ایشیا کی سب سے بڑی مویشی منڈی،باضابطہ افتتاح اگست میں ہوگا

جدت ویب ڈیسک :ایشا ءکی سب سے بڑی عارضی مویشی منڈی میں قربانی کے جانور فروخت کے لیے لانے کا سلسلہ شروع ہوگیا، جمعہ کے روز11ٹرکوں پر مشتمل 2سو50 قربانی کے جانور کراچی پہنچ گئے۔ سپرہائی وے پر قائم ایشاءکی سب سے بڑی مویشی منڈی کے انتظامات کا سلسلہ جاری ہیں جب کہ مویشی منڈی کا باضابطہ افتتاح اگست کے مہنے میں ہوگا۔سہراب گوٹھ پر قائم کی جانے والی ایشیا کی سب سے بڑی مویشی منڈی کا انتظام سنبھالنے والی ارشاد اینڈ کمپنی کے ایڈمنسٹریٹر ارشاد احمد نے بتا یا کہ مویشی منڈی میں جانوروں کو رکھنے کے لئے بلاکس کو ہموار کرنے کا عمل جاری ہے ، جب کہ منڈی میںعوام کی سہولت کے لئے روشنی کے انتظاما ت کئے جا رہے ہے ۔ بڑی تعداد میں بجلی کے کھمبے اور اسٹریٹ لائٹ لگا ئی جارہی ہیں۔ اندرون ملک سے بیوپاری جانورلے کر ٹرک کراچی پہنچا نا شروع ہو گئے ہے جب کہ اندرون ملک اور سندھ سے جانوروں کے بیوپاری بھی کراچی آنے کے لئے نکل چکے ہیں ، جیسے جیسے جانور منڈی میں آئیں گے، انہیں مطلوبہ مقام پر جگہ فراہم کی جائے گی ، جب کہ شہریوں کی سہولت کے لئے منڈی میں سڑکوں اور گزرگاہوں کو ہموار کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے ، ان کا کہنا تھا کہ منڈی آنے والے شہریوں کی گاڑیاں پارک کرنے کے لئے بھی انتظامات کر لئے گئے ہیں۔ ہماری پوری کوشش ہے کہ اس دینی فریضہ کی ادائیگی کے لیے آنے والے اور مویشیوں کے بیوپاریوں کو جانوروں کی خرید و فروخت میں زیادہ سے زیادہ سہولتیں فراہم کریں۔ مشینری و کچرا اٹھانے والی گاڑیوں کے ذریعے علاقے کی صفائی ستھرائی اور دیگر انتظامات کا سلسلہ جاری ہیں۔اس سال قربانی کے جانوروں کی خریداری کے لےے آنے والے بیوپاریوں اور عوام کو خرید و فروخت میں ہرممکن سہولتیں فراہم کرنے کیلئے دیگر اداروں سے بھی تعاون کی درخواست کی گئی ہیں تاکہ مکمل منصوبہ بندی کے ذریعے ایک مربوط سسٹم کے تحت انتظامات کو حتمی شکل دی جاسکے۔ ان کا کہنا تھا کہ صفائی، ستھرائی اور جانوروں کی آمد کے آغاز کے بعد ہماری بنیادی ذمہ داری سہراب گوٹھ پر ایشیا کی سب سے بڑی مویشی منڈی کا قیام اور اسے بیوپاریوں اور خریداروں کیلئے محفوظ بنانا ہے۔ اس حوالے سے سندھ پولیس اور رینجرز سے درخواست کی گئی کہ وہ مویشی منڈی کے آس پاس گشت کے خصوصی انتظامات کریں۔ارشاد احمد نے کہا کہ منڈی میں صفائی ستھرائی کیلئے خصوصی عملہ منڈی میں دن رات کام کرے گا اور کچرا اٹھانے کے ٹرک اور دیگر مشینری ٹریکٹر وغیرہ منڈی سے روزانہ جانوروں کا فضلہ اور کوڑا کرکٹ صاف کریں گے تاکہ منڈی میں صا ف ستھرا ماحول یقینی بنایا جاسکے۔ اس کے علاوہ کسی ہنگامی امداد کیلئے ایمبولنس سروس اور فائر سروس کا بھی انتظام کیا جائے گا۔انہوں نے بیوپاریوں کو تاکید کرتے ہوئے کہا کہ تمام بیوپاری اپنے مویشیوں کو حفاظتی اقدامات کے تحت وائرس سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکے لگوا کر آئیں۔ اس عمل سے منڈی میں خریداروں اور مویشیوں کیلئے صحت مندانہ اور محفوظ ماحول مہیا کرنے میں مدد ملے گی۔ منڈی تقریباً 1200 ایکٹر پر قائم کی جائے گی۔ خریداروں کی آسانی کیلئے گائے، بکرے ، دنبے، اونٹ وغیرہ کی فروخت کے لیے انتظامات کئے جائیں گے اور منڈی کو بلاکس میں تقسیم کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ پانی کی فراہمی، حفاظتی ٹیکوں، لائٹنگ وغیرہ کے بھی خصوصی انتظامات کئے جائیں گے جبکہ لین دین اور خریداری میں سہولتیں فراہم کرنے کے لیے بینکنگ سہولتیں بھی فراہم کی جائیں گی۔دوسری جانب عدالت عالیہ سندھ نے سپر ہائی وے پر مویشی منڈی قائم کر نے کے خلاف دائر درخواست پر کنٹونمنٹ بورڈ ملیر ، وزارت دفاع ، حکومت سندھ ودیگرسے22 جولائی تک جواب طلب کرلیا ہے درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ عیدالاضحی کے موقع پر سپر ہائی وے پر منڈی لگائی جارہی ہے جس کے بعد صفائی کراوئی نہیں جاتی اور سیکورٹی کا کوئی معقول انتظام نہیں ہوتا ہے منڈی سے ٹریفک جام رہتا ہے درخواسست گزار کے مطابق گزشتہ سال کمشنر کراچی نے یقین دہانی کرائی تھی کہ درخواست گزاروں کی شکایت دور کی جائے گی تاہم موجود ہ سال بھی صورتحال ماضی کی طرح ہے عدالت سے استدعا ہے کہ گوٹھ کے داخلی اور خارججی راستوں پر منڈی نہ لگانے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.