hot sexy nude

زارا شیخ نے آنکھیں کھول دیں ؟؟؟ جانئے

لاہور جدت ویب ڈیسک اداکارہ و ماڈل زارا شیخ نے کہا ہے کہ پاکستان فلم انڈسٹری شدید بحران سے دوچار تھی اور فلموں کی سالانہ تعداد میں انتہائی کمی تھی لیکن موجودہ دور، جس کو جدید ٹیکنالوجی کا دورکہا جارہا ہے، اس میں بھی فلموں کی تعدادمیں بے شمار کمی ہے لیکن فلم کے معیارمیں حیرت انگیز بہتری دکھائی دے رہی ہے زارا شیخ نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں پاکستان فلم انڈسٹری کو ایسے پروڈیوسروں اور سرمایہ کاروں کی اشد ضرورت ہے جو اس شعبے میں سرمایہ کاری کرتے ہوئے بین الاقوامی معیار کے عین مطابق فلمیں بنائیں تاکہ نگارخانوں کی رونقیں بحال اور سینما گھروں کی ویرانی کا خاتمہ ہوسکے۔ اسی جذبے کے تحت ماضی میں توبہت سے پاکستانی نڑاد غیرملکی سرمایہ کاروں نے فلم انڈسٹری میں کام کیا اور فلمیں پروڈیوس بھی کیں۔ ان لوگوں کی آمد سے جہاں نگار خانوں کی رونقیں دوبالا ہوئیں، وہیں اس دور کے مطابق خاصا بہتر کام بھی کیا گیا۔اگر آج بھی اسی طرح غیرملکی سرمایہ کاروں کی خدمات حاصل کی جائے تو پاکستان فلم انڈسٹری کی سپورٹ کے لیے بہترین قدم ہوگا۔ اس سلسلہ میں نوجوان فلم میکرز کو ماضی کے معروف فلم میکرز کی مشاورت سے کام کرنا چاہیے کیونکہ آج بھی بیرون ممالک بسنے والے فنانسر یہاں سرمایہ کاری کرنے کو تیار ہیں لیکن انھیں کوئی بہتر راستہ دکھائی نہیں دیتا۔ انھوں نے کہا کہ ایک بات توطے ہے کہ فلم ہالی وڈ کی ہو یا بالی وڈ کی یا پھر پاکستان، شائقین تو صرف اسی فلم کودیکھتے اورپسند کرتے ہیں کہ جس کی کہانی، ڈائیلاگ، میوزک اور لوکشنز کے ساتھ کاسٹ بہترہو۔ پھرفلم چاہے دنیا کے کسی ملک اورزبان میں بنی ہو۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.