روسی صدر کا 755 امریکی سفارت کاروں کو ملک سے نکالنے کا اعلان

ماسکو جدت ویب ڈیسک صدر ولادیمیر پیوٹن نے کہا ہے کہ   755 امریکی سفارت کاروں کو ملک سے نکال دیا جائے گا۔  روس معاون وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف نے یہ بات ‘اے بی سی نیوز’ کے پروگرام ‘دِس ویک’ میں بات کرتے ہوئے بتایا کہ روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے کہا ہے کہ امریکا کی  نئی تعزیرات کے خلاف جوابی کارروائی کے طور پر ملک سے 755 امریکی سفارت کاروں کو ملک سے نکالا جائے گا۔  امریکا نے روس پر  الزام لگاتے ہوئے کہا تھا کہ کہ 2016ءمیں اْس نے امریکی صدارتی انتخاب میں مداخلت کی تھی۔پیوٹن نے روسی ٹیلی ویژن نیٹ ورک کو بتایا کہ امریکی سفارت خانے اور قونصل خانوں میں’ایک ہزار سے زیادہ افراد کام کرتے ہیں اوران میں سے  755 اہلکاروں کی  روس میں  سرگرمیاں بند کردی جائیں گی جس کے بعد یکم ستمبر تک   دونوں ملکوں میں سفارت کاروں کی تعداد یکساں، یعنی 455 رہ جائے گی۔ ماسکو جدت ویب ڈیسک صدر ولادیمیر پیوٹن نے کہا ہے کہ   755 امریکی سفارت کاروں کو ملک سے نکال دیا جائے گا۔  روس معاون وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف نے یہ بات ‘اے بی سی نیوز’ کے پروگرام ‘دِس ویک’ میں بات کرتے ہوئے بتایا کہ روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے کہا ہے کہ امریکا کی  نئی تعزیرات کے خلاف جوابی کارروائی کے طور پر ملک سے 755 امریکی سفارت کاروں کو ملک سے نکالا جائے گا۔  امریکا نے روس پر  الزام لگاتے ہوئے کہا تھا کہ کہ 2016ءمیں اْس نے امریکی صدارتی انتخاب میں مداخلت کی تھی۔پیوٹن نے روسی ٹیلی ویژن نیٹ ورک کو بتایا کہ امریکی سفارت خانے اور قونصل خانوں میں’ایک ہزار سے زیادہ افراد کام کرتے ہیں اوران میں سے  755 اہلکاروں کی  روس میں  سرگرمیاں بند کردی جائیں گی جس کے بعد یکم ستمبر تک   دونوں ملکوں میں سفارت کاروں کی تعداد یکساں، یعنی 455 رہ جائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.