جا ز نے اسمارٹ سکول پروگرام متعارف کروادیا

کراچی جدت ویب ڈیسک حکومت کے ویژن 2025 کی حمایت میں، جاز فاؤنڈیشن نے’جاز سمارٹ اسکول’ پروگرام کے تحت فیڈرل کیپٹل کے 75 سکولوں کے تعلیمی معیار میںجدت لانے کا اقدام کیا ہے ۔ دارالحکومت ایڈمنسٹریشن اینڈ ڈیولپمنٹ ڈویژن âCADDá اور وفاقی ڈایریکٹوریٹ ایجوکیشن âFDEá کے ساتھ شراکت کے ذریعے ‘جاز سمارٹ اسکول’ پروگرام ڈیجیٹل تعلیم سیکھنے کے پلیٹ فارم کے ذریعہ روایتی اسکولوں کے نظام میں ایک زبردست سیکھنے کا حل متعارف کرایا.اس ڈیجیٹل تعلیم کو سیکھانے کے لیے ، ٹیلی کام کمپنی نے سنگاپور کی ایک ماہر کمپنی کے ساتھ مل کر کام کیا ہے. ڈیجیٹل پلیٹ فارم اپنی مرضی کے مطابق تعلیمی مواد، ٹریننگ اور سپورٹ پروگرام فراہم کرتا ہے، جبکہ جاز فائونڈیشن نے ہارڈ ویئر کی کٹس کے ساتھ ڈیجیٹل تعلیم کے مراکز قائم کیے ہیں جن میں لیپ ٹاپ، پروجیکٹر، کلکرز، ٹیب، سپیکر، یو پی ایس اور موبائل براڈبینڈ شامل ہیں.پروگرام کی لانچ کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے، علی نصیر، چیف کارپوریٹ اور ریگولیٹری آفیئرز – جاز نے کہا کہ، ”پاکستان کی 35 فیصد آبادی 14 سال سے کم ہے، اور ہم سمجھتے ہیں کہ اگر تعلیم کے معیار کو بہتر بنانے کے لئے کوششیں نہیں کی جاتی تو تیزی سے ترقی کرتی ڈیجیٹل دنیا میں پیچھے رہ جائیں گے. جاز سمارٹ اسکول پروگرا م ہمارے موبائل براڈبینڈ کی صلاحیت اور دیگر وسائل کا استعمال کرتے ہوئے لوگوں کو ان کی کامیابی میں ضروری مدد فراہم کرے گا. ”انہوں نے مزید کہا کہ ”اسلام آباد میں پروگرام کی کامیابی کے محتاط تجزیہ کے بعد، ہم ملک بھر میں اس کو پھیلائیں گے ، تاکہ مزید طلبائ اس سے فائدہ اٹھا سکیں.”کنٹری مینیجر، نالج پلیٹ فارم، طلحہ منیر خان نے پاکستان میں تعلیم کے لئے اپنے پلیٹ فارم کے نقطہ نظر کے بارے میں بات کرتے ، کہا کہ ”ہمارے نوجوانوں کو تعلیم یافتہ بنانا اہم ذمہ داری ہے جسے میں ہم سب کو سنجیدہ ہونا چاہئے نالج پلیٹ فارم تعلیمی معیا ر کو جدید بنانے اور پاکستانی طلبا کو سیکھنے کے حل فراہم کرتا ہے. اس کوشش میں کامیاب ہونے کے لئے، ہمیں عوامی، نجی، غیر سرکاری تمام شعبوں میں تعاون کرنے کی ضرورت ہے اور میں اس پروگرام کے شروع ہونے پر نہایت خوش ہوں. ”(FDE) کے ڈائریکٹر جنرل، حسنات قریشی نے کہا، ”تعلیم کے فیڈرل ڈیپارٹمنٹ اس بات کو یقینی بنانا چاہتے ہیںکہ ہمارے پبلک اسکولوں میں جدید تعلیم کے طریقوں کو یقینی بنایا جا سکے تا کہ ہمارے نوجوان اور خاص طور پر خواتین، عالمی سطح پر طلبائ کے ساتھ مقابلہ کرسکیں.” CADD کے وزیر ، ڈاکٹر طارق فضل چوہدری، نے عوامی نجی شراکت داروں کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا، ”آئین کا یہ حکم ہے کہ ریاست 5-16 سال کی عمر کے درمیان تمام پاکستانی بچوں کو تعلیم فراہم کرے. اس مقصد کو حاصل کرنے کی کوشش میں حکومت چیلنجز کو سمجھتی ہے . تاہم، جاز سمارٹ اسکول پروگرام جیسے اقدامات، حکومتی اور نجی شراکت داری پر آگے بڑھتے جار ہے ہیں ، ہمیں یقینی طور پر پاکستان کو ایک روشن مستقبل کی طرف بڑھانا ہوگا. ”پروگرام کی تعلیمی مواد میں ڈیجیٹل درسی کتابیں، ویڈیوز، مشق مواد، کھیل، تشخیص اور کلاس روم کی سرگرمیاں شامل ہیں. نصاب میں ہر ایک مضمون کے لئے، پروگرام میں مہارت حاصل کرنے کے لئے ایک سے زیادہ ذرائع شامل ہیں جس سے سیکھنے کے عمل میں آسانی پیدا ہوگی ۔تدریس کی مہارت کو بڑھانے کے لئے، پروگرام ٹریننگ ویڈیوز، اپنی مرضی کے مطابق ٹیچر ٹریننگ پروگرام اور آن لائن کمیونٹی کی حمایت فراہم کرتا ہے. والدین روزانہ کی بنیاد پر اسکولوں، اساتذہ اور طلبائ کی کارکردگی کی نگرانی کر سکتے ہیں.جاز فاؤنڈیشن نے جاز کے بنیادی اقدار کو باضابطہ طور پر تسلیم کیا ہے کہ وہ تمام پائیدار اقدامات کو ‘جدت، سچائی، تعاون، کسٹمر کی سہولت اور کاروباری ادارے’ کا عملی نمونہ بنے. کمپنی کی پائیدار حکمت عملی کے حصے کے طور پر، فاؤنڈیشن کے تحت جاری مستقبل کے اقدکی پیروی کریں گی. ٹیکنالوجی کے ذریعے نوجوانوں کو بااختیار بنانے کا موضوع – جاز کے گروپ âVEONá کے، ‘Make your Mark’پروگرام کا حصہ ہے .

Leave a Reply

Your email address will not be published.