فوج کو ٹارگٹ کرتا ہے ایسا کوئی را یا موساد کا ایجنٹ ہی کر سکتا ہے۔ کور کمیٹی کے اجلاس سے سربراہ عوامی تحریک ڈاکٹر طاہر القادری نے ٹیلیفون پر خطاب کیا اور کور کمیٹی کو ضروری ہدایات دیں ۔کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈاپور نے عہدیداروں کے ہمراہ میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ 17 جون 2014 ئ کے دن ماڈل ٹائون میں شریف برادران کے حکم پر خون کی ہولی کھیلی گئی جس کا سب سے بڑا ثبوت جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ کو تین سال گزر جانے کے بعد بھی پبلک نہ کرنا ہے ،باقرنجفی کمیشن کی رپورٹ میں قاتلوں کے نام اور پتے درج ہیں، اس عدالتی انکوائری کی کاپی حاصل کرنے کیلئے ہم تین سال سے لاہور ہائیکورٹ کے دروازے پر بیٹھے ہیں، ڈاکٹرایس ایم ضمیر نے کہا کہ شہدائے ماڈل ٹائون کے ورثائ یتیم بچے اور ان کے لواحقین پوچھ رہے ہیں کہ ان کے والدین ،بہن بھائیوں اور عزیز واقارب کو جس جرم کی پاداش میں موت کے گھاٹ اتارا گیااور تین سال کے بعد بھی انصاف کیوں نہیں ملا؟ اس موقع پر عوامی تحریک کے رہنمائوں صفدرقریشی،راؤکامران،لیاقت کاظمی و دیگر رہنما موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری جماعت کا یہ باضابطہ مطالبہ ہے کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ کے بعد وزیراعظم نواز شریف فوری طور پر مستعفی ہو کر اپنے اوپر عائد چارجز کا سامنا کریں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.