راولپنڈی ریجن میں کرپشن کا سیلاب ‘ محکمہ اینٹی کرپشن بے بس

راولپنڈی جدت ویب ڈیسک محکمہ اینٹی کرپشن راولپنڈی ریجن گزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران محکمہ مال ‘ پولیس اور دیگر محکموں کے سرکاری افسران اور ملازمین کے خلاف درج 150 سے زائد مقدمات میں ملزمان کو سزائیں دلوانے میں ناکام ہو گیا۔80 فیصد مقدمات میں مدعی منحرف ہو گئے یا ملزمان سے صلح کر لی جبکہ رنگے ہاتھوں گرفتار ملزموں کو بھی عدالتوں سے سزا نہیں دلوائی جا سکی ۔ذرائع کے مطابق سہولیات کی عدم فراہمی اور نفری میں کمی کے باعث محکمہ اینٹی کرپشن راولپنڈی ریجن کی کارکردگی سوالیہ نشان بن گئی ہے ۔ کرپشن مقدمات میں سزائوں کا تناسب بھی صفر تک پہنچ چکا ہے ۔ گزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران محکمہ مال کے ملازمین کے خلاف 60 ‘محکمہ پولیس کے خلاف 26 ‘ محکمہ لوکل گورنمنٹ کے خلاف 14 ‘ کوآپریٹو کے خلاف 3 ‘ محکمہ صحت کے خلاف 2 ‘ محکمہ تعلیم کے خلاف 2 ‘ محکمہ ایکسائز کے خلاف 2 اور محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے خلاف ایک کیس کی تفتیش کی گئی مگر تمام مقدمات میں سزائوں کا تناسب صفر رہا ۔ کسی ایک ملزم کو بھی سزا نہیں دلوائی جا سکی ۔ ادھر اس ضمن میں آن لائن نے محکمہ اینٹی کرپشن کے موقف کے لئے رابطہ کیا تو ترجمان امجد بھٹی نے بتایا کہ محکمہ اینٹی کرپشن کم وسائل میں بھی بھرپور کام کر رہا ہے تاہم ملزمان کی بریت کا تناسب اس لئے کم ہے کہ مدعی مقدمات یا تو منحرف ہو جاتے ہیں یا ملزمان سے صلح کر لیتے ہیں اور محکمہ اینٹی کرپشن کے پاس مدعی کے بغیر مقدمہ درج کرنے کا اختیار نہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.