KDA KMC DMC KWSB

سابق ڈی جی کے ڈی اے ناصر عباس نے سنگین کرپشن میں ملوث افراد کے نام اگل دیئے‘کون کون شامل ؟ جانئے

کراچی جدت ویب ڈیسک تحقیقاتی اداروں کی حراست میں موجود سابق ڈائریکٹر جنرل کے ڈی اے ناصر عباس نے سندھ حکومت کے حکام کیلئے نئی مشکلات پیدا کردی ہیں،سنگین کرپشن اور بدعنوانیوں میں ملوث افراد کے نام اگل دیئے ہیں،250پلاٹوں کی ہیر پھیر سمیت،منی لانڈرنگ،صوبائی وزیر کے نام پر کھاتوں کی تبدیلی و دیگر انکشافات بھی کیئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق کرپشن اور ناجائز اثاثے بنانے کے الزام میں گرفتار کراچی ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے سابق ڈی جی ناصر عباس نے تحقیقاتی اداروں کے سامنے کرپشن اور بدعنوانیوں کا پنڈورا باکس کھول دیا ہے۔ذرائع نے بتایاکہ منی لانڈرنگ کیلئے پیسہ کہاں سے آیا سب بتا دیا۔ ایف آئی اے کے بعد ناصر عباس کے خلاف نیب نے بھی شکنجہ کس دیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ گلستان جوہر کے بلاک چھ کی زمینوں میں مبینہ گڑبڑ اور جعلسازیوں کے ذریعے 250پلاٹس میں ہیر پھیر کی گئی جن کی مالیت اربوں روپے بتائی جاتی ہے۔ ذرائع کے مطابق تفتیش میں ناصر عباس نے بتایا کہ سندھ کے اہم وزیر کے کہنے پر سب کیا گیا جس کے بعد مذکورہ وزیر کیخلاف بھی مبینہ طور پرتحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ صوبائی وزیرکے بھائی کے نام پر پلاٹس کے کھاتے تبدیل ہوئے ،سرجانی میں زمین کے کھاتے گلستان جوہر منتقل کئے گئے جبکہ رہائشی پلاٹس کو کمرشل پلاٹس میں تبدیل کیا گیا۔ پلاٹوں کی ہیر پھیر سے ایک پلاٹ کی قیمت ایک کروڑ پچیس لاکھ روپے تک بڑھ گئی۔ اس سے حاصل ہونے والی رقم منی لانڈرنگ کیلئے استعمال ہوئی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق ڈی جی کے ڈی اے ناصر عباس کی جانب سے تحقیقاتی اداروں کے سامنے کرپشن میں ملوث اہم افراد کے نام اگل دینے پر سندھ حکومت کے حکام کیلئے نئی مشکلات کا دروازہ کھل سکتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.